اتر پردیشہندوستان

این آئی اے نے امروہہ میں ڈالا ڈیرہ، چار مشتبہ افراد کی تلاش

امروہہ (ہ س): قومی جانچ ایجنسی (این آئی اے) اور اے ٹی ایس نے امروہہ ضلع میں ڈیرہ ڈالا ہوا ہے۔ ٹیم نے چار مشتبہ افراد کی تلاش میں نوگاواں سمیت پانچ جگہوں پر چھاپہ ماری کی ۔ تین مشتبہ افراد کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ یہسبھی گرفتار کئے گئے مشتبہ افراد کے بارے میں دعویٰ کیا جارہاہے کہ وہ دہشت گردوں کے رابطے میں تھے۔
داعش کے نئے مبینہ ماڈیول حرکت الحرب اسلام وابستہ مفتی حسین سمیت چار مشتبہ افراد این آئی اے کی ریمانڈ پر ہیں۔ یوپی میں ان کے کیا منصوبے تھے، اس کو لے کر اس کے بعد سے این آئی اے کی ٹیم دہشت گردوں سے پوچھ گچھ کر رہی ہے۔ این آئی اے اور اے ٹی ایس کی ٹیم سعید اور رئیس کو لے کر منگل کو اس کے گھر پہنچی۔ تلاشی کے دوران ٹیم نے اس کے گھر سے کچھ سامان برآمدکئے ہیں۔ ٹیم نے کچھ مقامات کی ریکی بھی کی۔ ان کے پاس سے داعش کیپمفلیٹ ملے ہیں۔ یہ تنظیم کے سلیپر سیل کے طور پر کام کر رہے تھے۔ تفتیش میں امروہہ سے منسلک کچھ اہم سراغ ہاتھلگنے کا دعوی کیا جارہاہے۔ فی الحال ابھی تک کسی کی گرفتاری نہیں ہوئی ہے، جن ملزمان کی تلاش ٹیم کر رہی ہے ان کی عمر 20-22 سال کے درمیان ہے۔ اس تنظیم کے بہت سے لوگ این آئی اے کی ریڈار پر ہیں۔ این آئی اے کے آئی جی نے بتایا کہ ابھی تفتیش میں جو پتہ چلا ہے وہ یہ ہے کہ اس گروہ کا ماسٹر مائنڈ یوپی کے امروہہ کا ایک مولوی مفتی سہیل تھا، جو دہلی کا رہنے والا ہے۔ وہ مولوی امروہہ میں رہنے والے لوگوں کو اس گروہ میں شامل کرتا تھا۔ وہ لوگ بیرون ملک بیٹھے کسی شخص کے تمام رابطے میں تھے۔ اس گروہ کا مقصد آنے والے دنوں میں کئی بڑے جگہوں پر دھماکے کرکے دہشت پھیلانا تھا۔قابل ذکر ہے کہ این آئی اے نے دہلی پولیس کے اسپیشل سیل اور یوپی اے ٹی ایس ٹیم نے دہلی کے جعفرآباد اور سیلم پور میں چھ مقامات اور اتر پردیش میں امروہہ میں چھ، لکھنؤ میں دو، ہاپوڑ میں دو اور میرٹھ میں دو مقامات پر چھاپہ ماری کی کارروائی کے بعد مشتبہ افراد کو گرفتار کیا تھا۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close