سیاست

اپنی سیکورٹی پربولے مودی، میں شہنشاہ یا حکمراں نہیں، عوام کے پیارکونظراندازنہیں کرسکتا

وزیر اعظم نریندر مودی نے اپنی سیکورٹی انتظام کو لے کر کھل کر بات کی ہے۔ مودی نے کہا کہ وہ کوئی شہنشاہ یا حکمراں نہیں ہیں، جو لوگوں کی گرم جوشی سے متاثر نہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کے ساتھ بات چیت کرنے سے انہیں طاقت ملتی ہے۔

سوراجیہ میگزین کو دیئے گئے انٹرویو میں وزیراعظم مودی نے یہ باتیں کہیں۔ وزیر اعظم روڈ شو کے دوران اپنی ذاتی سیکورٹی کے بارے میں خیرخواہوں کے دل میں پیدا ہورہے خدشات سے متعلق ایک سوال کا جواب دے رہے تھے۔

اپنی سیکورٹی پربولے مودی، میں شہنشاہ یا حکمراں نہیں، عوام کے پیارکونظراندازنہیں کرسکتا
وزیر اعظم نریندر مودی

وزیراعظم مودی نے کہا کہ "جب میں سفر کررہا ہوتا ہوں، تب معاشرے کے سبھی عمر، طبقے اور علاقے کے لوگوں کو سڑکوں پر اپنا استقبال کرتے ہوئے دیکھتا ہوں۔ تب میں اپنی کار میں بیٹھا نہیں رہ سکتا، ان کے پیار کو نظر انداز نہیں کرسکتا، اس لئے میں باہر آجاتا ہوں۔ لوگوں سے جتنی بات کرسکتا ہوں، اتنی کرتا ہوں”۔

گزشتہ لوک سبھا الیکشن کے بعد سے مل رہا ہے عوام کا پیار

مودی نے کہا کہ 2014 کے بعد مسلسل پورے ملک میں ہمیں عوام کا آشیرواد ملا ہے۔ ایک کے بعد ایک ریاستوں کے الیکشن میں ہمیں ملے مینڈیٹ تاریخی رہے۔ ایسے میں ہم مطمئن ہیں کہ عوام دوبارہ ہم پر اپنا بھروسہ جتائے گی۔

ملک کے مفاد میں لئے تھے 1977 اور 1989 کے اتحاد

مہا گٹھ بندھن (عظیم اتحا د) کے سوال پر مودی نے کہا "آج کے دور کے عظیم اتحاد کا موازنہ 1977 اور 1989 سے کرنا ٹھیک نہیں ہے۔ 1977 میں اتحاد کا مقصد جمہوریت کی حفاظت کرنا تھا، جو کہ ایمرجنسی کے دور میں بحران میں مبتلا ہوگیا تھا۔ 1989 میں بوفورس کے زبردست گھوٹالے نے پورے ملک کو مایوس کیا تھا۔ آج کے ان اتحاد کا مقصد قومی مفاد نہیں بلکہ اقتدار کی سیاست اور ذاتی مفاد ہے، ان کے پاس کوئی مدعا نہیں، سوائے مجھے ہٹانے کے”۔

وزیراعظم بننے کی ہوڑلگی ہے

وزیر اعظم مودی نے کہا کہ "ملک میں عظیم اتحاد جیسا کچھ نہیں ہے۔ صرف وزیراعظم بننے کی ہوڑ لگی ہے۔ راہل گاندھی کہتے ہیں کہ وہ وزیراعظم بننے کو تیار ہیں، لیکن ممتا بنرجی ان سے راضی نہیں ہیں۔ ممتا بنرجی وزیراعظم بننا چاہتی ہیں، لیکن ان سے لیفٹ کو پریشانی ہے۔ سماجوادی پارٹی کو لگتا ہے کہ کسی اور لیڈر سے زیادہ ان کے لیڈر وزیراعظم عہدے کے حقدار ہیں”۔

مودی نے کہا کہ اپوزیشن کی پوری توجہ پاور پولیٹکس پر مرکوز ہے۔ یہ عوام کی ترقی کے لئے نہیں ہے۔ مودی کے تئیں نفرت ہی واحد سبب ہے، جس نے اپوزیشن کو متحد کررکھا ہے۔

Tags
Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close