کھیل

روہت نے توڑا سچن کا ریکارڈ

نئی دہلی، : ون ڈے کرکٹ میں سب سے زیادہ اسکور کا ریکارڈ اپنے نام رکھنے والے ہندستان کے روہت شرما نے ون ڈے میں 150 سے زائد کے اسکور بنانے کے معاملے میں ہم وطن سچن تندولکر کا ریکارڈ توڑ دیا ہے۔
سلامی بلے باز روہت شرما نے کہا ہے کہ وہ مکمل طور پر فٹ اور بھر پور فارم میں ہیں اور ویسٹ انڈیز کے خلاف دوسرے ایک روزہ بین الاقوامی میچ میں بھی شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنی ٹیم کی فتح میں اہم کردار ادا کریں گے۔ اپنے ایک بیان میں روہت شرما نے کہا کہ وہ ویسٹ انڈیز کے خلاف ون ڈے سیریز کے ابتدائی میچ میں اپنی ٹیم کی کامیابی پر بہت خوش ہیں۔
انہوں نے کہا کہ ٹیسٹ سیریز میں کلین سوئپ اور پھر ون ڈے سیریز کے ابتدائی میچ میں کامیابی کے بعد ٹیم کا حوصلہ بلند ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ویسٹ انڈیز ٹیم نے پہلے ون ڈے میچ میں اچھا کھیل پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ سیریز میں کامیابی کیلئے بقیہ میچوں میں بھی پوری قوت کے ساتھ میدان میں اتریں گے۔انہوں نے کہا کہ ٹیم ون ڈے سیریز کا پہلا میچ جیتنے کے باوجود ویسٹ انڈیز کی ٹیم کو آسان حریف تسلیم کرنے کی غلطی نہیں کرےگی۔
روہت نے گوہاٹی میں ویسٹ انڈیز کے خلاف پہلے ون ڈے میں ناٹ آؤٹ 152 رنز کی اننگز کھیل کر یہ ریکارڈ بنایا۔ اس سے پہلے سچن اور آسٹریلیا کے ڈیوڈ وارنر نے پانچ پانچ بار ون ڈے میں 150 سے زائد کے اسکور بنائے تھے۔ روہت اب ان سے ایک قدم آگے نکل گئے ہیں۔
ہندستانی اوپنر روہت کے نام ون ڈے کرکٹ میں تین ڈبل سنچریوں کا عالمی ریکارڈ ہے۔ انہوں نے ون ڈے میں 150 سے زائد کے چھ اسکور بنائے ہیں جن میں 264، 209، ناٹ آؤٹ 208، ناٹ آؤٹ 171، ناٹ آؤٹ 152 اور 150 کے اسکور پر مشتمل ہے۔
روہت نے اپنی اس اننگز میں آٹھ چھکے لگائے اور سب سے زیادہ چھکے اڑانے کے بارے میں سابق ہندستانی کپتان سورو گنگولی کو پیچھے چھوڑ دیا۔ گنگولی کے نام 311 میچوں میں 190 چھکے ہیں جبکہ روہت کے 189 میچوں میں 194 چھکے ہو گئے ہیں۔ وہ سب سے زیادہ چھکے اڑانے کے معاملے میں آٹھویں نمبر پر پہنچ گئے ہیں۔ ہندستان میں ان سے آگے سچن تندولکر (195) اور مہندر سنگھ دھونی (217) ہیں۔
