سیاست

دہلی حکومت بنام ایل جی : سپریم کورٹ نے کہا : دہلی کابینہ کے مشورہ پر کام کریں لیفٹیننٹ گورنر

دہلی حکومت بنام لیفٹیننٹ گورنر معاملہ میں سپریم کورٹ نے اپنا اہم فیصلہ سنادیا ہے۔ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس دیپک مشرا نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ ہم نے سبھی پہلووں پر غور کیا ۔ انہوں نے مزید کا کہ مرکز اور ریاستی حکومت کو آپس میں تعاون کرنا چاہئے اور مل جل کر کام کرنا چاہئے ۔ مرکزی حکومت کو ممبران اسمبلی کے دائرہ اختیار میں آنے والے معاملات میں اپنی طاقت کا استعمال نہیں کرنا چاہئے ۔

وزیر اعلی اور ایل جی کے درمیان اختیارات کی لڑائی سے وابستہ عرضی پر سپریم کورٹ نے واضح کردیا کہ ایل جی تنہا فیصلہ نہیں لے سکتے ہیں ، وہ وزیر اعلی سے مل کر بات کریں ۔ چیف جسٹس نے مزید کہا کہ دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ نہیں دیا جاسکتا ہے۔ زمین ، پولیس اور لا اینڈر آرڈر کے معاملات مرکز کے ہی پاس رہیں گے۔ ساتھ ہی ساتھ انہوں نے یہ بھی کہا کہ دہلی حکومت کو ہر معاملہ میں ایل جی کی اجازت لینے کی ضرورت نہیں ہے۔ ایل جی دہلی حکومت کےساتھ مل کر کام کریں اور ان کے فیصلوں کا احترام کریں۔

وہیں آئینی بینچ میں شامل جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ نے کہا کہ منتخب حکومت کے ہر فیصلے کو ایل جی کی اجازت کی ضرورت نہیں ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ ایل جی یہ خیال رکھیں کہ منتخب حکومت کو ہی لوگوں کے سامنے جواب دینا پڑتا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close