ہندوستان

رافیل سود’ ’صدی کی بدعنوانی‘ :کانگریس

نئی دہلی:مدھیہ پردیش ، چھتیس گڑھ، راجستھان اور میزورم میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے پیش نظر کانگریس رافیل جنگی طیارہ کے سودے میں مبینہ بے ضابطگیوں پر مرکز کی قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) حکومت کے خلاف ماحول بنانے پر پورا زور لگا رہی ہے۔رافیل سودے پر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی قیادت والی مرکزی حکومت کے خلاف محاذ کی قیاد ت کررہی کانگریس کے صدر راہل گاندھی کے ساتھ پارٹی نے گزشتہ ہفتہ پورے ملک کے مختلف حصوں میں مظاہرہ کیا اور لوگوں کے سامنے اس سودے میں ہوئی مبینہ بے ضابطگیوں کے معاملہ کو زورشور سے اٹھایا۔رافیل سودے میں بدعنوانی کو سامنے لانے کے لئے گزشتہ 25اگست کو شروع کی گئی ملک گیر مہم میں کانگریس نے 50سے زائد لیڈروں کو کھڑا کیا ہے۔ مہم کے تحت مسٹر گاندھی کے علاوہ پارٹی لیڈروں آنند شرما، جے پال ریڈی، اجے ماکن، شکیل احمد، رندیپ سرجے والا، منپریت بادل، پون کھیرا، راج ببر ، پرینکا چترویدی اور جے ویر شیرگل اور دیگر نے ملک میں مختلف مقامات پر پریس کانفرنس کیں۔کانگریس پورے ملک میں 100سے زائد پریس کانفرنس کرے گی۔ پارٹی نے اب تک نئی دہلی، سری نگر، جالندھر، جودھپور، راجکوٹ، ناسک، وکاس پور، دہرہ دون ، گوالیار، منڈی میرًٹھ، کبلی ، بنگلورو، کوئمبٹور اور جھانسی میں پریس کانفرنس کی ہیں۔ کچھ اسی طرح کے مظاہرہ کانگریس کی مقامی یونٹوں نے بھی کئے ہیں۔کانگریس نے رافیل سودے کو ’صدی کی بدعنوانی‘ قرار دیا ہے اور کہا کہ مسٹر مودی کی حکومت نے فرانس سے 1670کروڑ روپے فی طیارہ قیمت پر یہ سودا کیا ہے جبکہ اس سے پہلے ترقی پسند اتحاد حکومت کے دور اقتدار کے دوران 2012میں یہ سودا 570کروڑ روپے فی طیارہ طے کیا گیا تھا۔ کانگریس کا دعوی ہے کہ نئے رافیل سودے کا اہم مقصد وزیراعظم کے قریبی کارپوریٹ دوستوں کو فائدہ پہنچانا ہے۔اسی ہفتے ایک پریس کانفرنس میں مسٹر گاندھی نے کہاکہ ’سچائی یہ ہے کہ وزیراعظم نے یہ سودا انل امبانی کو فائدہ پہنچانے کے لئے کیا ہے۔سیاسی ماہرین کا خیال ہے کہ چار ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کانگریس کا مستقبل طے کرنے کے لئے بہت اہم ہیں اور اسی منظرنامہ میں نیا رافیل سودا ایک اہم معاملہ ہوسکتا ہے۔کانگریسی لیڈروں کا کہنا ہے کہ مرکز میں حکمراں این ڈی اے رافیل سودے پر خودکو بچانے کی کوشش میں ہے اور آئندہ دنوں میں پارٹی اس معاملہ پر حکومت پر حملے تیز کرے گی۔پارٹی کے لیڈروں کا کہنا ہے کہ رافیل سودے کی جانچ کے لئے مشترکہ پارلیمانی کمیٹی کے قیام سے متعلق ان کی مانگ پوری ہونے تک وہ حکومت پر حملہ جاری رکھیں گے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close