بہارمتھلانچل

سوشل میڈیاپرکسی مذہب کے خلاف پوسٹ ڈالنے والے کے خلاف ہوگی سخت کاروائی

ڈھاکہ تھانہ احاطے میں پیس میٹنگ سے تھانہ صدرارجن کمارکالوگوں سے خطاب

موتیہاری: سوشل میڈیاپراگرکوئی کسی کے جذبا ت کوٹھیس پہونچاتاہے یاکسی کے دین کے خلاف کوئی اعتراض باتیںڈالتاہے توایسے لوگوں کی پہچان کراسکے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی اوراس کے روک تھام کے لئے سماج کے امن پسندلوگوں کوآگے آنے کی سخت ضرورت ہے کیونکہ آج کے نوجوان طبقہ جس بے راہ روی کے شکارہے وہ بہت ہی افسوسناک ہے مذکورہ باتیں ڈھاکہ تھانہ صدرارجن کمارنے تھانہ احاطے میں منعقدپیس میٹنگ کوخطاب کرتے ہوئے کہیں۔انہوں نے مزیدکہاکہ جس طرح لوگ ایک خاص یادیگرلوگوں کے خلاف سماج میں رہتے ہوئے فیس بک،واٹس ایپ پرپوسٹ دالتے ہیں اس سے سماج کے اندرقائم بھائی چارگی ختم ہوتی ہے۔گزشتہ کچھ ہفتوں سے ڈھاکہ اندرھندومسلم بھائی چارگی کوختم کرنے کے جوچالیں چلی گئی اورفیس بک پرایک خاص مذہب کے اوپراعتراض پوسٹ دال کراسکے جذبا ت کوکھیلنے کی کوشش ہوئی وہ قابل مذمت کے قابل ہیں۔اگرکوئی شخص کسی کے مذہب کے ماننے والے کی جذبات کوٹھیس پہونچاتاہے تواسکے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔ وہیں پیس میٹنگ کی صدارت کررہے انسپیکٹر امیریندر کمارنے کہاکہ نوجوان طبقہ کے راستے سے بہک جانے کے پیچھے اسکے گارجین کی کمی ہے۔سماج میں جوایک دوسرے کے تیئں نفرت ہے اسے محبت کے زریعے ہی ختم کیاجاسکتاہے۔وہیں اس میٹنگ میں یہ فیصلہ لیاگیاکہ اگرکوئی کسی بھی مذہب کے فیس بک یادیگرسوشل میڈیاکے توسط سے کوئی اعتراض پوسٹ ڈالتاہے توسبھی مذہب کے لوگ اس کی پرزورالفاظ میں مذمت کرینگے۔اس موقع پرراجدبلاک صدرشمس تبریز،نورعالم خان،وصیل اختر، دلیپ صراف،پپوچودھری، انجینئر ہری کشور سمیت دونوں طبقہ کے درجنوں لوگ موجودتھے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close