بہارپٹنہ

دوبارہ تعمیر بی پی منڈل پل کا وزیر اعلیٰ نے افتتاح کیا

پٹنہ: وزیر اعلیٰ جناب نتیش کمار نے آج کھگڑیا ضلع کے تحت این ایچ 107کے 16ویں کلو میٹر (ڈمری گھاٹ) میں کوسی ندی پر دوبارہ تعمیر بی پی منڈل پل کا ریمورٹ کے ذریعہ افتتاح کیا ۔ اس موقع پر ڈمری گھاٹ میں منعقد پروگرام کو خطاب کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے نئے سال کی مبارک باد دی ۔ انہوں نے کہا کہ آج کے لیے یہ خوشی کا موقع ہے کہ منہدم بی پی منڈل پل کا افتتاح کیا گیا ہے ، اس سے لوگوں کو آمدورفت میں کافی سہولت ہو گی ۔ مہیش کھونٹ سے سہرسہ کی دوری کم ہو جائے گی ۔سال1990 میں بی پی منڈل سیتو کی تعمیر کی گئی تھی ،اس کے بعد اس سڑک کو این ایچ اعلان کیاگیاتھا ۔ سال 2010 میں کوسی ندی میں آئے سیلاب کے دوران پل منہدم ہو گیا تھا اور اس پر آمدورفت پوری طرح سے بند ہو گئی تھی ۔ منہدم حصہ 290میٹر کے دوبارہ تعمیر کے لیے مرکز کی منظوری ملنے کے بعد آج یہ تعمیر ہو کر لوگوں کو سونپی جارہی ہے ۔ پل کا جو منہدم پلر ہے وہ صرف تکنیک پر بنا یا گیا ہے ۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اسی پل کے متوازی ایک نئے پل کی سفارش کی گئی ہے ، تاکہ مہیش کھونٹ سے سہر سہ کی طرح آمدروفت مزید آسان ہو سکے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ شروع میں ہم لوگوں نے بہار کے کسی کونے سے پٹنہ پہنچنے کے لیے چھ گھنٹے کا نشانہ رکھا جو تقریبا حاصل کیا جا چکا ہے ۔ اس کے لیے کئی سڑکوں اور پل ، پلیوں کی تعمیر کی گئی ، لیکن اب بہار کے کسی کونے سے پٹنہ پہنچنے کے لیے 5گھنٹے کا نشانہ متعین کیاگیا ہے ۔ اس کے لیے پلوں کی مضبوطی ، نئے پلوں کی تعمیر کے ساتھ ساتھ قدیم سڑکوں کی توسیع اور نئی سڑکوں کی تعمیر کی جارہی ہے ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ سلطان گنج سے اگوانی گھاٹ کے درمیان نئے پل کی تعمیر زور پر ہے ، جس کی لاگت 1710 کروڑ روپے ہے ، اس سے سہر سہ اور بھاگلپور کی دوری کم ہو جائے گی ۔25 دسمبر 2003 کو جب ہم ریل کے وزیر تھے اس وقت سابق وزیر اعظم آنجہانی اٹل جی کے ہاتھوں مونگیر اور کھگڑیا کے درمیان ریل پل کا سنگ بنیادرکھا گیا تھا ۔اس ریل پل کی تعمیر سے کھگڑیا اور مونگیر کے درمیان دوری کم ہو جائے گی ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہم لوگوں سڑکی کی تعمیر میں اور بھی تیزی چاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کھکڑیا ، سہر سہ ، مدھیہ پورہ ، سپول کے درمیان رابطہ بحال کر نے کے لیے نئی سڑک کی تعمیر کی جارہی ہے ۔ اس سے لوگوں کو پٹنہ آنے میں بھی سہولت ہو گی ۔ مانسی سے شروع ہو کر سات کیلو میٹرلمبائی کے بعد بدلا گھاٹ ہے اس سڑک کو ڈبل لائن بھی کیا جائے گا ۔
بدلا گھاٹ سے فنگو گھاٹ کے درمیان ساڑھے پندرہ کیلو میٹر کی دوری ہے اس کے درمیان سے چار ندیاں باگمتی ، کتیاینی کملا، پرانی کوسی اور کوسی ندی ہے ۔ اس دوری کے لیے اعلیٰ سطح کے پل کی تعمیر کیا جائے گی ۔ اس دشوار سڑک کی تعمیر کے لیے ہم لوگ کام کررہے ہیں ، جس کی لاگت 14سو کروڑروپے کی ہو گی ۔ اس راستے سے کتیاینی مندر جانے میں بھی سہولت ہو گی جو سیاحت کے نقطہ نظر سے بھی قابل استعمال ہو گا ۔ اس کا ڈی پی آر تیار کر لیا گیا ہے اور اس سے جلدی ہی منظوری کر کر کام شروع کیا جائیگا ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ این ایچ 107 جو مہیش کھونٹ سے پورنیہ تک 180کلو میٹر ہے اس کی مضبوطی کے تحت 10میٹر سڑک کو اور چوڑا کر نے کی منظوری دی گئی ہے ۔
