کھیل

آسٹریلین کرکٹ ٹیم میں پریشانیاں جاری

سڈنی: آسٹریلین کرکٹ ٹیم رواں برس مارچ میں جنوبی افریقہ کے خلاف سیریز میں بال ٹیمپرنگ کیس کے بعد سنبھل نہیں پائی ہے۔ جہاں کینگروز ٹیم کی کارکردگی زوال پذیر ہے، وہیں بورڈ میں بھی تبدیلیاں ہورہی ہیں ایسے میں چیف ایگزیکٹیو جیمز سدرلینڈ نے عہدہ چھوڑنے کیلئے نوٹس دے کر پریشانیاں اور بڑھادی ہیں ۔
اب بورڈ کے مستعفی ڈائریکٹر بوب ایوری کے چیئرمین کرکٹ آسٹریلیا ڈیوڈ پیور پر نااہلی کے الزامات نے نیا پنڈورا بکس کھول دیا ہے۔ بوب ایوری مئی میں کنٹریکٹ کی معیاد ختم سے پانچ ماہ قبل مستعفی ہوگئے تھے۔ ان کی ای میل منظر عام پر آئی ہے جس میں انہوں نے ڈیوڈ پیور کی کارکردگی کو غیرمعیاری قرار دیا ہے۔ انہوں نے لکھا ہے کہ جیمز سدرلینڈ کے جانشین کے انتخاب کا معاملہ ہو، ٹی وی نشریاتی حقوق کی فروخت یا کرکٹر کے معاہدے چیئرمین نے معاملات درست انداز سے ہینڈل نہیں کیے۔
انہوں نے بال ٹیمپرنگ کیس کے بعد پیور کی مستعفی ہونے کی پیشکش کو بھی جعلی قرار دیا۔ بوب کا کہنا تھا کہ ان کی نااہلیوں کی فہرست بہت طویل ہے لیکن میری نظر میں مذکورہ واقعات لوگوں کی آنکھیں کھولنے کیلئے کافی ہوں گے۔
ادھر اس حملے کے جواب میں ڈیوڈ پیور نے دفاعی اور مصالحانہ پوزیشن اختیار کرتے ہوئے کہا بوب ایوری کی کرکٹ آسٹریلیا کیلئے ڈھائی سالہ خدمات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہوں۔میرے پاس ان کیلئے سوائے احترام کے کچھ اور نہیں ہے۔ تاہم ہم ماضی کے بجائےحال اور مستقبل پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close