کھیل

انڈیا بمقابلہ انگلینڈ : ساوتھمپٹن ٹیسٹ کے پہلے دن بنے یہ چار شاندار ریکارڈ س

ساوتھمپٹن ٹیسٹ کے پہلے دن ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان کافی دلچسپ جنگ دیکھنے کو ملی ۔

ساوتھمپٹن ٹیسٹ کے پہلے دن ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان کافی دلچسپ جنگ دیکھنے کو ملی ۔ پہلے دن ٹیم انڈیا نے انگلینڈ کی پہلی اننگز 246 رنوں پر سمیٹ دی اور جواب میں کوئی وکٹ کھوئے بغیر 19 رن بنالئے ۔ اس طرح سے ٹیم انڈیا انگلینڈ سے پہلی اننگز کی بنیاد پر 227 رن پیچھے ہے۔ لوکیش راہل 11 رن اور شیکھر دھون تین رن بناکر ناٹ آوٹ ہیں۔ انگلینڈ کی جانب سے آٹھویں نمبر پر بلے بازی کرنے کیلئے میدان پر آئے سیم کرن نے 78 رنوں کی شاندار اننگز کھیلی ۔ ان کے علاوہ معین علی نے 40 اور بین اسٹوکس نے 23 رن بنائے ۔
ٹیسٹ کے پہلے دن چار ریکارڈس بھی بن گئے ۔ ایک ریکارڈ انگلینڈ کے 20 سالہ سیم کرن نے بنایا ۔ انہوں نے ساوتھمپٹن کی پہلی اننگز میں نصف سنچری لگاتے ہوئے ایک ریکارڈ بناڈالا ۔ نمبر 8 یا اس سے نیچے کی پوزیشن پر بلے بازی کرتے ہوئے سیریز میں دو نصف سنچری لگانے والے 21 سال سے کم عمر کے وہ دنیا کے چوتھے کرکٹر بن گئے ہیں۔ ان سے پہلے آسٹریلیا کے البرٹ ٹراٹ ( 1895) ، ہندوستان کے کپل دیو ( 1979-80) ، جنوبی افریقہ کے مارک باوچر ( 1998) یہ کارکانامہ انجام دے چکے ہیں ۔
روی چندرن اشون نے چوتھے ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں دو وکٹ جھٹکے ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے غیر ملکی زمین پر اپنے 100 وکٹ پورے کرلئے ۔ یہ کارنامہ کرنے والے وہ پانچویں ہندوستانی اسپنر ہیں ۔ ان کے علاوہ انل کمبلے ، ہربھجن سنگھ ، بشن سنگھ بیدی اور بھاگوت چندر شیکھر یہ کارنامہ انجام دے چکے ہیں ۔
ایشانت شرما نے ٹیسٹ میں اپنے 250 وکٹ بھی کرلئے ہیں ۔ انہوں نے یہ کام 86 ویں ٹیسٹ میں کیا ۔ اس کے ساتھ ہی ان کے نام دوسرے سب سے سست رفتاری کے ساتھ 250 وکٹ لینے کا ریکارڈ ہوگیا ہے۔ پہلے نمبر پر جنوبی افریقہ کے جیک کیلس ہیں ، جنہوں نے یہ کام 121 میچوں میں کیا تھا ۔
وراٹ کوہلی نے اپنی کپتانی میں 39 ویں ٹیسٹ میں کسی تبدیلی کے بغیر ٹیم میدان پر اتاری ۔ سب سے زیادہ ٹیسٹ تک پلیئنگ الیون میں تبدیلی کرنے کے معاملہ میں کوہلی دوسرے نمبر پر ہیں۔ کوہلی نے 38 ٹیسٹ میچوں تک لگاتار پلیئنگ الیون میں تبدیلی کی اور 39 ویں ٹیسٹ میں پہلی مرتبہ کسی تبدیلی کے بغیر میدان پر اترے ۔ ان سے پہلے گریم اسمتھ نے اپنی کپتانی میں 44 میچوں تک لگاتار پلیئنگ الیون میں تبدیلی کی تھی ۔ سوربھ گنگولی نے 28 اور انضمام الحق نے 26 مرتبہ یہ کام کیا ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close