بہارپٹنہ

سماج میں محبت ، امن اور ہم آہنگی قائم رہے گی ، تو ترقی کا فائدہ ملے گا:وزیر اعلیٰ

پٹنہ:وزیر اعلیٰ جناب نتیش کمار آج کیمور ضلع کے درگا وتی بلاک واقع انٹر سطحی ہائی اسکول دھنیچا احاطہ میں منعقد تقریب میں 255کروڑ 64لاکھ روپے کی لاگت والے پانی وسائل محکمہ کے تحت 2منصوبے کے کام کی شروعات اور 4منصوبووں کا سنگ بیناد ریمورٹ کنٹرول کے ذریعہ نیم پلیٹ کی نقاب کشائی کر کے کیا ۔ اس موقع پر اسکول احاطہ میں لگی نمائش کا ریبن کاٹ کر افتتاح کر نے کے بعد وزیر اعلیٰ نے اس کا معائنہ کیا۔ معائنہ کے دوران وزیر اعلیٰ ضلع رجسٹر اور مشورہ سینٹر ، لیبر وسائل محکمہ ، ٹرانسپورٹ محکمہ ، ضلع صنعت سینٹر ، ضلع رورل ڈیولپمنٹ انجینئرنگ ، ضلع ہیلتھ کمیٹی اور بہار دیہی جیویکوپارجن پروتساہن کمیٹی کے تحت چلائے جارہے عوامی بہبود منصوبوں کی موجودہ صورت حال سے روشناس ہوئے ۔ اس دوران ہنر مندنوجوان پروگرام کے تحت (لرننگ فسیلٹیٹر کے عہدہ کے لیے) تقرر نامہ ، ٹریننگ سرٹیفکیٹ ، اقتصادی حل نوجوانوں کو بل کے تحت اسٹوڈنٹ کریڈٹ کارڈ منصوبہ ، بہار شتابدی غیر منظم کام حلقہ کامگار اور دستکار ، سماجی تحفظ منصوبہ ، وزیراعلیٰ گرام ٹرانسپورٹ منصوبہ ، وزیر اعلیٰ رہائش مقام خرید مدد منصوبہ ، وزیر اعلیٰ دیہی رہائش منصوبہ ، وزیر اعلیٰ کنیا اتھان منصوبہ اور مسلسل روزگارمنصوبہ کے مستفیضوں کے درمیان وزیر اعلیٰ نے چیک اور سرٹیفکیٹ کی تقسیم کی ۔اسٹیج پر آبی وسائل محکمہ کے پرنسپل سیکریٹری جناب تر پرانی شرن نے وزیر اعلیٰ کو گلدستہ پیش کر کے ان کا خیر مقدم کیا ۔
عوامی جلسہ کو خطاب کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ آج جن دو منصوبوں کے کام کی شروعات اور 4منصوبوں کا سنگ بنیاد رکھا گیا ہے اس سے مجھے بے حد خوشی ہوئی ہے اور میں اس کے لیے آبی وسائل محکمہ کو مبارک باد دیتا ہوں ۔ انہوں نے کہا کہ آج اس پروگرام کے توسط سے کرم ناشا مین نہر کی توسیع کے کام کی شروعا ہوئی ہے ، جسے جون 2020 تک مکمل کر نے کا نشانہ آبی وسائل محکمہ نے متعین کیا ہے۔ اس لیے مجھے مکمل یقین اور امید ہے کہ کام وقت پر مکمل ہو جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ آبی وسائل محکمہ کے ذریعہ اس پروگرام اور سنگ بنیاد پروگرام میں مجھے مدعو کیا کیا ہے اس بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے منصوبوں کو نشانہ کے مطابق متعینہ وقت کے اندر کام ضرور پورا ہو نا چاہئے ۔ ہم ہمیشہ کہتے رہے ہیں کہ اگر وقت پر کام پورا نہیں ہو تا ہے تو ہمیں پروگرام میں مدعو نہیں کریں ۔انہوں نے کہا کہ انصاف کے ساتھ ترقی کے تئیں ہم پر عزم ہیں اور شروع سے ہی اس بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے ہم نے تعلیم، صحت ، سڑک کی تعمیر ، سماج بہبود ، بجلی سمیت ہر شعبہ میں ترقی کا کام کررہے ہیں ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پہلے بہار میں سڑکوں کی جو حالت تھی اسے آپ تمام لوگ جانتے ہیں ۔ اتر پردیش اور جھارکھنڈ میں تو لوگ بڑے آرام سے چلتے تھے لیکن جیسے ہی ان کی گاڑی کھڑکھڑا تی تھی تو وہ سمجّھ جاتے تھے کہ ان کی گاڑی بہار میں داخل ہو چکی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پہلے بہار کے دور دراز علاقوں سے پٹنہ پہنچنے میں 6 گھنٹے کا نشانہ ہم نے متعین کیا تھا ، جسے حاصل کر نے کے بعد اب 5گھنٹہ کا نشانہ متعین کیا گیا ہے ۔ اس کے لیے نئی سڑکوں کی تعمیر ، پرانی سڑکوں کی توسیع ، پل پولیا کی تعمیر اور جہاں بھی سڑک پار کر نے کی ضروت ہے وہاں انڈر پاس اور ایلیویٹیڈ سڑکوں کی تعمیر کرائی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پٹنہ سے بکسر کے درمیان تعمیر ہو نے والے 4لین اور پل کا معائنہ کر تے ہوئے آج ہم کارکٹ گڑھ پہنچے جہاں جاکر پانی کے جھیل کو دیکھا ۔ اس سے قبل نوادہ ضلع کے مشہور جھیل (ککولت ) کو جاکر دیکھنے کے بعد اسے سیاحت کی شکل میں فروغ دینے کے لیے کئی چیزیں ہم نے طے کر دی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کر کٹ گڑھ بہت ہی خوبصورت جگہ ہے اور وہاں جاکر خوبصورت منظر دیکھنے کے بعد ہم نے جنگلات اور ماحولیات محکمہ کو اسے بھی سیاحت کی شکل میں فروغ دینے کی ہدایت دی ہے ۔ اس کے ساتھ ہی کر کٹ گڑھ کے بغل میں آدی واسی سماج کا جو گائوں ہے وہاں لوگوں کو بھی اس میں (ایکو ٹوریزم ) شامل کر نے کی بات کہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم تو سمجھتے تھے کہ صرف بالمیکی نگر میں ہی ٹائیگر پروجیکٹ ہے ، لیکن یہاں آکر پتہ چلا کہ یہاں بھی دوباگھ ہیں ۔ یہ بہت اچھی بات ہے ۔ انہوں نے کہا کہ روہتاس اور کیمور کی تاریخی اور سیاحتی نقطہ نظر سے کافی اہمیت ہے ۔ روہتاس گڑھ کے پہاڑ پر آف گریڈ کے ذریعہ مہیاکرائی گئی بجلی کو جاکر ہم نے دیکھا ہے ۔ کیمور میں سیاحت کے کافی امکانات ہیں ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ دو ندیوں کا یہاں ملنے کا مقام ہے جسے دیکھنے کے لیے اس ماہ کے آخر میں یا فروری کے پہلے ہفتہ میں ہم دوبارہ یہاں آئیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ بہار کے 22ضلع سیلاب سے متاثر ہو نے کے سبب زیادہ تر محکمہ جاتی افسران اسی میں لگے رہتے ہیں جس کے سبب آب پاشی کے پروجیکٹ زیر التوی رہتے تھے اور 100کروڑ کے پروجیکٹ 1000کروڑ تک پہنچ جاتے تھے ۔ درگاوتی پروجیکٹ کوپورا کر نے میں 800کروڑ روپے خرچ کر نا پڑا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اب آب پاشی محکمہ کو دوحصوں میں تقسیم کر کے سیلاب پر قابو پانے والا اور آبپاشی کا کام الگ الگ سونپ دیا ہے جس کا نتیجہ ہے کہ برسوں سے زیر التویٰ پڑے آبپاشی پروجیکٹ مکمل ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ معیاری سڑکوں کی تعمیر کے بعد سڑک حادثے بھی بڑھے ہیں جس کودیکھتے ہوئے فٹ اوور برج اور انڈر پاس بنا یاجا رہا ہے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پورے بہار کے ہر خواہشمند کنبہ تک 25اکتوبر 2018 تک بجلی پہنچانے کے بعد اس سال کے 31دسمبر تک ایگریکلچر فیڈر کے توسط سے آبپاشی کے لیے ہر خواہشمندکسانوں کو بجلی کا کنکشن مہیا کرانے کے ساتھ ساتھ خستہ بجلی کے تاروں کو بدلنے کا نشانہ متعین کیا گیا ہے ۔ خستہ تاروں کو بدلنے کے لیے ریاستی حکومت نے منصوبہ کو منظوری دے کر پیسے کا الاٹمنٹ بھی کر دیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لوگ ڈھبری اور لالٹین سے ہی کام چلاتے تھے جس سے رات میں بچوں کوپڑھنے میںپریشانی ہو تی تھی ۔ لیکن اب بہار کے ہر گھر میں بجلی پہنچے سے یہ پریشانی ختم ہو گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کام کر نے میں ہی ہماری دلچسپی ہے اور کام کے سہارے ہی ہم لوگ عوام کی خدمت کر تے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اس علاقہ کا تاریخی کردار رہا ہے اور ہم اس علاقہ کو زراعت کے ساتھ ہی ماحولیات کے لحاظ سے بھی آگے بڑھائیں گے ۔
وزیر اعلیٰ نے کہا کہ انٹر کے بعد آگے کی تعلیم حاصل کر نے و الے طلبا کی تعداد بہار میں کافی کم تھی جس کے سبب بہار کا گراس انرولمنٹ ریشیو 13.9 جبکہ ملک کا اوسط 24فیصد ہے ۔ ہم نے گراس انرولمنٹ ریشیو کو قومی سطح سے بھی آگے 30 فیصد تک لے جانے کا نشانہ طے کیا ہے ۔ اس کے لیے ہم نے سات عزام منصوبہ کی شروعات کر کے اسٹو ڈنٹ کریڈٹ کارڈ کے توسط سے انٹر سے آگے کی تعلیم حاصل کر نے والے طلبا کے لیے 4لاکھ روپے تک ایجو کیشن لون کا التزام کیا ہے ۔ پروگرام میں شامل لوگوں سے اپیل کر تے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ آپ تمام لوگ اپنے بچوں کو پڑھائیے ۔اس کے لیے وزیر اعلیٰ نے لوگوں کو سورج کے سامنے ہاتھ اٹھاکر عہد وا یا ۔ وزیر اعلیٰ نے وہاں موجود لوگوں کو نئے سال کی مبارک باد بھی دی ۔
پروگرام کے آخر میں ڈی ایم اور آبپاشی کے انجینئر چیف جناب رام پکار سنگھ نے وزیر اعلیٰ کو مومنٹو دیا ۔
پروگرام کو نائب وزیر اعلیٰ جناب سشل کمار مودی ، آبی وسائل کے وزیر جناب راجیورنجن عرف للن سنگھ ، سڑک تعمیرات کے وزیر جناب نند کشور یادو،ٹرانسپورٹ کے وزیر جناب سنتوش نرالا اور ممبر اسمبلی جناب اشوک کمار سنگھ نے بھی خطاب کیا ۔
اس موقع پر ممبر اسمبلی جناب نرنجن رام ، ممبر اسمبلی محترمہ رنکی رانی پانڈئے ، ایم ایل سی جناب سنتوش کمار سنگھ ، سابق ممبر پالیمنٹ جناب مہا بلی سنگھ کشواہا ، جے ڈی یو کے ضلع صدر جناب پرمود کمار سنگھ ، بی جے پی ضلع صدر جناب جتندر پانڈے ، ایل جے پی ضلع صدر جناب رامیش کشواہا ، چیف سیکریٹری جناب دیپک کمار، وزیر اعلیٰ کے پرنسپل سیکریٹر ی جناب چنچل کمار ، سڑک تعمیرات محکمہ کے اڈشنل چیف سیکریٹری جناب امرت لال مینا ، ڈی ایم جناب نول کشور چودھری ، ڈی آئی جی بچو سنگھ مینا ، آبپاشی کے انجینئر چیف جناب رام کپور سنگھ سمیت دیگر لوگ، سینئر افسران ، آبی محکمہ کے انجینئر اور بڑی تعداد میں لوگ موجود تھے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close