ممبئی

دستور کے تحفظ کیلئے جانوں کی قربانی دینے کیلئے تیار رہنا چاہئے: ہاردک پٹیل

ممبئی: دستورہند کے تحفظ کے لئے ڈاکٹر امبیڈکرکے گھر سے چیتہ بھومی تک یونائیٹیڈ یوتھ فرنٹ کے زیراہتمام آج نکالی گئی سنویدھان بچاؤ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مقررین جہاں دستور وجمہوریت کو لاحق خطرات اور اس کے تحفظ کی ضرورت پر زور دیا وہیں مرکز کی مودی حکومت کو بھی نشانہ بنایا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے راشٹروادی یوتھ کانگریس کے قومی صدر دھیرج شرما نے کہا کہ جو حکومت دستور کی عزت اور اس کا تحفظ نہیں کرسکتی، وہ اقتدار میں رہنے لائق نہیں ہے۔ ملک کا دستور ہمارے لئے باعث افتخار ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی جمہوریت کو آج زبردست خطرہ لاحق ہے۔ اس لئے نوجوانوں کی 14تنظیموں نے متحدہ طورپراس گونگی وبہری حکومت کے خلاف یونائیٹیڈ یوتھ فرنٹ کے تحت اپنی آواز بلند کی ہے۔اس ریلی میں شرکت کے لئے گجرات سے آئے ایم ایل اے جگنیش میوانی نے کہا کہ آج رام مندر اور مسجد کا معاملہ اٹھایا جارہا ہے لیکن جب بی جے پی یہ موضوع آپ کے پاس لائے تو آپ آپ اس سے اس کے روزگار اور اچھے دن کے وعدوں کے بارے میں سوال کیجئے۔ انہوں نے بھیماکوریگاو ¿ں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ بھیما کوریگاو ¿ں فساد میں مودی کے گرو بھڑے نے دلتوں کو مارا لیکن ان پر کوئی مقدمہ درج نہیں کرتے ہوئے دلتوں پر ہی ظلم وناانصافی کی جارہی ہے۔ انہوں نے وزیراعلیٰ سے سوال کیا کہ آپ کب بھڑے کے خلاف کارروائی کریں گے؟ میوانی نے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ آج ملک کا دستور خطرے میں ہے، اس لئے اسے بچانے کے لئے متحد ہوجایئے۔ اس ریلی میں شریک گجرات کے ہی پاٹیدار لیڈر ہاردک پٹیل نے دستور کے تحفظ کے لئے تمام لوگوں کو متحد ہونے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے اس موقع پرکہا کہ اگر دستور کے تحفظ کے لئے ہمیں اپنی جانوں کی قربانی بھی دینی پڑے تو ہمیں اس کے لئے تیار رہنا چاہئے۔ جے این یو کے سابق لیڈر کنہیا کمار بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے بیشتر لوگ دستور کو لاحق خطرات کے بارے میں باتیں کررہے ہیں۔ اس لئے آج ملک کے تمام لوگوں کے پاس جاکر دستور کو لاحق خطرے کے بارے میں بتائے جانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے اپیل کیا کہ اس منووادی وفرقہ پرست حکومت کو اقتدار سے بے دخل کرنے کے لئے تیار رہئے۔ کنہیا کمار نے کہا کہ اس ملک میں نہ ہندو خطرے میں ہے اور نہ ہی مسلمان خطرے میں ہے۔ اگر خطرے میں ہے تو صرف دستور خطرے میں ہے۔ اس ریلی میں کنہیاکمار نے مودی وامیت شاہ پربھی زبردست تنقید کی۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close