بین الاقوامی

بندرگاہ حوالگی کے بہانے حوثیوں نے الحدیدہ میں نئی بھرتی شروع کر دی

دبئی:حوثی ملیشیا نے الحدیدہ کے بندرگاہی شہر میں اپنے زیر نگین علاقوں میں بڑے پیمانے پر جنگجوؤں کی بھرتی شروع کر رکھی ہے۔ ذرائع کے مطابق بھرتی کے اس سلسلے کا مقصد شہر میں واقع تینوں بندرگاہوں کی سیکورٹی اور انتظام وانصرام کے لئے تازہ دم فورس تیار کرنا ہے۔مقامی ذرائع کے مطابق نئے بھرتی کئے جانے والے نوجوانوں کو حوثی ملیشیا کے سینئر حکام یہ دھوکہ دے کر اپنی صفوں میں شامل کر رہے ہیں کہ انہیں بندرگاہ کی سیکورٹی کا فریضہ سونپا جائے گا۔یاد رہے الحدیدہ میں سیز فائر کی نگرانی کرنے والی مشترکہ کمیٹی نے جمعرات کے روز جنرل پیٹرک کیمٹ کی سربراہی میں ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رکھا۔ اس اجلاسوں میں یمنی حکومت اور باغی حوثیوں کے نمائندگان شریک ہوئے۔جنرل کیمٹ دونوں فریقین کی جانب سے الحدیدہ بندرگاہ اور شہر سے انخلاء کے لئے پیش کردہ طریقہ کار پر ردعمل کا انتظار کر رہے ہیں۔الحدیدہ کے گورنر ولید القدیمی کا کہنا ہے کہ جنرل کیمٹ نے الحدیدہ شہر اور اس میں واقع راس عیسی، الصلیف اور الحدیدہ کی بندرگاہوں سے باغی ملیشیا کے انخلاء کا طریقہ کار وضع کیا ہے۔ سویڈن میں طے پانے والے معاہدے کی روشنی میں یہ انخلاء منگل تک مکمل ہونا ضروری ہے۔ری ڈپلائمنٹ کمیٹی میں شامل حوثی نمائندے سویڈن معاہدے کی بعض شقوں کی من مانی تشریح پیش کر رہے ہیں حالانکہ اس معاہدے میں بندرگاہ اور شہر سے حوثی ملیشیا کے انخلاء کا منصوبہ پیش کیا گیا ہے۔ادھر باخبر ذرائع نے بتایا ہے کہ جنرل کیمٹ تمام فریقوں سے بعد ازاں فوج کی دوبارہ تعیناتی کا منصوبہ ڈسکس کریں گے تاکہ ہر دو فریق اپنا نقطہ نظر پیش کر سکیں تاکہ اس کے بعد منصوبے کو روبعمل لایا جا سکے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close