بہارپٹنہ

سنی وقف بورڈ کی کاوشیں قابل تعریف : وزیر تعلیم

وقف بورڈ کی جانب سے سائنس اور میتھ اولمپیاڈ کے کامیاب طلبا ء و طالبات نوازے گئے

پٹنہ:ریاست کے وزیر تعلیم کرشن نندن پرساد ورمانے کہا ہے کہ سماج کی ترقی کے لئے تعلیمی ترقی انتہائی ضروری ہے۔ موجودہ حالات میں تکنیکی تعلیم پر توجہ زیادہ ضروری ہے۔سائنس اور میتھ کے شعبے میں طالب علموں کو زیادہ دلچسپی دکھانی چاہئے تاکہ ہم تکنیکی شعبے میں زیادہ سے زیادہ آگے آسکیں۔ وز یر تعلیم جناب ورما یوم تعلیم کے موقع پر بہار اسٹیٹ سنی وقف بورڈ کی جانب سے منعقد سائنس اور میتھ اولمپیاڈ کے کامیاب طلباء اور طالبات کی تقسیم انعامات تقریب سے مہمان خصوصی کے طور پر خطاب کر رہے تھے۔ تقریب کا انعقاد انجمن اسلامیہ ہال میں کیا گیا تھا۔ تقریب کی صدارت چیئر مین الحاج محمد ارشاد اللہ نے کی ۔ تقریب میں خانقاہ معظم بہار شریف کے سجادہ نشیں سید شاہ سیف الدین فردوسی ، پروفیسر ڈاکٹر مولانا شکیل احمد قاسمی، بہار قانون ساز کونسل میں سابق اپوزیشن لیڈر پروفیسر غلام غوث، افضل عباس، شکیل کاکوی،شمائل احمد ، وقف بورڈ کے سی ای او امتیاز احمد کریمی سمیت دیگر معزز افراد شریک ہوئے۔ تقریب میں سینکڑوں کی تعداد میں اولمپیاڈ میں شریک ہونے والے طلباء وطالبات کے گارجین حضرات بھی موجود تھے۔
وزیر تعلیم نے کہا کہ ملک کے پہلے وزیر تعلیم مولانا ابو الکلام آزاد کے یوم پیدائش کو یوم تعلیم کے طور پر منایا جاتا ہے اس موقع پر بچوں کی حوصلہ افزائی کے لئے بورڈ کی جانب سے اس پروگرام کا انعقاد قابل ستائش ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ نتیش کمار کی قیادت والی ریاستی حکومت تعلیمی ترقی کے لئے کوشاں ہے۔ تعلیم کے شعبے کے فروغ کے لئے حکومت کی جانب سے ہر ممکن اقدام کئے جا رہے ہیں ۔ طلباء وطالبات کی حوصلہ افزائی ہو اور وہ اعلیٰ سطح تک تعلیم حاصل کریں اس کے لئے وظیفے کا نظم کیاگیا ہے۔ حکومت نے خاص طور سے طالبات کی حوصلہ افزائی کے لئے جو قدم اٹھائے ہیں وہ بے مثال ہے۔ جناب ورما نے تعلیم کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں بیداری پیدا کرنے کی ضرورت ہے تاکہ سماج کا کوئی بھی بچہ تعلیم سے محروم نہ رہے۔وزیر تعلیم نے کہا کہ ریاستی حکومت اقلیتوں کی ترقی کیلئے بھی پابند عہد ہے۔ اقلیت طبقے کے طلبا ء وطالبات کی حوصلہ افزائی کے لئے حکومت کی طرف سے وظیفے دئیے جا رہے ہیں۔ مدارس کے بچوں کو بھی حکومت کے منصوبے کا فائدہ حاصل ہو ، اس کے لئے بھی کارروائی کی گئی ہے۔ نتیش حکومت نے نئے مدارس کو بھی منظوری دینے کی کارروائی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانو ں کی پسماندگی کی وجہ تعلیم کی کمی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب سماج تعلیم یافتہ ہوگا تو سماج کی ترقی کوکوئی نہیں روک سکتا۔ وزیر تعلیم نے سائنس اور میتھ میں دلچسپی پیدا کرنے کے لئے وقف بورڈ کی جانب سے اولمپیاڈ کے انعقاد کے لئے چیئر مین محمد ارشاد اللہ اور چیف ایکز کیو ٹیو افسر امتیاز احمد کریمی کو مبارکباد پیش کی۔
