بہارمتھلانچل

سی پی ایم کے قد آور لیڈر وجے کانت ٹھاکر کا انتقال

بائیں بازو سمیت دیگر پارٹیوں میں بھی صدمہ کی لہر، فاطمی، صدیقی وغیرہ نے بھی کی تعزیت

دربھنگہ :مارکسوادی کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم) کے سرکردہ لیڈر سابق سینٹرل کمیٹی رکن و بائیں بازو کی تحریک کے معروف لیڈر، کسان تحریک کے بانی، کسانوں غریبوںاور مزدورں کے مسیحا کامریڈ وجے کانت ٹھاکر کو اتوار کی صبح شہر کے بیلو ا گنج واقع رہائش گاہ پر 87 سال کی عمر میں انتقال ہوگیا۔ اور ان کو سنگھوارہ بلاک کے ان کے آبائی گاؤں کنسی میں اتوار کی سہ پہر نذر آتش کردیا گیا۔ ان کے پسماندگان میں 4بیٹے اور 2بیٹیاں شامل ہیں۔ ان کے انتقال کی خبر آتے ہی سیاسی، سماجی سمیت تمام حلقوں میں صدمہ کی لہر دوڑ گئی۔ وجے کانت ٹھاکر نے تقریبا 65سال قبل طلبہ کی سیاست سے اپنے سیاسی سفر کا آغا زکیا تھا۔ وہ سوشلسٹ تحریک کے سرکردہ رہنما گردانے جاتے تھے۔ 1957(پہلا پنچایت الیکشن) سے 2006 تک سنگھوارہ بلاک کے تحت کنسی پنچایت کے مکھیا رہے۔ 1980سے 2004تک سی پی ایم کے ضلع سکریٹری اور 2005سے بہار صوبائی کمیٹی کے سکریٹری رہے۔ کسانوں اور مزدوروں اور غریبوں کے حقوق کی لڑائی ہمیشہ وہ لڑتے رہے۔ سوشلسٹ پارٹی سے سیاست کا آغاز کر کمیونسٹ تحریک سے جڑنے والے لیڈران میں وہ اول تھے۔ بعد میں سورج نارائن سنگھ وغیرہ نے بھی ان کی روایت کو آگے بڑھایا۔ وہ غیر منقسم دربھنگہ ضلع بھاکپا کے بھی ضلع سکریٹری طویل عرصہ تک رہے۔ جب دربھنگہ، مدھوبنی، سمستی پور اور مدھوبنی ایک ہی ضلع ہوا کرتا تھا۔ ان کے انتقال کی خبر ملتے ہی شہر اور گاؤں کے لیڈران، پارٹی کارکنان و دانشوران کا بیلوا گنج واقع ان کی رہائش گاہ پر پہنچ کر خراج عقیدت پیش کرنے کا سلسلہ لگا رہا۔ ان کے جسد خاکی کوجب کنسی لے جایا جا رہا تھا تو ہزاروں کی تعداد میں لیڈران و کارکنان ایک جلوس کی شکل میں ساتھ ساتھ تھے۔ ان کی رحلت پر سابق وزیر مالیات بہار عبد الباری صدیقی نے ان کے انتقال کو اپنا ذاتی خسارہ قرار دیتے ہوئے دربھنگہ کے لیے بڑا نقصان قرار دیا اور کہا کہ وہ ہمیشہ غریب، استحصال زدہ اور مظلومین کی لڑائی لڑتے رہے۔ وہیں سابق مرکزی وزیر محمد علی اشرف فاطمی نے بھی گہرے صدمے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وجے کانت ٹھاکر سے میرے ذاتی مراسم تھے۔ ان کا دربھنگہ اور ہم لوگوں پر بڑا احسان رہا۔ وہ پوری زندگی غریبوں کی لڑائی لڑتے رہے اور لڑتے لڑتے اس دنیا سے چلے گئے۔ پورا آر جے ڈی خاندان آج صدمہ میں ہے۔ ان کے علاوہ آرجے ڈی ضلع صدر رام نریش یادو، ڈاکٹر فراز فاطمی ، راشد جمال، نارد یادو، غلام حسین چینا، بھولا سہنی، ورون مہتو، پرکاش کمار جیوتی، سبھاش چندر رائے، منا ٹھاکر، امریش یادو، رام بابو یادو، راجا پاسوان، نارائن رام، گائتری دیوی، رام بابو چوپال، اشرف دلارے، مکیش کمار ساہ، محمد قمر عالم، سابق ایم ایل رام نریش پانڈے، رام نریش پرساد، بیجناتھ چودھری، سیتا رام چودھری، کانگریس لیڈر پون کمار چودھری، اودھیش کمار، رام پری دیوی، ایپوا، رام آشرے سنگھ، للت یادو (ایل ایل اے) ابھیشیک کمار، مکند چودھری، آدتیہ نارائن منا، سنجے سراوگی، ادے شنکر چودھری، ڈاکٹر سمریندر کمار سدھانشو، ڈاکٹر مراری موہن، انل کمار ایڈووکیٹ جھا، دھریندر جھا، پرنس کمار کرن، بیدناتھ چودھری، صدیق بھارتی، نیاز احمد، لکشمی پاسوان، محمد جمال الدین وغیرہ نے بھی تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے ان کے انتقال کو ناقابل تلافی نقصان قرار دیا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close