بہارپٹنہ

جب تک آخری پائیدان پر کھڑے شخص کو مین اسٹریم تک نہیں لائیں گے تب تک ہمارا نشانہ پورانہیں ہو گا:نتیش

پٹنہ:وزیر اعلیٰ جناب نتیش کمار آج کرشن میموریل ہال میں جے ڈی یو کے ذریعہ منعقد دلت ،مہادلت کانفرنس میں شامل ہوئے۔ جے ڈی یو کے قومی جنرل سیکریٹری جناب شیام رجک نے وزیر اعلیٰ کو گلدستہ ، شال اور مومنٹو پیش کر کے ان کا خیر مقدم کیا۔ کانفرنس میں موجود پارٹی لیڈران نے وزیر اعلیٰ کو مالا پہنا کر شایان شان استقبال کیا ۔
کانفرنس کو خطاب کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے جے ڈی یو کے ریاستی صدر جنار وششٹ نارائن سنگھ کوضلع سطح پر دلت ، مہا دلت کانفرنس منعقد کرانے کے لیے شکریہ ادا کیا ۔ انہو ں نے کہا کہ ہماری ہدایت کے مطابق پارٹی کے لیڈران نے گائوں ٹولوںمیں جاکر لوگوں سے ریاستی حکوت کے ذریعہ چلائے جارہے فلاحی منصوبوں کے بارے میں پوری جانکاری لی اور ان کے مسائل سے بھی روبروہوئے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ایس سی کے رہائشی اسٹوڈنٹس ہاسٹل کی حالت کو بھی دیکھنے کی بات کہی تھی ۔ مغربی چمپارن میں ہم نے دیکھا کہ اسٹوڈنٹ کے ہاسٹوں کی حالت خستہ ہے ۔ اس کے بعد اس کے بعد ہاسٹلوں کی حالت کو درست کر نے کا فیصلہ لیا گیا اور اس کے بعد کئی ہاسٹل بنائے گئے ابھی بھی کئی زیر تعمیر ہیں ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ نومبر 2005 سے ہمیں جب کام کر نیکی ذمہ داری ملی، اسی وقت سے ہر حلقہ میں ہم کام کر نیکی کو شش کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ سال 2004-5میں درج فہرست ذات کے لیے جتنے منصوبے چلے تھے اس کے لیے بجٹ میںصرف 13کروڑ 5لاکھ 45ہزار کاالتزام تھا ۔ ہم نے درج فہرست ذات ، وقبائل بہبود کے لیے محکمہ بنا یا ۔ محکمہ تعلیم کے ذریعہ اسکالر شپ کا فائد طلبا تک پہنچایا ۔ اس کے علاوہ دیگر کئی منصوبے درج فہرست ذات کی فلاح کے لیے چلائے جارہے ہیں ۔ جس کا نتیجہ ہے کہ سال 2018-19 میں بچت میں ان منصوبوں کے لیے 1,224 کروڑ 56 لاکھ 28ہزار روپے کا التزام کیاگیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے سروے کرایاتو پتہ چلاکہ 12.5 فیصد بچے اسکولوں سے باہر ہیں ۔ اس کے بعد جو بچے اسکولوں سے باہر تھے انہیں اسکولوں تک پہنچانے کی سمت میں کارروائی کی گئی ۔ کلاس روم کی تعمیرکرائی گئی ۔ بڑے پیمانے پر اساتذہ کی بحالی کی گئی ۔ اس کے بعد اسکولوں میں لڑکے ، لڑکیوں کی تعدادمیں اضافہ ہو گیا ۔ اس کے بعد ہم نے پھر سروے کرا یا تو تحقیق میں پتہ چلا کہ اسکولوں سے باہر رہنے والے بچے،دلت ، مہا دلت اور اقلیتی فرقہ سے تھے ۔دلت ، مہا دلت کے بچوں کو پڑھا نے کے لیے ٹولا سیوکوں کی بحالی شروع کی گئی اور اقلیتی فرقہ کے بچوں کے لیے تعلیمی مرکز شروع کیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ ہر علاقہ میں کام کیاگیا۔ کوئی بھی علاقہ ترقیات سے محروم نہیں ہے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ایس سی ، ایس ٹی گرلس ہاسٹل منصوبہ کے تحت رہائشی ہاسٹل میں رہنے والے طلبا و طالبات کو جو سہولت پہلے سے مل رہی ہے اس کے علاوہ ہر ماہ 1ہزار روپے اضافی گرانٹ دینے کا فیصلہ ہم لوگوں نے لیا ۔ اس کے ساتھ ہی ان کے کھانے کے لیے فی طالب علم 15کیلو غلہ مفت مہیاکرانے کا انتظام یقینی بنا یاگیا۔ سیول سروس حوصلہ منصوبہ کا ذکر کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اس منصوبہ کے تحت بی پی ایس سی کا پہلا امتحان پاس کر نے والے ایس سی ، ایس ٹی کے طلبا، طالبات کومین امتحان کی تیاری کے لیے 50ہزار روپے کی گرانٹ اور یو پی ایس سی کا پہلا امتحان پاس کر نے والے طلبا اور طالبات کومین امتحان کی تیاری کے لیے ایک لاکھ روپے کی مدد دینے کا انتظام ہم لوگوں نے کیاہے۔ انٹر پرائزز میں دلچسپی رکھنے والے ایس سی ، ایس ٹی کے بچوں کو ذہن میں رکھتے ہوئے وزیر اعلیٰ ایس سی ،ایس ٹی انٹر پرائزز منصوبہ کی شروعات کی گئی ۔ اس کے لیے ریاستی حکومت کی جانب سے 10لاکھ روپے کی مدد مہیاکرائی جائے گی ۔ اس میں 5لاکھ روپے سبسڈی جبکہ 5لاکھ روپے بلاسود کے ہوں گے ۔
وزیر اعظم رہائشی منصوبہ (دیہی)کا ذکر کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اس منصوبہ سے جن لوگوں کانام جڑا ہے اور ان کے پاس اگر مکان بنانے کے لیے زمین نہیں ہے ایسے ایس سی ،ایس ٹی سے جڑے مستفیضوں کو ریاستی حکومت زمین خرید نے کے لیے 60 ہزار روپے دے گی ۔ انہوں نے کہا کہ جن لوگوں کا گھر 80یا 90 کی دہائی میں تعمیر ہوا ہے اور خستہ حالت میں ہے ان کا گھر پھر سے بنا نے کے لیے ریاستی حکومت نے وزیر اعلیٰ دیہی رہائش منصوبہ شروع کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ7عزائم منصوبہ کے تحت ہر گھر تک بنیادی سہولت پہنچائی جارہی ہے۔ دیہی ٹرانسپورٹ منصوبہ کے ذریعہ ہر پنچات میں 5گاڑی مہیا کرائی جارہی ہے ۔ اس میں 3ایس سی ، ایس ٹی ، اور 2انتہائی پسماندہ طبقہ کے نو جوانوں کو دی جائیںگی ۔ دو لاکھ روپے تک کی گاڑی خریدنے کے لیے ریاستی حکومت اپنی طرف سے 1لاکھ روپے مدد کے طور پر دے گی ۔ انہوں نے کہا کہ فلاح اور ترقیات کے کام کے لیے ہرطرح کے منصوبے چلانے کے لیے ہم پرعزم ہیں ۔با باصاحب بھیم رائو امبیڈکر نے آئین بنا یا جسے آڈپٹ کر کے نافذ کیاگیا ۔ انہوں نے کہا کہ کوئی طاقت نہیں ہے جو ریزرویشن کوبدل سکے۔بولنے والے بولتے رہیں گے۔ آج کل سوشل میڈیا کازمانہ ہے ۔ کہیں کہیں سے کچھ لوگ اناپ شناپ باتین وائرل کر تے ہیں ۔ ہم ہمیشہ پوری مضبوطی سے آپ کے ساتھ کھڑے ہیں ۔آپ کی حق تلفی کوئی نہیں کر سکتا ۔انہوں نے کہاکہ جب تک آخری پائیدان پر کھڑے شخص کو مین اسٹریم تک نہیں لائیں گے تب تک ہمارا نشانہ پورانہیں ہو گا ۔ترقیات کا فائدہ ہر گھر اور ہر شخص تک پہنچے اس کو ذہن میںرکھ کر منصوبہ بنا یاجاتا ہے ۔ ہمارا منصوبہ یونیورسل ہو تا ہے ، ترقیات کا فائدہ اگر چندگنے چنے لوگوں تک پہنچتا ہے اس کاکوئی مطلب نہیں ہے۔