یہ چوتھا موقع ہے جب روہت نے ایک ون ڈے میں آٹھ یا اس سے زیادہ چھکے مارے ہیں۔ صرف ویسٹ انڈیز کے کرس گیل ہی روہت سے زیادہ بار یہ کارنامہ کر پائے ہیں ۔ دیگر ہندوستانی بلے بازوں میں مہندر سنگھ دھونی اور یوسف پٹھان نے ایک ایک بار یہ کارنامہ کیا ہے۔ہندستانی اوپنر کی یہ 20 ویں ون ڈے سنچری تھی۔ انہوں نے 20 ون ڈے سنچریوں تک پہنچنے کے لیے 183 اننگز کھیلی ہیں اور اس معاملے میں وہ چوتھے سب سے تیز بلے باز ہیں۔ سچن نے 197 اننگز میں 20 سنچری پوری کی ہیں جبکہ جنوبی افریقہ کے اے بی ڈی ولیرس نے 175 اننگز، ہندستانی کپتان وراٹ کوہلی نے 133 اننگز اور جنوبی افریقہ کے ہاشم آملہ نے 108 اننگز میں 20 سنچری پور کیں ۔
روہت اور وراٹ کے درمیان 246 رن کی شراکت ان کے درمیان پانچویں ڈبل سنچری شراکت ہے۔ کسی دوسرے جوڑی کے نام تین سے زیادہ ڈبل سنچری شراکت نہیں ہے۔ یہ شراکت ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے ہندستان کی ون ڈے میں سب سے بڑی شراکت ہے۔ انہوں نے وراٹ اور گوتم گمبھیر کے درمیان 2009 میں ایڈن گارڈن میں سری لنکا کے خلاف 224 رنز کی شراکت کا ریکارڈ توڑا۔
کوہلی نے ویسٹ انڈیز کے خلاف پہلے ون ڈے میں کیریئر کی 36ویں سنچری داغی ہے ، وہ سچن تندولکر کے بعد زیادہ سنچریاں بنانےوالے دوسرے کھلاڑی ہیں، تندولکر نے 49 سنچریاں بنا رکھی ہیں۔کوہلی بطور کپتان زیادہ سنچریاں بنانے والے دنیا کے دوسرے کھلاڑی بن گئے ہیں ، بحیثیت کپتان زیادہ سنچریاں بنانےکا عالمی اعزاز سابق آسٹریلوی کرکٹر رکی پونٹنگ کو حاصل ہے جنہوں نے 220اننگز میں 22 سنچریاں بنائی تھیں۔جنوبی افریقہ کے اے بی ڈی ویلیئرز نے98اننگز میں 13 سنچریاں بنا رکھی تھیں جبکہ کوہلی کی بطور قائد سنچریوں کی تعداد 50اننگز کے بعد14 ہو گئی ہے،سابق کپتان سوربھ گنگولی نے143اننگز میں بطور کپتان 11سنچریاں اسکور کی تھیں جب کہ سابق سری لنکاکپتان سنت جے سوریہ نے بطور قائد118اننگز کھیل کر10سنچریاں ماریں تھیں ۔
کوہلی نے 204اننگز میں اپنی 36سنچریاں مکمل کی ہیں جبکہ سچن تندولکر نے نومبر 2003 میں 311 اننگز کھیل کر یہ کارنامہ سر انجام دیا تھا ۔کوہلی ویسٹ انڈیز کے خلاف زیادہ سنچریاں بنانےوالے ہندستانی کھلاڑی بھی بن گئے۔کوہلی نے کیلنڈر ایئر میں مسلسل تیسری بار 2 ہزار پلس انٹرنیشنل رنز بنانے والے ملک کے دوسرے اور دنیا کے چوتھے بلے باز ہونے کا اعزاز بھی پا لیا۔اس سے قبل تند ولکر، میتھیوہیڈن اور جوروٹ بھی یہ کارنامہ انجام دے چکے ہیں۔اس کے علاوہ وہ کیلنڈر ایئر میں زیادہ مرتبہ 2 ہزار پلس انٹرنیشنل رنز بنا کر تند ولکر اور جے وردھنے کے ہم پلہ ہو گئے، تینوں کھلاڑیوں نے5بار یہ اعزاز حاصل کیا۔کمار سنگاکارا 6 مرتبہ سنگ میل عبور کر کے سرفہرست ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close