بین الاقوامی

ایران میں طلباء کا احتجاج نظام مخالف مظاہروں میں تبدیل

تہران: ایران کے دارالحکومت تہران میں ایک یونیورسٹی کے طلباء￿ کا احتجاجی مظاہرہ حکومت مخالف احتجاج میں بدل گیا۔ مظاہرین نے ‘ملائوں کی حکومت مردہ باد’ کے نعرے لگا دیے۔العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دارالحکومت تہران میں قائم”آزاد” سائنس و ریسرچ یونیورسٹی کے احاطے میں طلباء کی بڑی تعداد نے جمع ہو کر حکومت کی طرف سے عاید کردہ پابندیوں کے خلاف مظاہرہ کیا۔ ا موقع پر مظاہرین کے حکومت کے خلاف نعروں کی فوٹیج اور تصاویر سوشل میڈیا پر بھی پوسٹ کی گئی ہیں۔ طلباء کو "ملائوں کی حکومت مردہ باد” کے نعرے لگاتے سنا جاسکتا ہے۔دارالحکومت کے وسط میںہونے والے ان مظاہروں میں طلباء نے جامعہ کے چانسلر علی اکبر ولایتی کو برطرف کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ ولایتی اور دیگر عہدیدار ایک بس حادثے کا موجب بنے ہیں جس کے نتیجے میں10 طلباء جاں بحق اور 28 زخمی ہوگئے تھے۔ طلباء کا کہنا تھا کہ حکومت نے طلباء کے تحفظ کے لیے کسی قسم کے اقدامات نہیں کیے اور نہ ہی بس حادثے کی تحقیقات کرائی ہیں۔ادھر لندن سے نشر ہونیوالے ایک فارسی ٹی وی چینل ‘منوتو’ نے تہران میں آزاد یونیورسٹی کے طلباء کے احتجاجی مظاہرے کی خبر نشر کی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یونیورسٹی کے طلباء اور پولیس کے درمیان تصادم بھی ہوا ہے۔ پولیس نے احتجاج کرنے والے طلباء کو تشدد کا بھی نشانہ بنایا۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close