بہارسیمانچل

سوامی اگنی ویش پر حملہ ہندوستانی جمہوریت پر بدنماداغ:اسرارالحق قاسمی

کشن گنج:آریہ سماج کے معروف مذہبی رہنما،دانشوراور سماجی کارکن سوامی اگنی ویش کے ساتھ جھارکھنڈ میں ہونے والی زیادتی اور بھیڑکے ذریعے انہیں زد و کوب کیے جانے کی کوشش پرسخت افسوس اور تشویش کااظہار کرتے ہوئے معروف عالم دین وممبر پارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے کہاہے کہ اس وقت ایک مخصوص طبقہ ملک میں جمہوریت اور انسانیت کوپوری طرح تہہ وبالاکرنے کے درپے ہے اور حکومت کی سرپرستی کی وجہ سے ایسے لوگوں کا حوصلہ آسمان سے باتیں کررہاہے۔مولاناقاسمی نے کہاکہ سوامی اگنی ویش ملک کے ان گنے چنے افراد میں سے ہیں جو مذہبی تنگ نظری سے اوپر اٹھ کر انسانی ہمدردی کے جذبے سے سماجی فلاح و بہبود کے لیے کام کرتے ہیں اور قومی یکجہتی کی بقاءکے لیے کوششوں میں سرگرم رہتے ہیں،ایسے بے ضرراورامن پسندانسان کوفرقہ پرستوں کے ذریعہ نشانہ بنایاجانا نہایت افسوس ناک ہے اور ان کے خلاف فوری کارروائی کی جانی چاہئے۔مولاناقاسمی نے کہاکہ بی جے پی ملک کے عوام کا ذہن اصل ایشوز سے بھٹکاکر اسی قسم کے بے فائدہ موضوعات میں الجھائے رکھنا چاہتی ہے اور اسی وجہ سے اس نے سماج دشمن عناصر کو شہہ دے رکھاہے کہ وہ معاشرے میں انارکی پھیلائیں ۔انہوں نے کہاکہ چوںکہ سوامی اگنی ویش موقع بہ موقع موجودہ حکومت کی عوام مخالف پالیسیوں پر تنقید بھی کرتے رہتے ہیں اس لئے بھی وہ شدت پسند ہندوتوا طاقتوں کو ایک آنکھ نہیں بھاتے۔مولانانے کہاکہ اس وقت ہندوستانی جمہوریت شدید خطرات سے دوچارہے اور سماج کے تمام امن پسنداور باشعور انسانوں کی ذمہ داری ہے کہ تمام تر مصلحت سے اوپر اٹھ کرملک کی سالمیت کے لیے اپنی آواز بلند کریں اور ایسی طاقتوں کی حوصلہ شکنی کریں جواس ملک میں مذہبی منافرت کوپھیلاکر سیاسی روٹی سینکنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close