دیگر خبریں

تعلیمی بیداری کارواں 6نومبر کو سمستی پور میں:اعظم حسین

سمستی پور:سید حامد فائونڈیشن کے زیر اہتمام بہار کے سیوان سے شروع ہونے والے تعلیمی بیداری کارواں سمستی پور میں 6نومبر کو سمستی پور پہنچیگا ۔یہ جانکاری تعلیمی بیداری کارواں سمستی پور کے کنوینر پروفیسر سید اعظم حسین نے دیتے ہوئے بتایا کہ ہندوستان میں مسلمانوں کی تعلیم و ترقی کے لئے سید حامد کی خدمات و قربانیوں کے اعتراف میں تشکیل دئے گئے سید حامد فائونڈیشن دہلی کی جانب سے گذشتہ سال کی طرح امسال بھی پورے ملک میں تعلیمی بیداری کارواں نکالا جا رہا ہے اس توسط سے مسلمانوں میں علمی رحجان کی ترمیم اور اس راہ میںدرپیش مشکلات کو حل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ انہوں نے بتایاکہ ہندوستانی مسلمانوں کی تعلیمی ترقی کے لئے تشکیل سید حامد فائونڈیشن نے انکی خدمات کو اثاثہ کی حیشیت تسلیم کرتے ہوئے انکے منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کے مقصد سے یہ مخلصانہ کوشش کر رہی ہے۔ 15رکنی کارواں میں میر کارواں مشہور و معروف اسکالر امان اللہ خان ہیں جنکی قیادت میں یہ قافلہ سیوان سے نکل کر سمستی پور میں 6نومبر کی شام پہنچیگااور شام کے چھ بجے شہر کے چکنور روڈ دھرم پور واقع آر این اتسو پیلیش میں دانشواران کا خطاب ہوگا ۔اس پروگرام کے انعقاد کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جس میںسید اعظم حسین کے علاوہ سید امام رضوی ، ڈاکٹر قاری محمد شاہد، ملت اکیڈمی کے سکریٹری اعجاز حسین آزاد، حاجی محمد مراد،سید عرفان حسین،ابو فاخر تنویر، آئی اے شبلی،محمد ولی اللہ، حاجی آفتاب عالم منا، مسعود جاوید منا ، سید منظر الجمیل، ابو سعید، سرفراز فاضل پوری،نعیم الدین آزاد،محمد نسیم اور راقم الحروف وغیرہ کو شامل کیا گیا ہے۔ انہوں نے تمام مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ کثیر تعداد میں اس میں شامل ہوکر تعلیمی بیداری کارواں کو کامیاب بنائیں اور مسلم سماج خصوصا نئی نسل کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے اور درپیش چیلنج کامقابلہ کرنے کے لائق بنانے میں سرگرم کردار ادا کریں۔

ٹرک کی چپیٹ میں آنے سے چھاتر کی موت
سمستی پور: سمستی پور ضلع کے بیتھان تھانہ حلقہ کے بیتھان ۔حسن پور شاہراہ پر سرگا استھان کے نزدیک ٹرک کی چپیٹ میں آجانے سے ایک چھاتر کی موقع پر ہی موت واقع ہو گئی ۔مہلوک چھاتر کی پہنچان تھانہ حلقہ کے ٹینگراہا گائوں باشندہ چھوٹے لال یادو کے لڑکے سونو کمار(۱۲) کے طور پر کی گئی ہے۔ ملی جانکاری کے مطابق سونو بیتھان بازار واقع کوچنگ سے بذریعہ سائیکل اپنے گھر ٹینگراہا لوٹ رہا تھا تبھی درگا استھان کے نزدیک سامنے سے آرہی ٹرک کے چپیٹ میں آگیا جس سے موقع پر ہی اسکی موت واقع ہو گئی ۔ واقعہ کے بعد مقامی لوگوں نے ڈرائیور کو ٹرک سمیت پکڑ لیا اور اسکی جمکر پٹائی کرنے کے بعد پولیس کے حوالے کر دیا ۔ ادھر واقعہ سے ناراض لوگوں نے ٹینگراہا گائوں کے نزدیک لاش کے ساتھ سڑک جام کر دیا ۔سڑک جام کے سبب بیتھان۔ حسن پور شاہراہ کے دونوں ہی جانب گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئی جس سے لوگوں کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔ ادھر واقعہ کی اطلاع پاکر بیتھان تھانہ کی پولیس موقع پر پہنچی اور ڈرائیور کو حراست میں لینے کے بعد ٹرک کو ضبط کر لیا اور مشتعل لوگوں کو یقین دہانی کر سڑک جام ختم کرایا ساتھ ہی مہلوک کی لاش کو اپنے قبضے میں لیکر پوسٹ مارٹم کے لئے سمستی پور صدر اسپتال بھیج دیا۔

سمستی پور میں اقلیت سیاسی سمیلن 17نومبر کو :پروفیسر حکیم
سمستی پور:سمستی پور کے ٹائون ہال میں آئندہ 17نومبر کو جنتا دل یو کے زیر اہتمام اقلیت سیاسی سمیلن منعقد ہوگا جسکی تیاری زور و شور کی جا رہی ہے۔یہ جانکاری جنتا یو اقلیت سیل کے صوبائی صدر پروفیسر وائی ایچ حکیم نے دیتے ہوئے بتایا کہ اب تک تمام سیاسی پارٹیوں نے مسلمانوں کے فلاح و بہبود کے لئے کوئی بھی ٹھوس و کارگر قدم نہیں اٹھایا اور نہ ہیں مسلمانوں کی فلاح کے لئے کوئی جامع منصوبہ ہی بنایا لیکن بہار کے ویزر اعلی نتیش کمار نے مسلمانوں کو مین اسٹریم سے جوڑنے کے لئے کئی منصوبے نہ صرف بنائے بلکہ اس پر عملی جامہ بھی پہنایا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے لیڈٖر اور بہار کے ہر دل عزیز وزیر اعلی نتیش کمار کا کہنا ہے کہ ہمیں ووٹ کا نہیں بلکہ ووٹرس کی فکر ہے میری حکومت کا یہ ہدف ہے کہ انصاف کے ساتھ سبکی ترقی ہو۔بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے جس ایماندارانہ اور غیر جانبدارانہ طور پر مسلمانوں کی فلاح کے لئے منصوبے چلا رہے ہیں وہ واقعی قابل ستائش ہے ۔ جناب حکیم نے اس موقع پر آگے کہا کہ اقلیت سیاسی سمیلن کے لئے تیاری کمیٹی کا کنوینر یوا جنتا دل یو کے قومی جنرل سکریٹری طارق الرحمن بابای کو بنایا گیا ہے جبکہ شارق الرحمن لولی کو ضلع کنویر بنایا گیا ہے ۔وہیں اس کمیٹی میں مولانا عمر نعمانی ، شیعہ وقف بورڈ کے سابق چیرمین شرف الدین اور رضیہ کامل انصاری کو شامل کیا گیا ہے۔ اس موقع پر جنتا دل یو کی ضلع صدر اشومیگھ دیوی،پروفیسر شاہد احمد ، تقی اختر ،ڈاکٹر درگیش رائے وغیرہ موجود تھے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close