بہارمتھلانچل

سمستی پور:ایل آئی سی دفتر میں 52لاکھ روپے کی لوٹ

وین میں روپے رکھے جانے کے دوران بدمعاشوں نے گارڈ پر برسائی گولیاں،موقع پر ہی موت،پولس کی تفتیش شروع

سمستی پور:بے خوف ہو چکے جرائم پیشوں نے آج شہر کے تاج پور روڈ میں ایل آئی سی کے کیش وان کے گارڈ کو گولی مار کر 52,74,729لوٹ لی۔ ملی جانکاری کے مطابق آج دوپہر تاج پور روڈ میں کیش وان ایل آئی سی دفتر پہنچا اور جیسے ہی وان میں کیش رکھا جا رہا تھا تبھی چھ کی تعداد میں ہتھیار بند جرائم پیشوں نے دھاوا بول دیا اور روپئے لوٹنے لگا گارڈ کے ذریعہ مزاحمت کرنے پر جرائم پیشوں نے گارڈ کو گولی مار دی اور پھر روپئے لوٹ کر گولیاں چلاتے ہوئے فرار ہو گئے ۔ بتایاجاتا ہے کہ جرائم پیشہ افراد واقعہ کو انجام دینے کے بعد تاج پور کی طرف فرار ہو گئے۔ بتایا جاتا ہے کہ گولی چلنے کی آواز آنے کے بعد تاج پور روڈ میں افرا تفری مچ گیا اور دکان بند ہونے لگا ۔جو جہاں تھا وہیں تھم گیا ۔ جرائم پیشہ کے فرار ہونے کے بعد جمع ہوئے لوگوں نے گارڈ کو علاج کے لئے سمستی پور صدر اسپتال لے گئے جہاںڈاکٹر نے اسے مردہ قرار دے دیا۔ گارڈ کی پہنچان ودیا پتی نگر تھانہ حلقہ کے گڑ سیسئی گائوں کا بندھو رائے (۴۰) بتایا گیا ہے۔ دوسری طرف واقعہ کی اطلاع ملتے ہی ٹائون ،مفصل تھانہ کی پولیس کے علاوہ پولیس کے اعلی افسران موقع پر پہنچے اور معامل؛ے کی چھان بین کی ۔عینی شاہدین کا بتانا ہے کہ گارڈ روپئے لیکر وان میں رکھنے جا رہا تھا تبھی پہلے سے گھات لگائے بیٹھے جرائم پیشوں نے اچانک گولیاں چلانی شروع کر دہشت پیدا کر دی گولی کی آواز سنکر لوگ ادھر ۔ادھر بھاگنے لگے اسی بیچ جرائم پیشوں نے روپئے کا بیگ لوٹ لیا اس دوران گارڈ بندھو رائے نے مزاحمت کی تو اسے گولی مار دی اور پھر آرام سے سبھی فرار ہو گئے ۔ بتادیں کہ سمستی پور میں ان دنوں جرائم پیشہ افراد پوری طرح سے بے لگام ہو چکے ہیں آئے دن قتل ،لوٹ جیسے سنگین واقعات پیش آرہے ہیں لیکن پولیس انتظامیہ جرائم کو قابو میں کرنے میں پوری طرح سے ناکام ثابت ہو رہی ہے۔ ابھی چند مہینے قبل ہی شہر کے ہی گولہ روڈ واقع یوکو بینک میں اسلحہ بردار جرائم پیشوں نے دھاوا بول کو 54لاکھ روپیہ لوٹ لی تھی۔ سمستی پور میں بینک لوٹ کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے اس سے قبل بھی کئی بینک لوٹ کے معاملے پیش آچکے ہیں ۔ سوال یہ اٹھتا ہے کہ آخر بھیڑ بھاڑ والے علاقے میں آخر جرائم پیشہ افراد کیسے اتنے بڑے واقعہ کو انجام دیتے ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close