بین الاقوامی

اقوام متحدہ کا عاصمہ جہانگیر کے لیے انسانی حقوق کا اعزاز

جنیوا: اقوام متحدہ نے انسانی حقوق کی رضاکار اور وکیل عاصمہ جہانگیر کو ان کی وفات کے بعد اقوام متحدہ نے انسانی حقوق کے ایوارڈ سے نوازا جسے مرحوم کی صاحبزادی منیزے جہانگیر نے تقریب کے دوران اپنی والدہ کی جانب سے وصول کیا۔پاکستانی روزنامہ جنگ کے مطابق جنرل اسمبلی کی صدر ماریہ مرنڈا اسپینوسا کی جانب سے صحافی اور انسانی حقوق کی رضاکار منیزے جہانگیر کو یہ ایوارڈ دیا گیا جنہوں نے جنرل اسمبلی ہال میں سفیروں، انسانی حقوق کے رضاکاروں اور اقوام متحدہ کے سینئر حکام کا اجلاس منعقد کیا تھا۔تقریب کے بعد منیزے جہانگیر نے جذباتی انداز میں بیان دیا کہ ’اقوام متحدہ کے اعلیٰ اعزاز لینے کے لیے کاش میری والدہ ا?ج زندہ ہوتیں، ان کے گزر جانے سے پیدا ہونے والی خلا کو پورا نہیں کیا جاسکتا‘۔اقوام متحدہ کی سیکریٹری جنرل اینٹونیو گوئے تریس اور اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق مشل بیچلیٹ نے عاصمہ جہانگیر کی انسانی حقوق اور قانون کی بالادستی کے لیے خدمات پر خراج تحسین پیش کیا۔واضح رہے کہ انسانی حقوق کا اعزاز ہر 5 سال بعد کسی شخصیت یا ادارے کو انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے اس کی بے مثال خدمات پر دیا جاتا ہے۔رواں سال اکتوبر کے مہینے میں اقوام متحدہ کی جانب سے یہ اعزاز حاصل کرنے والے 4 رضاکاروں میں سے عاصمہ جہانگیر بھی ایک تھیں۔ایوارڈ حاصل کرنے والے دیگر افراد میں تنزانیہ کی خواتین کے حقوق کی رضاکار ربیکا گیومی، برازیل کی مقامی کمیونٹیز کے حقوق کی رضاکار جوئینا واپیچانا اور انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والا آئرش ادارہ فرنٹ لائن ڈیفنڈرز شامل ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close