پٹنہ

برجیش ٹھاکر کے پاس سے ملی لسٹ میں وزیر جی کا بھی نام

پٹنہ :مظفر پور ریپ کیس کی جڑیں آخر کتنی گہری ہیں. پہلے تو اس معاملے میں ریاستی حکومت پوری طرح خاموش رہی اور جب اپوزیشن کے دباؤ میں شیلٹر ہوم چلانے والے اور اس سانحہ کے اہم ملزم برجیش ٹھاکرکو جیل بھیجا گیا تو وہاں بھی اس کی مدد جم کر کی جا رہی ہے. بہار میں 15 اگست کے موقع پر جیلوں میں چھاپے مارے جاتے ہیں. ہفتہ کو جب یہ کارروائی کی گئی تو مظفر پور ضلع جیل میں بند برجیش ٹھاکر کو لے کر جو انکشاف ہوا وہ افسوسناک تھا. جس سانحہ کی گونج پارلیمنٹ سے لے کر پورے ملک میں سنی گئی اس کا ملزم جیل میں ملاقاتیو سے ملنے والے ایریا میں آرام سے ٹہلتے پایا گیا. اتنا ہی نہیں اس کے پاس سے کئی کاغذات جس میں دو صفحات میں قریب چالیس لوگوں کے نام اور موبائل نمبر ملے. اس میں کئی مؤثر لوگوں کے نام شامل ہیں جس میں ایک وزیر جی کے نام کے آگے ایک موبائل نمبر لکھا تھا. سوال اس بات کا ہے کہ کیا جیل میں بند برجیش ٹھاکر کی مدد کچھ رسوخ دار لوگ کررہے ہیں اور موبائل نمبر ہونے کی مطلب ہے کہ کیا وہ جیل کے اندر ہی ان لوگوں سے بات چیت بھی کر رہا ہے. اگرچہ تمام کاغذات ضبط کر سیل کر دیئے گئے ہیں. لیکن اس چھاپے ماری کے بعد انتظامیہ برجیش ٹھاکر کی بیماری کو بہانہ مان رہا ہے. امید کی جا رہی ہے کہ اب میڈیکل بورڈ کی تشکیل کر انہیں وارڈ میں شفٹ کیا جا سکتا ہے. اس کے علاوہ کچھ اور کاغذات ملے ہیں جس سے لگتا ہے کہ وہ اپنے وکلاء کے ساتھ بیٹھ کر کیسے لوگوں کو پھنسانا ہے، اس کی حکمت عملی بنا رہے ہیں. ایک ضلع پولیس افسر نے کہا کہ مظفر پور کورٹ میں کیس کے اہم ملزم برجیش ٹھاکر سے پوچھ گچھ کرنے کے لئے اسے ریمانڈ پر جانے کی درخواست کرنے سے پہلے ٹیم نے سیل بند کمرے کھولے اور تلاشی لی. افسر نے کہا، "ٹیموں نے مہر کئے گئے کمرے کھولے اور کیس میں اور ثبوت جمع کرنے کے لئے تلاشی لی. ٹیموں کی طرف سے کی گئی تمام انکوائری سرگرمیوں کو ریکارڈ کرنے کے لئے ویڈیوگرافی کی گئی.” ٹھاکر کو نو دوسرے لوگوں کے ساتھ گرفتار کرنے کے بعد شیلٹر ہوم کو ضلع انتظامیہ کی طرف سے سیل کر دیا گیا تھا. ٹھاکر نے مظفر پور سنٹرل جیل میں صرف پانچ دن گزارے ہیں. اس صورت میں اس کودو جون کو گرفتار کیا گیا تھا. پولیس نے کہا، "وہ صحت بنیاد پر جیل کے میڈیکل وارڈ میں رہ رہا ہے اور قیدیوں کے وارڈ میں رہنے سے بچنے میں کامیاب رہا.” پٹنہ ہائی کورٹ اس معاملے میں چل رہی سی بی آئی جانچ پر نظر بنائے ہوئے ہے. آپ کو بتا دیں سی بی آئی نے برجیش ٹھاکر کے بیٹے کو بھی حراست میں لیا تھا جسے آج صبح طویل پوچھ گچھ کے بعد چھوڑ دیا گیا ہے. غور طلب ہے کہ مظفر پور کیشیلٹر ہوم میں رہنے والی کئی لڑکیوں نے ریپ کا الزام لگایا اور ساتھ میں یہ بھی کہا کہ ان کو باہر بھی بھیجا جاتا تھا.

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close