ہندوستان

رام بن واقعہ نے جموں کشمیر پولس کی فرقہ وارانہ ذہنیت کو بے نقاب کیا ہے: انجینئررشید کا سنگین الزام

کپواڑہ: عوامی اتحاد پارٹی (اے آئی پی) کے سربراہ اور ممبر اسمبلی لنگیٹ (شمالی کشمیر) انجینئر رشید نے رام بن میں پولس اور دیگر سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی موجودگی میں بقول اُن کے جنونی غنڈوں کی جانب سے ،مبینہ طور پر مویشی لے جارہے ایک ٹرک کو نذرآتش کردیے جانے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

انہوں نے ریاستی انتظامیہ پر فرقہ پرست اور کشمیر مخالف طاقتوں کو کچھ بھی کرنے کی کھلی چھوٹ دینے کا الزام لگایا ہے۔ جمعہ کے روز یہاں مختلف طبقہ ہائے فکر سے وابستہ لوگوں سے تبادلہ خیال کے دوران انجینئر رشید نے کہا کہ رام بن میں پیش آمدہ شرمناک واقعہ نے جموں پولس کے فرقہ وارانہ اور جانبدار وطیرہ کو بری طرح بے نقاب کردیا ہے۔

انہوں نے کہا’اس سے زیادہ شرمناک بات اور کیا ہوسکتی ہے کہ ہندوبنیاد پرست غنڈوں نے پولس اور دیگرسکیورٹی فورسز کی ایک بھاری جمعیت کی نظروں کے سامنے ٹرک کو غوا کرنے کے بعد نذرِ آتش کردیا۔ اگر پولس جانبداری سے کام نہیں لے رہی ہوتی تو پھر اس ٹرک کو تحویل میں لیکرمعاملے کی تحقیقات کی جاتی اور قصوروار پائے جانے کی صورت میں متعلقین کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جاسکتی تھی، لیکن پولس نے ایسا نہ کرکے دراصل بنیاد پرست غنڈوں کو قانون ہاتھ میں لینے کی کھلی چھوٹ دی۔

پولس نے اس واقعہ میں خاموش تماشائی بن کر اپنے ان ناقدین کو ایک بار پھرصحیح ثابت کیا ہے کہ جو اس پرکشمیریوں کو معمولی باتوں پر بھی تحمل سے کام لئے بغیراندھا،معذور ، ذلیل یہاں تک قتل کرنے کا الزام لگاتے ہیں۔اس کہانی کا شرمناک ترین پہلو یہ ہے کہ مجرموں کو گرفتار کرنے کی بجائے کسی کا نام لئے بغیر ایف آئی آر درج کی گئی ہے اور خود متاثرین کو ہی گرفتار کیا گیا ہے۔ حالانکہ خود پولس کو سب کچھ معلوم ہے کہ ملوثین کون ہیں اور انہوں نے کس طرح قانون کے ساتھ کھیلا ہے‘۔

انجینئررشید نے مزید کہا کہ گورنرانتظامیہ کولازماََ اس بات کا جواب دینا چاہئے کہ لال سنگھ کو ابھی تک گرفتار کیوں نہیں کیا گیا ہے اور جموں میں سنگھ پریوار کے غنڈوں کو مسلمانوں پر حملے کرنے کیلئے کھلا کیوں چھوڑ دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جہاں جموں میں کچھ طاقتوں کو اقلیتی فرقہ کے ساتھ کچھ بھی کرنے کی آزادی دی جا چکی ہیں وہیں کشمیر میں فوج،پولس اور دیگر سکیورٹی فورسز خود کو قانون سے بالا سمجھتے ہوئے اکثریتی فرقہ کے حقوق کو تاراج کر رہی ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close