پنجابہندوستان

ایس سی ای آر ٹی پنجاب کی دو روزہ اردو ٹیچر ٹریننگ ورکشاپ مالیر کوٹلہ میں بحسن خوبی اختتام پذیر

مالیر کوٹلہ: ایس. سی. ای. آر. ٹی پنجاب کی جانب سے اپنی پہلی دو روزہ اردو ٹیچر ٹریننگ ورکشاپ کا انعقاد یہاں پنجاب اردو اکادمی مالیر کوٹلہ میں انعقاد کیا گیا.اس موقع پر پہلے دن بطور مہمان خصوصی عبدالطیف تھند سیکرٹری پنجاب اردو اکادمی کم ایس ڈی ایم سردولگڑھ نے شرکت کی. اس موقع پر اپنے خطاب کے دوران انھوں نے کہا کہ پنجاب اردو اکادمی اردو زبان کے فروغ اور فلاح و بہبود کے لیے ہر ممکن کوشش کرتی رہے گی . جبکہ ٹریننگ کے دوسرے روز محترمہ ہر پریت کور صاحبہ ، اسٹیٹ پروجیکٹ کو آرڈینیٹر (ایس سی ای آر ٹی) پنجاب نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی. جبکہ میڈم سپریتی اور شری گر شرن سنگھ اور میڈم ہر کنول جیت کور ڈی ای او، سنگرور محترمہ رکشا رانی بی پی ای او نے بطور مہمان اعزازی شرکت کی. اس موقع پر میڈم ہر پریت کور صاحبہ نے اساتذہ سے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ حکومت پنجاب اردو زبان کے فروغ میں کوئی کسر نہیں چھوڑے گی انھوں نے کہا کہ ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کے سیکرٹری شری کرشن کمار( آئی اے ایس) چاہتے ہیں کہ صوبہ میں پنجابی، انگریزی کی طرز پر اُردو کو بھی طلباء کو جدید ٹیکنالوجی سے پڑھایا اور سکھایا جائے. میڈم ہرپریت کور مذید کہا کہ اردو نہایت ہی شیریں زبان ہے وہ اور ان کے ماتحت کام کرنے والا اسٹاف بھی چاہتا ہے کہ وہ اس نفیس اور تہذیب و تمدن سے بھرپور زبان کو جلد از جلد سیکھیں. انہوں نے کہا ایس سی ای آر ٹی پنجاب کی جانب سے آئندہ بھی اردو زبان کی فلاح و بہبود اور فروغ کے لئے اسی طرح سے کام کرتی رہے گی اور اردو اساتذہ کو بھی دوسری زبانوں کی طرز پر کِٹ و ٹولز مہیا کرواتی رہے گی .اس موقع پر آرڈینیٹر ہر پریت کور صاحبہ نے خصوصی طور پر پنجاب اردو اکادمی مالیر کوٹلہ سیکرٹری جناب عبدالطیف تھند کا و اکادمی کے اسٹاف کابھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے  ٹریننگ ورکشاپ لگانے کے لیے اپنا کیمپس مہیا کروایا. جبکہ اس موقع  ڈی ای او سنگرور   محترمہ ہر کنول جیت کور نے اساتذہ سے بچوں کو خوب دل لگا کر پڑھاتے رہنے کی تلقین کی اور ساتھ سبھی مضامین کے نتائج سو فیصد لانے پر زور دیا.  اس سے پہلے ٹریننگ پروگرام کے دوران اسٹیٹ رسیورس پرسن جناب محمد اخلاق نے اردو اساتذہ کو اردو پڑھانے کی جدید ترین تکنیکوں سے روشناس کروایا. ان میں مرکزی موضوع theme حیات بخش تکنیک کے ذریعے بچوں کی تھکاوٹ اور بوریت کو دور کرنے کے لیے عصیرال لسان یا tongue twister جیسی سرگرمیوں کو بچوں کرواتے رہنے کی ترغیب دی. اس کے علاوہ بے مثل نام، الفاظ کی دیوار اور طلباء سے اپنی نوٹ بک میں ڈکشنری یا لغت بنانے کی تلقین کرنے کی بھی ترغیب دی گئ. ساتھ ہی متن نقشہ mind map ج چ سریڈنگ، کورس ریڈنگ، گروپ ریڈنگ، جڑواں ریڈنگ، آزادانہ ریڈنگ، ڈسکشن، خاموش ریڈنگ، شئیرڈ ریڈنگ پوسٹ ریڈنگ کے حوالے سے خوب پریکٹس کروائی گئی. جبکہ اس موقع پر اسٹیٹ ریسورس پرسن محمد عباس دھالیوال نے اردو گرامر کے قواعد و ضوابط کے متعلق اپنے مقالہ کے توسط سے اردو اساتذۂ کو بھرپور معلومات فراہم کروائی اور ساتھ ہی انھوں نے لسانی کھیل کے ذریعے بچوں سے حروف سے الفاظ کیسے بنوائیں اس کے حوالے سے بورڈ پر اساتذۂ سے مشق کے طور پر پر لسانی کھیل کے ذریعے الفاظ بنوائے گئے. اس موقع پر ڈی ایم انگریزی راکیش گرگ اور ڈی ایم حساب سنجیو سنگلا پربھجوت سنگھ بی ایم اور جناب ناصر علی نے بھی اساتذۂ سے اردو زبان کو لیکر اپنے تجربات مشترکہ کیے اور اس کو سیکھنے کا ازم کیا. اسٹیٹ ریسورس پرسن جاوید اقبال اور اردو ماسٹر جناب محمد حبیب نے اسم و واحد جمع کی جانکاری اپنے چارٹ کے ذریعے مشترکہ اساتذہ سے مشترکہ کی. اس ٹریننگ میں میڈم صبا گلریز، میڈم زینت فاطمہ، ماسٹر سجاد علی اور ڈاکٹر سلیم زبیری نے فعال طریقے سے اپنی شرکت درج کروائی اور مختلف سرگرمیوں میں حصہ لیا . اس ورکشاپ میں صوبہ کے قریب پچاس اردو اساتذہ نے شمولیت فرما کر خود کو جدید تکنیک کے ساتھ اردو پڑھانے کے طور طریقوں سے آراستہ کیا.

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close