بہارمتھلانچل

دلاور پور میں ڈائریا سے 4 مسلم بچوں کی موت

ڈی ایم سی ایچ میں 8بچے زیر علاج،عارضی میڈیکل کیمپ قائم

دربھنگہ : بہیری بلاک کے ہرہچا پنچایت کے دلاور پور گاؤں میں ڈائریا کی بیماری پھیلنے سے بڑی تعداد میں لوگ متاثر ہوئے جس میں اب تک چار بچوں کی موت ہوگئی ہے۔مرنے والوں میں محمد جہانگیر کی 6سالہ بیٹی گلشن آرا اور 3سالہ بیٹا محمد علی، محمد جوہی کی 3سالہ بیٹی آفرین پروین اور رستم علی کا 15سالہ بیٹا محفوظ عالم شامل ہیں۔ درجن بھر سے زائد بچوں کے بیمار ہونے کی اطلاع ہے ۔ ان میں سے 8کو ڈی ایم سی ایچ میں داخل کرایا گیا ہے۔اب حالات قابو میں ہیں۔ ڈاکٹروں کی ٹیم گاؤں پہنچ چکی ہے اور عارضی طور سے میڈیکل کیمپ لگا کر متاثر ین کا علاج کیا جارہا ہے۔ مقامی رکن اسمبلی امرناتھ گامی جے ڈی یو لیڈر روندر کمار نے فوری طور سے گاؤں پہنچ کر حالات کا جائزہ لیا۔ اس کی تصدیق بہیری تھانہ انچارج نے بھی کی ہے۔ وہیں حیا گھاٹ کے رکن اسمبلی امرناتھ گامی نے مذکورہ گاؤں کا دورہ کرنے کے بعد بتایا کہ وہ وارڈ او ڈی ایف قرار دیا جاچکا ہے۔ باوجود اس کے لوگ کھلے میں اجابت کرتے ہیں اور ایک تالاب سے بہت زیادہ سڑن اور بو نکلنے کی اطلاع ملی ہے۔ وہاں لوگوں کو بیدار کرنے کے لیے مہم چلائی جائے گی۔ مسجد سے بھی اعلان کیا گیا ہے کہ کسی کو بھی اگر ڈائریا کی شکایت ہوتی ہے تو فورا ولاور پور اپگریڈیڈ مڈل اسکول میں چلائے جا رہے عارضی کیمپ میں پہنچ کر یا اسپتال جا کر ڈاکٹر سے رابطہ کر کے علاج کروائیں۔ انہوں نے بتایا کہ گاؤں میں بلیچنگ پاؤڈر چھڑکاؤ، ہیلوجن ٹیبلیٹ کی تقسیم اور ڈائریا سے بچاؤ کے لیے بچوں کو دوا وغیرہ دستیاب کرادئے گئے ہیں۔ صدر ایس ڈی او راکیش گپتا سمیت انتظامیہ اور ہیلتھ ڈپارٹمنٹ اعلی ٹیم نے بھی گاؤں کا معائنہ کیا اور کیمپ کر رہی ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close