کانفرنس میں موجود لوگوں سے اپیل کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہر حال میں سماج میں محبت ، بھائی چارہ ، آپسی ہم آہنگی کا ماحول بنائے رکھئے توہی ترقیات کا پورافائدہ ملے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم لوگوںکے تنازع میں نہیں محبت اورایک دوسرے کی عزت کر نے پر یقین رکھتے ہیں۔ بہت لوگو جنہوں نے کام نہیں کیا وہ غیر ضروری باتیں کر تے ہیں ۔کیونکہ جو کام نہیں کر تا ہے وہ زبان زیادہ چلاتا ہے۔ ایسے لوگ ہماری خاموشی پرسوال کھڑا کر تے ہیں ۔
وزیر اعلیٰنے کہا کہ شراب بندی کے سبب گائوں، قصبہ شہر جہاں بھی جائیے امن کاماحول ہے ۔ لیکن گچھ لوگ ماحول خراب کر نے میں لگے ہیں ۔پکڑے جانے پر ان کے خلاف سخت کارروائی کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلسل روزگارمنصوبہ کے توسط سے شراب بندی کے سبب جن خاندانوں کے سامنے گزر بسر کر نے کے مسائل کھڑے ہوئے ہیں ایسے کنبوں کو نشانزد کر کے انہیں متبادل روزگار مہیاکرایاجارہا ہے۔ ایسے خاندان کو ریاستی حکومت کی جانب سے گائے، بھینس پروری، مچھلی پروری ، ای رکشہ یادیگر متبادل روزگار کیلیے 60 ہزار روپے سے 1لاکھ روپے تک کی مدد دی جارہی ہے۔ اس کے علاوہ جیویکا گروپ کو شامل کر ایسے کنبوں کا بھی سروے کرا یا جا رہاہے جنہیں ریاستی حکومت کے ذریعہ چلائے جارہے منصوبہ کی جانکاری نہیں ہے اور نہ ہی ان کے پاس راشن کارڈ مہیا ہے ۔ایسے کنبوںکو بھی مسلسل روزگار منصوبہ سے جوڑا جائیگا ۔ کانفرنس میں موجود لوگوں سے اپیل کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ایس سی ، ایس ٹی کی فلاح کے لیے اگر آپ کے دل میں کوئی نئی بات ہے تو پارٹی کے ریاستی صدر کو بتائے۔ اگر ضرورت پڑی تو نیا منصوبہ بھی شروع کیاجائیگا ۔
کانفرنس میں جے ڈی یوکے ریاستی صدر وممبر پارلیامنٹ وششٹ نارائن سنگھ ، جے ڈی یو کے قومی جنرل سیکریٹری و ممبر اسمبلی شیام رجک نے بھی خطاب کیا۔
اس موقع پر پٹنہ جے ڈی یو ضلع صدر جناب بالمیکی سنگھ ، جے ڈی یو پٹنہ مہانگر کے صدر جناب امتیاز انصاری ، سابق ممبر اسمبلی ارن مانجھی ، جناب اجے پاسوان ، جناب رویند ر تانتی ، جے ڈی یو مہا دلت سیل کے صدر جناب ہلیش مانجھی ، جے ڈی یو کے ریاستی ترجمان جناب اجئے آلوک ، جناب راجیورنجن سمیت پارٹی کے کئی لیڈران اور جے ڈی یو کارکنان موجود تھے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close