فلم

اداکارہ پریہ واریئر کے خلاف ایف آئی آر مسترد

نئی دہلی:کیرالہ کی اداکارہ پریہ پرکاش واریئرکے خلاف تلنگانہ اور مہاراشٹر میں درج ایف آئی آرکو سپریم کورٹ نے مسترد کر دیا ہے۔ گذشتہ 21فروری کو سپریم کورٹ نے ایف آئی آر پر روک لگا دی تھی۔ پریہ پرکاش نے سپریم کورٹ میں عرضی دائر کر اپنے خلاف درج معاملوں کو رد کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی والی بینچ نے کہاکہ اورو اودار لو کے گانے سے مسلم سماج کے جذبات مجروح نہیں ہوتے ہیں۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ اس گانے کے سلسلہ میں بھی پریہ پرکاش کے خلاف کوئی ایف آئی آر درج نہیں کی جائے گی۔ اپنی درخواست میں پریہ پرکاش نے کہا تھا کہ اورو اودار لو کے گانے کے غلط ترجمہ کو بنیاد بنا کر کچھ لوگوں نے کیس درج کراوئے ہیں۔ اپنی درخواست میں انہوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ غیر ملیالی زبان والی دوسری ریاستوں میں بھی ایسے کیس درج کئے جا سکتے ہیں۔ پریہ پرکاش واریئر کے خلاف تلنگانہ اور مہاراشٹر میں ایف آئی آر درج کی گئی تھی۔ ایف آئی آر میں فلم پروڈیوسر پر ایک مذہبی طبقہ کے جذبات کو ٹھیس پہنچانے کا الزام لگایا گیا تھا۔ درخواست میں کہا گیا تھا کہ فلم کا گانا پیغمبر محمد ﷺ اور ان کی پہلی بیوی حضرت خدیجہ کو لے کر کیرالہ کے مالابار میں مسلم علاقوں میں مقبول ہے لیکن درخواست گزار نے اسے غلط طریقہ سے پیش کیا۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close