اتر پردیشہندوستان

بھوگائوں جامع مسجد کے قریب صرافہ کی دوکان میں لاکھوں کی چوری

پولس کی مستعدی اور رات کی گشتی دل پر لگا سوالیہ نشان

بھوگائوں ،مین پوری : نامعلوم چورو نے صرافہ تاجر کی دکان کے تالے توڑ کر لاکھوں روپیہ کے سونے چاندی کے زیورات سے بھری تجوری اور ہزاروں روپیہ نقدی لے اڑے ،موقعہ پر پہنچی ڈاگ اسکوائد ٹیم نے تفتیش کا آغاز کیا ،
. تحقیقات کے دوران فورینسنک ٹیم نے انگلی کے پرنٹ لیئے ہیں،چوری کی واردات سے مشتعل جوہری تاجروں نے اپنی اپنی دوکانیں بند رکھیں ،اور احتجاج شروع کیا،علاقائی پولس افسر کی یقین دہانی کے بعد تقریبا 6 گھنٹے بعد صرافہ تاجروں نے اپنی اپنی دکانیں کھول لیں ، علاقائی پولس افسر نے پانچ دن کے اندر چوری کھولنے کے لئے انچارج انسپکٹر کو ہدایات دی ہیں.
قصبہ کی جامع مسجد کے قریب واقع رچا جویلرس کی دکان سے گزشتہ ہفتہ و اتوار کی صبح نامعلوم چوروں نے تالے تو ڑ کر تقریبا ًپانچ لاکھ روپیہ کے سونے چاندی کے زیورات سے بھری تقریبا ًتین کونٹل وزنی الماری اٹھا کر لے گئے ،مزید چور دکان میں رکھی 28 ہزار کی نقدی بھی ساتھ لے گئے ، دکان کے مالک ونود کمارورما نے پولیس کو بتایا کہ اسے چوری کی اطلاع صبح کو ٹہلنے جانے والے لوگو کی طرف سے حاصل ہوئی ،
جب وہ دکان پر گیا اور دیکھا کہ دکان کا سٹر اٹھا ہوا تھا اور سارا سامان بکھرا پڑا تھا ،دکان میں تقریبا ًتین کوئنٹل وزنی تجوری چوقر اکھاڑ کر لے گئے ،الماری میں تقریبا ڈھائی کلو وزن کے چاندی کے زیورات اور تقریباً سو گرام سونے کے زیورات رکھے تھے،الماری میں چاندی کے سکہ اور دیگر قیمتی اشیاء رکھی تھیں،پولس کو اطلاع ملتے ہی پولس نے دوکان کے قرب میں آنے جانے پر روک لگا دی ،انچارج انسپکٹر ایس آر گوتم کی اطلاع پر ، ڈاگ اسکواڈ کی ٹیم موقعہ پہنچی اور بریک بینی سے جانچ کی ،اس دوران صرافہ کارو باری ودکاندار جامع مسجد کے قریب مجتمع ہو گئے ، اور غصہ کا اظہار کرتے ہوئے دکان کے سامنے دھرنے پر بیٹھ گئے.،معاملہ کی حساسیت کو دیکھتے ہوئے انچارج انسپکٹر نے اعلیٰ افسران کو اطلاع دی، اعلاقائی پولس افسر پریانک جین نے صرافہ تاجروں کو چوری کا انکشاف پانچ دن کے اندر کر دیئے جانے کی یقین دہانی کرائی ،

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close