اتر پردیشہندوستان

حضرت تاج الشریعہ کی نماز جنازہ اور

تدفین آج،دنیائے سنیت میں ماتم

بریلی: نبیرئہ اعلیٰ حضرت، تاج الشریعہ علامہ مفتی اختر رضا خاں ازہری میاں کی نماز جنازہ اتوار 22 جولائی کو بعد نماز ظہر ادا کی جائے گی۔ ان کا انتقال جمعہ کی دیر شام مختصر علالت کے بعد انتقال ہوگیا تھا۔ تاج الشریعہ کی طبیعت کئی دنوں سے علیل تھی۔ انہیں بغرض علاج مشن اسپتال میں داخل کرایا گیاتھا۔ حالت قدرے بہتر ہونے کے بعد یہ کہہ کر اسپتال سے چلے آئے تھے کہ انہیں گھر جانا ہے۔ لیکن اچانک مغرب کے وقت ان کی طبیعت بگڑی اور انہوں نے داعی اجل کو لبیک کہہ دیا۔ حضرت تاج الشریعہ درگاہ اعلیٰ حضرت کے جانشیں اور سرپرست اعلیٰ تھے۔ ان کے پسماندگان میں ان کے صاحبزادے مولانا عسجدرضا قادری اور 5صاحبزادیوں کے علاوہ ملک اور بیرون ملک میں پھیلے لاکھوں مریدین ہیں۔ ان کے انتقال کی خبر سے پوری دنیائے سنیت میں صف ماتم بچھ گئی ہے اور جوق درجوق ان کے مریدان و عقیدت مندان مختلف راستوں سے ان کی نماز جنازہ اور تدفین میں شرکت کیلئے بریلی پہنچ رہے ہیں۔ ریاست بہار کے طول وعرض سے بھی کثیر تعداد میں ان کے عقیدت مندان بریلی شریف کوچ کرچکے ہیں۔ ان کے انتقال پر بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے گہرے رنج وغم کااظہار کرتے ہوئے اسے عالمی سطح کا تعلیمی،سماجی اور روحانی نقصان قرار دیا ہے۔علمائ ومشائخ کی طرف سے بھی کثیر تعداد میں تعزیتی پیغامات موصول ہورہے ہیں۔ تعزیتی پیغام جاری کرنے والوں میں ادارہ شرعیہ بہار، جھارکھنڈ کے مہتمم مولانا سید احمد رضا ، جامعہ برکات منصور ،پیرمنصورگیا کے بانی حضرت مولانا سید اقبال احمد حسنی برکاتی اور مدرسہ اسلامیہ امانیہ لوام دربھنگہ کے روح رواں مولانا سلیم اختر بلالی شامل ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close