اس موقع پر سنی وقف بورڈ کے چیرمین الحاج محمد ارشاد اللہ نے تمام کامیاب طلبا و طالبات کو دلی مبارک باد پیش کی اور کہا کہ ہمارے بچوں نے وقف اولمپیاڈ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے ، ان کی دلچسپی ،شوق اور کارکردگی سے اندازہ ہوتا ہے کہ ہماری نئی نسل سائنس کی تعلیم کے طرف راغب ہورہی ہے ، اگر ان کی صحیح رہنمائی کی جائے تو وہ شعبہ سائنس میںبھی قوم و ملت کا نام روشن کر سکتی ہے۔اس موقع پر چیئرمین سنی وقف بورڈ نے اعلان کیا کہ ملت کے بچوں کی حوصلہ افزائی کے لئے مختلف سطح پر منصوبے شروع کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ بہار بورڈ سے میٹرک، انٹر میڈیٹ یا سی بی ایس ای، آئی سی ایس ای سے دسویں اور بارہویں میں اوور آل ٹاپ آنے والے بہارکے مسلم بچے اور بچیوں کو بورڈ کی جانب سے ایک لاکھ روپے کا نقد انعام دیا جائے گا۔اسی طرح NEET, AIMS, IIT, CLAT, BPSC میں ٹاپ آنے والے بہار کے مسلم بچوں کو بھی ایک ایک لاکھ روپے کا نقد انعام دیا جائے گا۔پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر غلام غوث نے کہا کہ اقلیت مسلمان تعلیم کے شعبے میں اب بھی کافی پسماندہ ہیں۔ انہوںنے کہا کہ مسلمانو ں کی تعلیمی ترقی کے لئے حکومت کی طرف سے مزید اقدام کی ضرورت ہے۔ پروفیسر غلام غوث نے وزیر تعلیم کرشن نند ن پرساد ورما کی توجہ مبذول کراتے ہوئے کہا کہ 1990 کے بعد سے ریاست میں کوئی بھی اردو پرائمری اسکول کا قیام عمل میں نہیں آیا ہے۔ انہوں نے مسلم آبادی والے علاقو ںمیں اردو پرائمری اسکول قائم کیا جائے۔ ساتھ ہی انہوں نے اپیل کی کہ ریاست میں 12000 تعلیمی مرکز کی تعداد بڑھا کر 20000 ہزار کی جائے تاکہ سماج میں حاشیہ پر رہ رہے بچوں کو بھی تعلیم سے جوڑا جا سکے۔پروفیسر غلام غوث نے ریاست کی دوسری سرکاری زبان اردو کے فروغ کے لئے ایمانداری کے ساتھ عملی کوشش کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ پروگرام سے امتیاز احمد کریمی ، چیف ایکزیکیوٹیو آفیسر ، بہار اسٹیٹ سنی وقف بورڈ نے کہا کہ تعلیم ہی ترقی کا زینہ ہے۔ جو قوم تعلیم کے میدان میں پیچھے ہے وہ سبھی شعبے میں پسماندگی کا شکار ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام نے تعلیم کی ضرورت پر کافی زور دیا ہے۔اللہ تعالیٰ نے جو پہلی آیت نازل فرمائی وہ ہے ’’اقرا‘‘ یعنی پڑھ۔اسی سے اندازہ لگا سکتے ہیں کہ مذہب اسلام میں تعلیم کتنی زیادہ اہمیت ہے۔ انہوں نے تعلیم کو ترقی شاہِ کلید قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر سبھی گارجین یہ مصمم ارادہ کر لیں کہ وہ کسی بھی قیمت پر اپنے بچے اور بچیوں کو تعلیم دلائیں گے اور بچے اپنے اندر یہ جذبہ بیدار کرلیں کہ ہم کسی بھی قیمت پر زیادہ سے زیادہ تعلیم حاصل کرنے کی کوشش کریں گے تویقینی طور سے ہمارا معاشرہ تعلیم یافتہ ہوگا اور ہم سبھی میدان میں اپنی قوت پرچم بلند کریں گے۔ہمیں ترقی کرنے سے کوئی نہیں روک سکتا۔ جناب کریمی نے کہا کہ مسلم نوجوانوں کو چاہئے کہ وہ تعلیم کے ہر شعبے میں خود کو ثابت کرنے کی کوشش کریں یہ ہرگز نہ سمجھیں کہ یہ ہماری پہنچ سے باہر ہے۔ انہوں نے ملت کے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ سائنس، آرٹس اور کامرس کے علاوہ سبھی تکنیکی شعبے میں اپنی دلچسپی کے حساب سے تعلیم حاصل کریں اور حکومت کی جانب سے مختلف عہدوں پر ہونے والی بحالیوں میں ضرور حصہ لیں۔ خاص طور سے بی پی ایس سی اور یو پی ایس سی جیسے امتحانات میں نہ صرف شامل ہوں بلکہ اس میں کامیابی حاصل کرنے کے لئے جس سطح پر محنت کی ضرورت ہووہ ضرور کریں۔ انشاء اللہ ہمیں ضرور کامیابی ملے گی۔