بہارسیمانچل

دوۃ الحج الکبری سمینار میں شرکت کے لئے شیخ مطیع الرحمن بن عبد المتین مکۃالمکرمہ روانہ ہوئے

ہند و عرب کے ما بین ثقافتی تعلقات کو مستحکم بنانے میں پیش قدمی کا باعث

(کشن گنج:وزارت حج وعمرہ کی جانب سے 1977ء سے اب تک ہر سال حج سے قبل ایک عالمی سمینار ” ندوۃ الحج الکبری” کے نام سے منعقد کیا جاتا ہے جس میں دنیا کے متعدد ممالک سے تقریبا 200علماء کرام ودانشور حضرات شریک ہوتے ہیں اورسمینار سے متعلق طے شدہ موضوع پر مقالے،بحوث اور تاثرات پیش کرتے ہیں۔ اسی روایت کو جاری رکھتے ہوئے امسال بھی (شرف الزمان والمکان فی الطمانینۃ والامان) کے عنوان پر سمینار "ندوۃ الحج الکبری” کا انعقاد ہونا ہے جس میں وزارت حج کی دعوت پربطور خصوصی چیر مین توحید ایجوکیشنل ٹرسٹ،کشن گنج و آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بور ڈ کے ممبر شیخ مطیع الرحمن بن عبد المتین حفظہ اللہ شرکت کی غرض سے روانہ ہو چکے ہیں، شیخ محترم اسی موضوع کے مطابق اپنا تاثرات پیش کریں گے۔ اس سفر کے متعلق معلومات فراہم کرتے ہوئے شیخ نے کہا کہ سمینار ندوۃ الحج الکبری کے انعقاد کا مقصد حج کی مناسبت سے مخلتف موضوعات پر علمی و تحقیقی مقالات و مواد کو منظر عام پر لانا ہے تاکہ دنیا کے خطہ خطہ تک یہ عظیم علمی سرمایا پہنچ سکے اور لوگ ان سے خاطر خواہ فائدہ اٹھاسکيں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اسی غرض سے دنیا بھر سے ماہرین اور دانشوار حضرات کو اس اہم سمینار میں شریک ہونے کی دعوت دی گئ ہے ۔ جو مقاصد حج اور ان کے لوازمات پر باہمی تبادلہ خیال کريں گےاورموضوع سے متعلق اپنے قیمتی آری و تاثرات پیش کریں گے ۔ شیخ مطیع الرحمن نے یہ بھی کہا کہ ہر سال ملک ہندوستان سے لاکھوں لوگ حج کی ادائگی کی خاطر بیت اللہ شریف تشریف لاتے ہیں،جن کی آمد و رفت کو آسان بنانے کے لئے سعودیہ عرب اور حکومت ہند کی طرف سے مامور وزراء اپنی ذمہ داریوں کو بحسن و خوبی انجام دیتے ہيں۔ اس طرح دونوں ممالک کے درمیان تہذیبی اور ثقافتی تعلقات میں استوار اور بہتری بھی آتی ہے ۔ اخیر میں شیخ نےاپنے اس سفر کے حوالہ سے کہا کہ سمینار کے بعد فریضہ حج کی بھی ادائگی ہوگی۔جس میں وطن عزیز کے حق میں دعا و مناجات بھی کی جائیں گی کہ اللہ تعالی ملک ہندوستان میں امن و سلامتی کی فضا قائم رکھے ،یہاں کے باشندگان کو ہر طرح کے ظلم و زيادتی سے محفوظ رکھے اور اس ملک کی نمایاں شناخت جس کی وجہ سے پوری دنیا میں اسے شہرت و ناموری حاصل ہے یعنی گنکا جمنی تہذیب کو اس کے حقیقی معنی کے ساتھ بحال رکھے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close