سیاستہندوستان

سادھوی نرنجن کے بیان پر حکومت گھر گئی


لوک سبھا اس بابت پوچھے گئے سوال کے جواب میں فوڈ پروسیسنگ ریاستمنتری نے کہا کہ حکومت کی ایسی کوئی منصوبہ نہیں ہے، اب اپوزیشن بنائے گا مسئلہ

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کے بہت سے مرکزی وزرا اور بی جے پی کے عہدیدار مسلسل کہتے رہے ہیں کہ ان کی حکومت 2022 تک کسانوں کی آمدنی کو دوگنی کر دے گی۔ حکومت اس کے لئے مسلسل کام کر رہی ہے۔ اس پر سب سے بڑا قدم کسانوں کے فصلوں کی کم از کم امدادی قیمت ڈیڑھ گنا کرنا ہے، لیکن لوک سبھا کی کارروائی کے وقت ممبران پارلیمنٹ کے سوالات کے جواب میں مرکزی فوڈ پروسیسنگ کی وزیر مملکت سادھوی نرنجن جیوتی نے جو کہا وہ اس کے برعکسہے۔ انہوں نے اس بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں کہا کہ حکومت کا ایسا کوئی منصوبہ نہیں ہے۔
ان سے دو ممبران پارلیمنٹ نے سوال پوچھا تھا کہ کیا حکومت کے پاس کسانوں کی آمدنی کو دوگنا کرنے کی منصوبہ بندی ہے؟ اس کے جواب میں وزیر نے کہا’کوئی منصوبہ نہیں ہے، جبکہ اس کے دوسرے دن یہ جواب لوک سبھا کی ویب سائٹ پر تبدیل کر دیا گیا ۔ وہاں وزیر کے جواب کی پہلی لائن نہیں ہے، جس میں وزیر نے کہا تھا کہ کوئی منصوبہ نہیں ہے۔
اس کو لے کر اپوزیشن ممبران پارلیمنٹ نے مرکزی حکومت کو گھیرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ اس بارے میں کانگریس کے ایک رہنما کا کہنا ہے کہ ہو سکتا ہے جب اس معاملے پر پارلیمنٹ میں ہنگامہ ہو تو مرکزی حکومت اسی طرح ٹائپنگ کی غلطی کہہ کر اس میں کچھ بہتری کرے، جس طرح رافیلمعاملہ میں سپریم کورٹ میں بند لفافے میں لکھ کر دیا تھا کہ سی اے جی نے اس کے بارے میں رپورٹ پی اے سی کو دے دی ہے اور اس نے دیکھ لیا ہے۔ حکومت کے اس رپورٹ کو سپریم کورٹ نے ریکارڈ پر لے لیا ہے، جو اجاگر ہوا تو پی اے سی کے چیئرمین ملک ارجن کھڑگے نے کہا کہ ان کے پاس یہ رپورٹ آئی ہی نہیں، کیونکہ ابھی تک کیگ نے اس کی رپورٹ ہی نہیں تیار کی ہے ۔ اس کو لے کر پی اے سی صدر نے کیگ سربراہ کو نوٹس دے دیا۔ اس پر مرکزی حکومت نے ٹائپنگ میں غلطی کہتے ہوئے سپریم کورٹ میں غلطی کی اصلاح کی عرضی دی، لیکن رافیل سودا معاملے کو عدالت میں لے جانے والے سینئر وکیل پرشانت بھوشن، سابق مرکزی وزیر ارون شوری نے اس معاملے پر مرکزی حکومت کی طرف سے جھوٹا حلف نامہ دائر کر عدالت کو گمراہ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے عرضی لگا دی ہے۔ اس پر سپریم کورٹ میں 2 جنوری کوسماعت ہوسکتی ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close