بہارپٹنہ

سی پی آئی یکساں نظریات والی پارٹیوں سے اتحاد کرے گی

فرقہ پرستوں کو روکنے اور جمہوریت بچانے کیلئے نئی حکمت عملی ضروری: نارائن

پٹنہ- ہندوستانی کمیونسٹ پارٹی (سی پی آئی) آئندہ سال ہونے والے لوک سبھا کے انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اور اس کے اتحادیوں کو شکست دینے کے لیے مختلف علاقوں میں حالات کے مطابق یکساں نظریات والی جماعتوں کے ساتھ تال میل کرے گی۔ سی پی آئی کے قومی سکریٹری ڈاکٹر کے نارائن نے آج یہاں بہار سی پی آئی کے ریاستی سکریٹری ستیہ نارائن سنگھ کی موجودگی میں منعقدہ پریس کانفرنس میں کہا کہ راجستھان، مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ میں ہونے والے اسمبلی انتخابات میں لوک تانترک مورچہ کی تشکیل کی گئی ہے۔ اس مورچہ سے کانگریس الگ ہے۔ انہوں نے کہا کہ سی پی آئی کا اس مورچہ کی تعمیر میں ایک اہم کردار ہے۔مسٹر نارائن نے کہا کہ تلنگانہ اسمبلی انتخابات میں ووٹر لسٹ سے متعلق معاملہ عدالت میں زیرالتوا ہے۔ سپریم کورٹ نے اس معاملے کو ہائی کورٹ کے سپرد کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ راشٹر سمیتی (ٹی آر ایس) کے دباؤ میں وہاں نو ماہ پہلے ہی الیکشن کروانے کی سازش میں بی جے پی شامل ہے۔تلنگانہ میں بنے مهاگٹھ بندھن میں سی پی آئی کے ساتھ ہی کانگریس، تیلگو دیشم پارٹی (ٹی ڈی پی) اور تلنگانہ جن سمیتی شامل ہیں۔سی پی آئی کے قومی سکریٹری نے کہا کہ راجستھان میں سی پی آئی 42، مارکسی کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم) 35، ہندوستان کی کمیونسٹ پارٹی (مارکسی-لینن) 07، مارکسی کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (ایم سی پی آئی ) 02، سماجوادی پارٹی 05، جنتا دل (سیکولر) 03 اور قومی لوک دل 07 اسمبلی حلقوں سے الیکشن لڑے گی۔ اسی طرح مدھیہ پردیش میں سی پی آئی 42 اور سی پی ایم 16 سیٹوں پر امیدواروں کو اتارے گی۔مسٹر نارائن نے کہا کہ چھتیس گڑھ اسمبلی انتخابات میں بائیں بازو مضبوطی کے ساتھ انتخابی میدان میں اترے گی۔ سی پی آئی 14، سی پی ایم 04 اور سوشلسٹ یونٹی سنٹر آف انڈیا (ایس یو سی آئی ) 03 اورہندوستان کی کمیونسٹ پارٹی (مارکسی-لینن) 02 سیٹوں پر الیکشن لڑے گی۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close