جمو ں وکشمیر

سری نگر: وادی کشمیر میں ایک دن کی معطلی کے بعد ریل خدمات بحال

وادی کشمیر میں ریل خدمات ایک دن کی معطلی کے بعد منگل کی صبح بحال کردی گئیں۔ یہ خدمات پیر کے روز کشمیری مزاحتمی قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کی طرف سے حالیہ شہری ہلاکتوں کے خلاف دی گئی ہڑتال کی کال کے پیش نظر معطل کی گئی تھیں۔ یہ وادی میں پی ڈی پی بی جے پی مخلوط حکومت گرنے اور گورنر راج نافذ ہونے کے بعد تیسری مرتبہ ہے کہ جب ریل خدمات کو سیکورٹی وجوہات کی بناء پر معطل کیا گیا تھا۔

ریلوے کے ایک سینئر عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا ’ہم نے بارہمولہ اور بانہال کے درمیان ریل خدمات کو منگل کی صبح بحال کردیا۔ پیر کو ریل خدمات ریاستی پولیس کے مشورے پر معطل رکھی گئی تھیں‘۔ انہوں نے بتایا کہ ریل خدمات کی معطلی کا مقصد ریلوے املاک اور مسافروں کو نقصان سے بچانا ہوتا ہے اور معطلی کا فیصلہ پولیس انتظامیہ کے مشورے پر لیا جاتا ہے۔ یو این آئی کے پاس موجود اعداد وشمار کے مطابق وادی میں رواں برس کے پانچ مہینوں کے دوران ریل خدمات کو کم از کم 18 مرتبہ کلی یا جزوی طور پر معطل رکھا گیا۔

سال 2017 میں ریل خدمات کو قریب 50 مرتبہ کلی یا جزوی طور پر معطل کیا گیا۔ ریلوے کے ایک اور عہدیدار نے بتایا کہ ماضی میں بھی احتجاجی مظاہروں کے دوران ریلوے املاک کو بڑے پیمانے کا نقصان پہنچایا گیا۔ وادی کشمیر میں سال 2016 میں حزب المجاہدین کے معروف کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت کے بعد احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر ریل خدمات کو قریب چھ مہینوں تک معطل رکھا گیا تھا۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close