بہارپٹنہسیاست

بی جے پی کو اپنی بات بتادی: اوپیندر کشواہا

نئی دہلی ، پٹنہ:
بہار میں لوک سبھا انتخابات کے مد نظر این ڈی اے کے درمیان سیٹوں کی تقسیم کو لے کر اب بات چیت جاری ہے۔ لہذا این ڈی اے کے اتحادی پارٹی رالوسپا نے سیٹوں کو لے کر اپنی خواہش بی جے پی سے ظاہر کر دی ہے۔ رالوسپا سربراہ نے پریس بریفنگ میں کہا کہ سیٹ شیئرنگ کو لے کر اب بات چیت جاری ہے۔ ابھی تک کوئی حتمی فیصلہ نہیں ہوا ہے۔ سیٹوں کے بٹواروں کو لے کر بی جے پی لیڈر اور بہار کے انچارج بھوپندر یادو اور بی جے پی صدر امت شاہ جی کا بھی فون آیا تھا۔ لیکن میں مصروف ہونے کی وجہ سے مذکورہ تاریخوں پر نہیں مل سکا۔ آج میں نے بھوپندر یادو سے ملاقات کی۔ اس دوران میں نے ان کو اس بات سے آگاہ کیا کہ بہار کے عوام کیا چاہتے ہیں۔ لوگوں کے جذبات کو دیکھتے ہوئے سیٹ بانٹی جائے۔ قابل احترام معاہدہ رالوسپاکے ساتھ این ڈی اے میں ہو۔ انہوں نے کہا کہبات چیت مثبت تھی۔
اوپیندر نے کہا کہ این ڈی اے میں کوئی اختلاف نہیں ہے۔ امت شاہ کا کہنا درست ہے۔ این ڈی اے میں جے ڈی یو کے آنے کے بعد تمام ساتھی پارٹیوں کی سیٹوں میں کمی کی جائے گی۔مل کے چلنے میں فائدہ اور نقصان دونوں ہوتا ہے۔ اس میں رالوسپا کو بھی پریشانی نہیں ہے۔ میں این ڈی اے کے لئے ہر قربانی دینے کو تیار ہوں۔ نتیش کمار ہمارے بڑے بھائی کی طرح ہیں۔ لیکن اس کے ساتھ ہی اوپیندر نے سوال کیا جب این ڈی اے کو فائدہ ہوا تو رالوسپا کو کیوں چھوڑ دیا گیا۔بہار میں حکومت بننے کے بعد تمام ٹیم لیڈر کابینہ میں شامل ہوئے لیکن ہمیں چھوڑ دیا گیا۔وہیں، تیجسوی سے ملاقات پر اوپیندر نے کہا کہ تیجسوی نے مجھ سے ملاقات کی تھی۔اس کے ساتھ ہی اوپیندر نے مدھیہ پردیش اسمبلی انتخابات کے لئے 66 امیدواروں کے ناموں کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ دوسرے مرحلے میں کچھ اور امیدواروں کا نام جاری کیا جائے گا۔پارٹی اپنی توسیع کے لئے پورے ملک میں کام کر رہی ہے۔ ہمیں پوری امید ہے کہ مدھیہ پردیش اسمبلی انتخابات میں ہمیں قابل احترام جیت حاصل ہو گی۔
اس سے پہلے منگل کو رالوسپا صدر اوپیندر کشواہا بی جے پی کے لیڈر اور بہار کے انچارج بھوپندر یادو سے ملاقات کی۔ دونوں رہنماؤں کے درمیان قریب آدھے گھنٹے تک بات چیت ہوئی۔ لیکن نشستوں کی تعداد کو لے کر بات نہیں بن پائی۔ بھوپندر یادو سے ملاقات کرکے نکلے اوپیندر سے جب صحافیوں نے پوچھا تو وہ فوری طور پر کچھ کہنے سے بچتے نظر آئے۔ اوپیندر کشواہا نے کہا اب ہم کہیں جا رہے ہیں، لوٹتے ہیں تو بات کرتے ہیں۔ یہاں سے نکل کر اوپیندر کشواہا گورنر ہاوٗس گئے

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close