زمین اکوائر منٹ کی عمل اب آخری مرحلہ میں ہے ۔باقی حصہ دو برسوں میں تیار ہو جائے گا ۔ اس کی لاگت 1380 کروڑ 61لاکھ ہے ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ان راستوں کی تعمیر سے لوگ کہیں سے کہیں جاسکتے ہیں اور پانچ گھنٹے کا نشانہ میں کافی سہولت ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ این ایچ آئی اور اسٹیٹ ہائیوے کے ذریعہ سڑکوں کی تعمیر کی جارہی ہے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہم لوگ انصاف کے ساتھ ترقی کے راہ پر آگے بڑھ رہے ہیں ، انصاف کے ساتھ ترقی کا مطلب ہے ہر طبقہ کی ترقی ، ہر علاقہ کی ترقی ، انہوں نے کہا کہ بہار لینڈ لاکڈ اسٹیٹ ہے یہاں بڑی صنعت نہیں لگ رہی ہے ، لیکن یہاں چھوٹی صنعت کے امکانات بڑھ رہے ہیں ۔ ہم لوگ مہذب طریقہ سے ریاست میں ترقی کررہے ہیں ۔ لوگوں کی آمدنی بڑھ رہی ہے ، زندکی کے معیار میں سدھار ہو رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ترقی کے کام کے ساتھ ساتھ ہم لوگ سماجی اصلاح کا کام ، کمسن کی شادی اور جہیز کی روایت کے خلاف مہم چلارہے ہیں ۔ ریاست میں مکمل شراب بندی لاگو ہو نے سے لوگوں کی زندگی کے معیار ، کھانے پینے میں سدھار ہو رہا ہے ۔ یہاں بڑی تعداد میں خواتعین بیٹھی ہیں میں ان سے گزارش کر وں گا کہ وہ شراب پینے والے کو سمجھائیں ،نہیں سمجھنے پر ان کو پکڑوائیں ، وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہر گھر تک بجلی پہنچ گئی ہے ۔ٹرانسفارمر کے کھنبے پر ایک نمبر درج ہے جس پر شراب پینے والے اور اس کے دھندے بازوں کی اطلاع دے سکتے ہیں ۔ دو گھنٹے کے اندر اندر پولیس کارروائی بھی کرے گی اور ان کے نام کو خفیہ رکھا جائے گا اور اس کی اطلاع بھی انہیں دی جائے گی ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہاں کے ممبر اسمبلی نے جو نوودے اسکول کے لیے ساڑھے تین ایکڑ کی زمین کی ضرورت ہے ۔ سڑک تعمیرات محکمہ کی یہ زمین ہے،اسے منتقل کر نے کی ہم نے ہدایت دے دی ہے اور آئندہ کیبنٹ میں یہ منظور ہو جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ چوتھم بلاک کی باگمتی ندی پر چوتھم گھاٹ پر 75کروڑ کی لاگت سے پل کی تعمیر کی منظوری دی گئی ہے ۔ وزیر اعلیٰ نے لوگوں سے اپیل کر تے ہوئے کہا کہ اپنے بچوں کو پڑھائیے ، انٹر میڈیٹ پاس طلبا و طالبات کو آگے کی پڑھائی کے لیے اسٹو ڈنٹ کریڈٹ کارڈ منصوبہ کے تحت 4لاکھ کی رقم حکومت مہیا کرا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بچے پڑھ کر جب نوکری حاصل کریں گے تو یہ رقم واپس کر نی ہو گی اور آگر واپس کر نے کی استطاعت نہیں ہو گی تو اسے معاف بھی کر دیا جائے گا ۔ آپ اپنے بچوں کو بے فکر ہو کر پڑھائے ۔ جب وہ پڑھیں گے تبھی وہ آگے بڑھیں گے ۔
اس موقع پروزیر اعلیٰ کا خیر مقدم گلدستہ ، شال اور پھولوں کا بڑا ہار پہنا کر کیا گیا ۔
پروگرام کو نائب وزیر اعلیٰ جناب سشل کمار مودی ، سڑک تعمیرات کے وہیر جناب نندکشور یادو ، ممبر پارلیمنٹ جناب چودھری محبوب علی قیصر ، ممبر اسمبلی جناب پنا لال پٹیل ، سڑک تعمیرات محکمہ کے پرنسپل سکریٹری جناب امرت لال مینا نے بھی خطاب کیا ۔
اس موقع پر ضلع کے انچارج و پنچایتی راج کے وزیر جناب کپل دیو کامت ، چھوٹے آبی وسائل و آفات مینجمنٹ کے وزیر جناب دنیش یادو ، ممبر قانون ساز کونسل جناب سونے لال مہتا ، ممبر قانون ساز کونسل جناب رجنیش کمار ، بہار سرکار کے سابق وزیر محترمہ رینو کشواہا ، بہار سرکار کے سابق وزیر جناب سمراٹ ، بی جے پی لیڈر جناب وجئے کشواہا ، ضلع جے ڈی یو صد کھگڑیا جناب سنیل کمار ، ضلع صدر بی جے پی ، کھگڑیا جناب ارجن شرماسمیت دیگر عوامی نمائندے ، وزیر اعلیٰ کے پرنسپل سکریٹری جناب چنچل کمار ، ڈی آئی جی جناب جیتندر سنگہ ، ڈی ایم جناب انردھ پرساد سمیت ضلع کے دیگر افسران ، انجینئر ، جیویکا کی دیدیاں دیگر اہم شخصیات سمیت بڑی تعداد میں لوگ موجود تھے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close