بہار

خانقاہ رحمانی کے سالانہ فاتحہ سے مسلمانوں میں دینی وروحانی بیداری آتی ہے

مونگیر:خانقاہ رحمانی مونگیر میںسالانہ فاتحہ اس سال ۱۰؍۱۱؍ نومبر کو ہورہا ہے، ۱۰؍ نومبر کو بعد نماز مغرب جامعہ رحمانی کا عظیم الشان اجلاس دستاربندی بھی ہوگا، اجلاس اور فاتحہ کی تیاریاںزوروںپر ہورہی ہیں، صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھا جارہا ہے، امید ہے اجلاس اور فاتحہ میں صوبہ اور بیرون صوبہ سے بڑی تعداد میںعقیدتمند شریک ہوںگے۔
خانقاہ رحمانی مونگیر میں حضرت شاہ فضل رحماں گنج مرادآبادی، حضرت مولانا محمد علی مونگیری، حضرت مولانا لطف اللہ صاحب رحمانی اور حضرت مولانامنت اللہ صاحب رحمانی رحہم اللہ اور سلسلہ کے دوسرے بزرگوں کے لیے ختم قرآن اور ایصال ثواب کا اہتمام برسوںسے جاری ہے، جو مختلف تاریخوںمیں حالات کے لحاظ سے ہوتا رہتا ہے، اس موقعہ پر مسلمانوںکا بڑا اجتماع کئی لحاظ سے اہم ہے،انہیں چند دنوں قرآن مجید کی تلاوت اور ذکرو ورد کا اہتمام نصیب ہوتا ہے، مشہور علماء ومشائخ کی تقریریںسننے کو ملتی ہیں، جو اصلاح معاشرہ، اصلاح نفس اور ملت کی فلاح وکامرانی پر مشتمل ہوتی ہیں، اسی کے ساتھ نظم وترتیب کا سلیقہ پیدا ہوتا ہے، کیونکہ اس موقعہ پر شریک ہونے والوں کو اس بات کی ہدایت دی جاتی ہے ، جس کی وہ پابندی بھی کرتے ہیں، کہ نماز، قرآن مجید کی تلاوت ، درود شریف، کلمہ طیبہ اور استغفار کواپنی زندگی کا وظفیہ بنالیں، اور آتے وقت ان چیزوں کا اہتمام کرتے ہوئے خانقاہ رحمانی آئیں،گویا شرعی طرز زندگی اور ڈسپلن کی خوبیاں اس گراں قدر موقعہ سے لوگوں میں پیدا ہوتی ہیں۔
اسی طرح جامعہ رحمانی کے اجلاس اور دعاء کے بعد خانقاہ رحمانی کی مسجد میں لوگوں کو اسلام کے مفکر اور شریعت وطریقت کے رازداں اور پاسباں امیر شریعت حضرت مولانا محمدولی صاحب رحمانی کی سبق آموز تقریروں کو بھی سننے کا موقعہ ملتا ہے، دونوں تقریریں بہت اہم ہوتی ہیں، جہاں دعاء کے بعد کی تقریر تصوف کے رموز، دین کی بنیادی باتوں اور ہدایتوں پر مشتمل ہوتی ہیں، وہیںجامعہ رحمانی کے اجلاس کا کلیدی خطبہ ملت کے لیے حیات بخش پیغام رکھتا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close