سیاست

بی جے پی حکومت نے ویٹ کے نام پر کروڑوں روپے وصولے : کملناتھ

بھوپال:کانگریس کی مدھیہ پردیش یونٹ کے صدر کملناتھ نے پٹرولیم مصنوعات پر آج حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ویٹ کے نام پر اس موجودہ حکومت نے ریاست کے عوام سے کروڑ وں روپے وصولے ہیں۔مسٹر کملناتھ نے چالیس دن چالیس سوال کے سلسلہ میں اپنے 18ویں سوال میں الزام لگایا کہ ریاست کی بی جے پی حکومت نے ویٹ کے نام پر 2012-13 میں پانچ ہزار 417کروڑ روپے، 2013-14میں چھ ہزار 232کروڑ روپے، 2014-15میں چھ ہزار 832کروڑ روپے، 2015-16میں سات ہزار 631کروڑ روپے، 2016-17میں نو ہزار 160کروڑ روپے اور 2017-18میں نو ہزار 380کروڑ روپے ریاست کے عوام سے وصولے ہیں۔انہوں نے مرکزکی نریندر مودی حکومت پر بھی الزام لگاتے ہوئے کہا کہ حکومت نے پٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس بڑھاکر ملک کے عوام سے 2014سے 2018تک گیارہ لاکھ کروڑ روپے کی لوٹ کی ہے۔ مودی حکومت ٹیکس اور ڈویڈینڈ سے ہر برس ملک کے شہریوں سے تین لاکھ 43ہزار 858کروڑ روپے وصول رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جب ملک میں کانگریس کی حکومت تھی تو پٹرولیم مصنوعات پر رعایت دی جاتی تھی جسے مودی حکومت نے کم کردیا ہے۔
مسٹر کملناتھ نے کہاکہ جب کانگریس کے وقت 16مئی 2014کو کروڈ آئل 105ڈالر فی بیرل تھا تب پٹرول 71روپے اور ڈیزل 56روپے تھا۔ مودی حکومت 2017-18میں کروڈآئل ایوریج 56.43ڈالر فی بیرل ہے اور پٹرول 87روپے اور ڈیزل 76روپے پر پہنچ گیا۔ انہوں نے کہا کہ راشن میں غریبوں کو سستی چینی بند کردی گئی اور مٹی کے تیل کی قیمتوں میں دو گنا اضافہ کردیا گیا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close