بہارپٹنہسیاست

تیجسوی یادو کو ہائی کورٹ سے دھچکا، نہیں ملی راحت

بنگلہ خالی کرنا ضروری، ریاستی حکومت کے حکم کو چیلنج دینے والی درخواست مسترد

پٹنہ: پٹنہ ہائی کورٹ نے حزب اختلاف کے رہنما تیجسوی یادو کو کسی بھی قسم کی راحت دینے سے انکار کر دیا۔ بنگلہ خالی کرنے کے سنگل بینچ کے حکم کو چیلنج دینے والی ان کی اپیل پیر کو مسترد کر دی گئی۔چیف جسٹس امریشور پرتاپ شاہی اور جسٹس انجنا مشرا کی بینچ نے مسٹر یادو کی اپیل پر تمام فریقوں کی دلیل سننے کے بعد اپنا فیصلہ جمعہ کو محفوظ رکھ لیا تھا جس پر پیر کو اپنا فیصلہ سنایا۔ عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ یہ ریاستی حکومت کے دائرہ اختیارکا معاملہ ہے کہ کسے کون بنگلہ مختص کیا جائے۔ریاستی حکومت نے مسٹر یادو کو حزب اختلاف کے رہنما کے نام پر جو رہائش مختص کیا ہے وہ اصولوں کے مطابق درست ہے۔معلوم ہو کہ نائب وزیر اعلی کے عہدے سے ہٹ جانے کے بعد نائب وزیر اعلیٰ کے نام سے الاٹ کی گئی رہائش گاہ 5 دیش رتن مارگ کو چھوڑنے کی ہدایت محکمہ رہائش تعمیرات کے ریاستی افسر نے ستمبر 2016 کو تیجسوی یادو کو دیا تھا، چونکہ تیجسوی یادو اپوزیشن کے لیڈر ہیں اس لیے انہیں اپوزیشن لیڈر کے نام پر مختص رہائش گاہ میں جانے کو کہا گیا تھا لیکن تیجسوی یادو نے اپنے سابقہ رہائش گاہ 5 دیش رتن مارگ کو خالی نہیں کرتے ہوئے ہائی کورٹ میں محکمہ رہائش تعمیرات کے اسٹیٹ آفیسر کے خط کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ ہائی کورٹ کی سنگل بینچ نے سماعت کے بعد ان کی درخواست کو اکتوبر 2018 کو مسترد کر دیا تھا۔جس کے حکم کے خلاف یہ اپیل دائر کی گئی تھی جسے ہائی کورٹ نے پھر مسترد کردی۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close