بہارکوسی

اردوزبان ملک کی گنگاجمنی وشریں زبان ہے:پروفیسرارون کمار

ضلع اردوزبان سیل،کلکٹریٹ مشرقی چمپارن کی جانب سے ٹائون ہال میں سیمینارومشاعرہ کاانعقاد،دوجنوں شعرائے کرام کی ہوئی شرکت

موتیہاری(محمداکرم) اردوزبان ہمارے ملک کی پیاری زبان ہے ،یہ ایسی شریں زبان ہے جواپنی میٹھاس سے لوگوں کواپنی جانب راغب کرلیتاہے۔اس زبان ملک کے اندرالفت ومحبت اوروہ تاثیرہے جودیگرزبانوںکے اندرنہیںملتی بلکہ یہ زبان گنگاجمنی تہذیب کی زبان ہے ،اس زبان کاکسی خاص مذہب سے کوئی سروکارنہیں ہے یہ زبان آج پوری دنیامیں بولی سمجھی جاتی ہے ۔مذکورہ باتیں ضلع اردوزبان سیل،کلکٹریٹ مشرقی چمپارن کی جانب سے شہرکے ٹائون ہال میں منعقدضلعی سطحی فروغ اردوعمل گاہ،سیمینارومشاعرہ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی ایم ایس کالج کے پروفیسرارون کمارنے کہیں۔انہوںنے مزیدکہاکہ اس زبان سے ملک کوآزادی دلانے میں اہم رول اداکیا۔کوئی بھی زبان کواگرزوزگارسے نہیں جوڑاجائے تب تک وہ ترقی نہیں کرسکتاہے۔آج اردوزبان بین الاقوامی زبان ہے جس کے چاہنے والے دنیاکے گوشے گوشے میں مل جائیں گے۔وہیں جنتادل یونائٹیڈکے قانون سازکونسل رکن ڈاکٹرخالدانوراساتذۃ سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آپ ملک وقوم کے معمارہیں۔جواپنی علمی لیاقت سے نسل کوسنوارکرملک وسماج کی ترقی میں کلیدی رول اداکرتے ہیں۔اس موقع پرانہوںنے اپنی ناراضگی ظاہرکرتے ہوئے کہا کہ آج اردواساتذہ اوربالخصوص سرکاری مدارس کے ذمہ داران اپنی جیب بھرنے کے لئے مدارس اسلامیہ کوسیاسی اڈہ بناچکے ہیں جومسلمانوں کے لئے افسوس کامقام ہے ایسے وقت وحالات میں ہمیں ذمہ داری کے ساتھ کام کرنے کی اشدضرورت ہے۔اس سے قبل سیمینارکاافتتاح ایم ایل سی ڈاکٹرخالدانور،سیدنجم الدین ہاشمی،پروفیسرنسیم احمدنیسم ،پروفیسرارون کمار،چندن کمار انگزیکٹیومجسٹریٹ وانچارج ضلع اردوزبان سیل،کلکٹریٹ موتیہاری،ڈاکٹرعبدالملک صوفیایونانی میڈیکل کالج باراچکیانے مشترکہ طورپرشمع روشن کرکے کیا۔خطبہ استقبالیہ چندن کمارانچارج ضلع اردوزبان سیل نے جبکہ ابتدائی کلمات شاہ ولی اللہ نائب مترجم ضلع اردوزبان سیل،کلکٹریٹ مشرقی چمپارن نے کیاوہیںپروگرام کاآغازبہارترانہ کے خالق ایم آر چشتی کے کے مترنم آوازسے ہوا۔اس موقع پرطلباوطالبات نے اردوزبان کے حوالے سے اپنی باتیں رکھیں ان میں محمدجلال الدین،صنوبرفاطمہ،عتیق الرحمن،آفرین فاطمہ اورگلزارعالم کے نام شامل ہیںجبکہ پرفیسرعبدالستاررحمانی چکیا،صحافی عزیرانجم اوراظہرحسین انصاری نے مقالے پیش کیے۔سیمینارکی صدارت پروفیسرنسیم احمدنسیم اورنظامت کے فرائض اشرف علی نے اداانجام دیے۔
اس پروگرام کادوسراسیشن جومشاعرہ پرمشتمل تھاجس کی صدات تفضیل احمدتفضیل نے جبکہ نظامت صحافی عزیزانجم نے اداکی۔اس موقع پرجن شعرائے کرام نے اپنے کلام سے دادوصول کئے ان میں تفضیل احمدتفضیل،حاتم جاوید،روح الحق ہمدم،ایم آر چشتی،ڈاکٹرصبااخترشوخ،گلریزشہزاد،ظفرحبیبی،پرویزقاسمی،عقیل احمدشاد،فیض شاکرکے اسماء قابل ذکرہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close