بہارپٹنہسیاست

ریلوے گھوٹالہ: رابڑی ،تیجسوی کو ضمانت،لالو کے خلاف پیشی وارنٹ

پٹنہ :دہلی کی پٹیالہ ہاؤس عدالت نے انڈین ریلوے کیٹرنگ ایند ٹورزم نگم (آئی آر سی ٹی سی) کے ہوٹل سے متعلق معاملے کی ملزمہ بہار کی سابق وزیراعلی رابڑی دیوی اور ان کے بیٹے تیجسوی یادو کی ضمامت جمعہ کو منظور ہوگئی۔ اسی معاملے میں ملزم راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے سربراہ اور سابق وزیراعلی لالو پرساد یادو کےلئے پیشی وارنٹ جاری کرتے ہوئے عدالت نے انہیں 6 اکتوبر کو حاضر ہونے کا حکم دیا ہے۔خصوصی جج ارویند کمار کی عدالت میں جمعہ کو اس معاملے میں ملزمہ محترمہ رابڑی دیوی اور تیجسوی یادو حاضر ہوئے۔اس معاملے میں کل 14 ملزمیں ہیں۔ سبھی ملزموں کو ایک۔ایک لاکھ روپے کے نجی مچلکوں پر ضمانت دی گئی۔یہ معاملہ آئی آر سی ٹی سی کے دو ہوٹلوں کو دیکھ بھال کے لئے پٹنہ کی ایک کمپنی کو جزوی طور پر دینے سے متعلق ایک معاہدہ سے متعلق ہے۔مسٹر لالو پرساد یادو کو بھی اسی معاملے میں جمعہ کو عدالت میں پیش ہونا تھا لیکن وہ چارہ گھوٹالہ معاملے میں رانچی جیل میں بند ہیں اور انہیں پیشی سے استثنا حاصل ہے۔ عدالت نے مسٹر لالو پرساد یادو کو 6 اکتوبر کو اس معاملے میں پیش ہونے کے لئے پیشی وارنٹ جاری کیا ہے۔ مرکزی جانچ ایجنسی (سی بی آئی) نے مسٹر لالو پرساد کے خلاف پیشی وارنٹ جاری کرنے کی درخواست کی تھی۔اس کے بعد عدالت نےاسے جاری کیا ہے۔ اس معاملے میں مسٹر لالو پرساد یادو اور ان کے خاندان کے علاوہ سابق مرکزی وزیر پریم چند گپتا، ان کی اہلیہ سرلا گپتا، اس وقت کے آئی آر سی ٹی سی کے ڈائرکٹر جنرل پی کے گوئل، ریلوے بورڈ کے اڈیشنل ممبر بی کے اگروال، اس وقت کے آئی آر سی ٹی سی کے ڈائرکٹر راکیش سکسینہ بھی ملزم ہیں۔ یہ معاملہ 2004 سے 2009 کے وسط کا ہے۔ جس میں آر سی ٹی سی ہوٹلوں کی تعمیر میں بے ضابطگی اور نجی کمپنیوں سے رشوت لینے کا الزام ہے۔ سی بی آئی نے چارج شیٹ میں کہا ہےکہ مسٹر لالو پرساد یادو کے خاندان کے خلاف اس معاملے میں کافی ثبوت ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close