سیاست

اے ایم یو میں دلت ریزرویشن کے حق میں ہیں مرکزی وزیرمختارعباس نقوی؟

نئی دہلی: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) میں دلت ریزرویشن کا معاملہ ابھی تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ شیڈول کاسٹ کمیشن کے چیئرمین رام شنکر کٹھیریا نے دلت ریزرویشن کے لئے اے ایم یو خط لکھا ہے، جس کا اے ایم یو کی طرف سے ابھی جواب نہیں ملا ہے، لیکن اس دوران مرکزی مختار عباس نقوی نے بھی اے ایم یوکوسنجیدگی سےغور کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے نیوز 18 اردو سے بات چیت میں کہاکہ دلت ریزرویشن کا معاملہ انتہائی حساس ہے، لیکن اے ایم یو کو اس معاملے پرغور کرنا چاہئے۔ کیونکہ دلت ایک کمزور طبقہ ہے۔

مختار عباس نقوی نے کہا کہ یہ کہنا ٹھیک نہیں ہے کہ اے ایم یو پاکستان میں نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ علی گڑھ والے یہ جانتے ہیں کہ یونیورسٹی ہندوستان میں ہے۔ اس لئے دلت انتہائی پسماندہ طبقہ ہے، اس پر اے ایم یو کو سنجیدگی سے غور کرنا چاہئے۔

واضح رہے کہ اے ایم یو اقلیتی ادارہ ہے، لیکن ابھی یہ معاملہ سپریم کورٹ میں زیرغور ہے، تاہم اس موضوع پرسیاسی بازارگرم ہے۔ کچھ لوگ دلت ریزرویشن دیئے جانے کا مطالبہ کررہے ہیں تو اے ایم یو کی طرف سے معاملہ سپریم کورٹ میں ہونے کا حوالہ دیا جارہا ہے، اس کے باوجود اس پر لوگ اپنی رائے دینے سے گریز نہیں کرتے ہیں۔

بہر حال ا س معاملے پر قانون کے ماہر اور سپریم کورٹ کے سینئر وکیل زیڈ کے فیضان کہتے ہیں کہ اس معاملے میں جتنی بھی باتیں کی جارہی ہیں، یہ سب بے بنیاد ہیں۔ یہ معاملہ سپریم کورٹ میں ہے اور اسٹیٹس کو برقرار ہے، اس لئے سپریم کورٹ کے فیصلے کا ہمیں انتظار کرنا ہوگا۔ زیڈ کے فیضان مزید کہتے ہیں کہ ابھی اے ایم یو معاملے پر سیاست کی جارہی ہے، جس کی وجہ سےاتنی ہنگامہ آرائی کی جارہی ہے، لیکن مجھے لگتا ہے کہ حکومت یا سرکاری اداروں میں بیٹھے لوگوں کو اس معاملے پر بیان بازی سے پرہیز کرنا چاہئے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close