انہوں نے غریبی تعلیم کی راہ میں ہرگز رکاوٹ نہیں ہے، موجودہ حالات میں حکومت سے لے کر رفاہی ادارے بھی غریب بچوں کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں تاکہ با صلاحیت غریب بچے اعلیٰ تعلیم سے محروم نہ رہ سکیں۔ جناب کریمی نے اولمپیاڈ کے کامیاب طلباء و طالبات کو مبارکباد پیش کی ساتھ انہوں نے کہا کہ جو طلبااول، دوم ، سوم پوزیشن حاصل نہیں کر سکے ہیں انہیں مایوس ہونے کی ضرورت نہیں ہے ، انہوں نے وقف اولمپیاڈ میں شامل ہونے والے تمام طلباء طالبات کو مبارک باد دی اور کہا کہ ہمارے طلباء نے وقف اولمپیاڈ میں حصہ لیا ، محنت کی اور دلچسپی کے ساتھ اکزام کو فیس کیا یہی ان کی کامیابی ہے ، انہوں نے کہا کہ وقف اولمپیاڈ سے یہ اندازہ لگانا مشکل نہیں کہ مسلم طلباء طالبات کے اندر سائنس کا ذوق و شوق پروان چڑ ھ رہا ہے، اگر ان کی اچھی تربیت و رہنمائی کی گئی اور انہیں پورے وسائل اور مواقع فراہم کرائے جائیں تو وہ بہترین سائنٹسٹ بن کر ملک و قوم کی خدمت انجام دے سکتے ہیں ۔انہوں نے تمام طلبا ء و طالبات کو دعائیہ پیغام میں کہا کہ میری خواہش ہے کہ تم بامِ عروج پر مثلِ ثریا چمکو۔تمہاری منزل یہیں پر ختم نہیں بلکہ ’’ ترے سامنے آسماں اور بھی ہے‘‘۔تقریب میں میتھ و سائنس اولمپیاڈ کے نویں اور دسویں جماعت کے اول ، دوم اور سوم درجہ سے کامیاب طلبا و طالبات کے درمیان وزیر تعلیم کرشن نندن ورما، سنی وقف بورڈ کے چیئر مین الحاج محمد ارشاد اللہ اور چیف ایکز کیو ٹیو افسر امتیاز احمد کریمی کے ہاتھوں میڈل ، سرٹی فیکٹ اور نقد (اول ۔10000 ، دوم۔75000 اور سوم۔ 5000 روپے )انعامات سے نوازا گیا۔جن طلباء و طالبات نے نمایاں کامیابی حاصل کی ان میں نویں جماعت کے میتھ سبجکٹ میں حماد سمیع ولد سمیع احمدصدیقی ، الحرا ٹیوٹوریلس ، شریف کالونی ،پٹنہ نے اول پوزیشن ، زویا رضوی بنت سید شاہ قیصر رضوی ، گلوبل پرتبھا اسکول ،پٹنہ نے دوم پوزیشن اور محمد عیسیٰ ولد محمد یوسف ، الحرا ٹوٹوریلس شریف کالونی ،پٹنہ نے سوم پوزیشن پر رہے۔جب کہ نویں جماعت کے سائنس سبجکٹ کے تحت زویا رضوی بنت سید شاہ قیصر رضوی ، گلوبل پرتبھا اسکول ،پٹنہ نے اول پوزیشن ، حماد سمیع ولد سمیع احمدصدیقی ، الحرا ٹیوٹوریلس ، شریف کالونی ،پٹنہ نے دوم پوزیشن اور محمد عیسیٰ ولد محمد یوسف ، الحرا ٹیوٹوریلس شریف کالونی ،پٹنہ اور شمیزر حسین ولد منور عالم، سنت جوزف ہائی اسکول ،پٹنہ دونوں نے سوم پوزیشن سرفراز ہوئے۔دسویں جماعت کے میتھ سبجکٹ میں افضل آفتاب ولد قیصر آفتاب ، لٹرا ویلی اسکول،پٹنہ نے اول پوزیشن ، شفق سحر بنت محمد نسیم ، الحرا ٹیوٹوریلس ، شریف کالونی ،پٹنہ نے دوم پوزیشن اور عبدالصمد قادری ولد مناظر علی قادری ، نجم مشن اسکول ،پھلواری شریف ،پٹنہ سوم پوزیشن پر رہے۔ دسویں جماعت کے سائنس سبجکٹ کے تحت شفق سحر بنت محمد نسیم ، الحرا ٹیوٹوریلس ، شریف کالونی ،پٹنہ نے اول پوزیشن ، محمد فیض عالم ولد محمد صابر ، کیندریہ ودیالیہ ، دانا پور کینٹ،پٹنہ نے دوم پوزیشن جب کہ ام کلثوم بنت محبوب الحق سنت جوزف کانونٹ ہائی اسکول ،پٹنہ اور بشریٰ فردوس بنت محمد ظفر احمد ، الحرا ٹیوٹوریلس ، شریف کالونی ،پٹنہ دونوں نے سوم پوزیشن کے انعامات سے سرفراز ہوئے۔تقریب کی نظامت نور السلام ندوی نے بحسن و خوبی انجام دئیے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close