سیاست

ایکسکلوزیو: گری راج سنگھ بولے، مرکزی حکومت اب مجبور نہیں، کشمیر کو کریں گے پتھربازی سے پاک

مرکزی وزیر گری راج سنگھ کا کہنا ہے کہ جموں کشمیر اب ‘پتھر بازی سے پاک’ ہوگا، کیونکہ اب مرکزی حکومت مجبور نہیں ہے۔ حکومت اس کے لئے سخت اقدامات کر رہی ہے۔ نیوز 18 انڈیا کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے پی ڈی پی کے ساتھ بہتر طور پر حکومت کو چلانے کی کوشش کی لیکن ایسا نہیں ہو پایا۔ خود کو قوم پرست بتاتے ہوئے گری راج آئندہ انتخابات میں ملک کی ترقی کے ایجنڈے کو بتانے کے ساتھ ہی یہ بھی واضح کر دیتے ہیں کہ مندر کے ایشو کو چھوڑا نہیں جائے گا۔

راہل گاندھی کے متنازعہ بیان دینے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ وہ (راہل) سونے کا چمچ لے کر پیدا ہوئے ہیں۔ وہ وزیر اعظم نریندر مودی کے یوگ پر سوال کرتے ہیں لیکن اپنے غیر ملکی دوروں کے بارے میں معلومات نہیں دیتے۔ انہوں نے کہا کہ راہل 56 دنوں تک بیرون ملک میں رہے تھے اس دوران انہوں نے کیا کیا اس کی وہ جانکاری دیں۔

ملک میں آبادی کے کنٹرول والے بیان پر انہوں نے کہا، “ملک کے بہت سے حصوں میں اقلیتی آبادی بڑھ رہی ہے۔ اگر ایسا ہی رہا تو یہ ٹھیک نہیں ہوگا۔ ہندوتوا ہندوستان کی روح ہے، جہاں جہاں ہندوتوا کمزور ہوا وہاں بحران بڑھا۔ ‘

چرچ اور مسجد پر دیئے گئے حالیہ بیان پر مرکزی وزیر نے کہا کہ جو لوگ مسجد، ‘بڑے بڑے تعلیمی اداروں،’ میں بیٹھ کر ہندوستان کے ٹکڑے ہوں گے انشاء اللہ کہتے ہیں۔ چرچ اور مسجد سے فتوی جاری کرکے مودی کو شکست دینے کی اپیل کرتے ہیں انہیں برداشت نہیں کیا جاسکتا۔

مسلمانوں کو پاکستان بھیجنے والے بیان پر ان کا جواب تھا، ‘میں کسی کو بھی پاکستان نہیں بھیجتا لیکن جو لوگ پاکستان پرست ہیں اور پاکستان جا کر ہندوستان کے خلاف بولتے ہیں انہیں کوئی کیوں نہیں بولتا۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close