ہندوستان

عالمی امن کے قیام میں ہندوستان کااہم کردار:مودی

نئی دہلی: وزیراعظم نریندر مودی نے پہلی عالمی جنگ میں ہندوستانی فوجیوں کی بہادر ی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ سو سال پیشتر ان بہادروںنے دنیا کو دکھا دیا کہ امن قائم رکھنے کے لئے وہ بڑی سے بڑی قربانی دینے سے پیچھے نہیں ہٹتے۔ مسٹر مودی نے اتوار کو اپنے ماہانہ پروگرام ’من کی بات‘ میں پہلی عالمی جنگ کے 11 نومبر کو 100 برس پورے ہونے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہندوستان کے لئے اہم واقعہ تھا۔ انہوںنے کہا کہ ’’ جب کبھی بھی عالمی امن کی بات ہوتی ہے تو اس سلسلے میں ہندوستان کا نام اور قربانیاں سنہرے حروف میں لکھا جائے گا۔مسٹر مودی نے کہا کہ ہمارے صحیفوں میں لکھا ہے کہ ’’ایشور تینوں لوکوں میں ہر طرف امن کا قیام ہو، دنیا کے ذرے ذرے میں ہر جگہ امن کا دور دورہ ہو۔‘‘انہوںنے کہا کہ ہندوستان کے لئے سال 11 نومبر کی خصوصی اہمیت ہے کیونکہ 11 نومبر کو آج سے 100 برس قبل پہلے عالمی جنگ اختتام ہوا، اس کے اختتام کو100 برس ہوچکے ہیں۔ ہندوستان کے لئے پہلی عالمی جنگ ایک اہم واقعہ تھا۔ انہوںنے کہا کہ ’’صحیح بات یہ ہے کہ اس جنگ سے ہمارا براہ راست کوئی تعلق نہیں تھا۔ اس کے باوجود ہمارے فوجی بہادرے سے لڑے اور بہت اہم خدمات انجام دیں، زبردست قربانیاں دیں۔ ہمارے فوجیوںنے دنیا کو دکھا دیا کہ جب جنگ کی بات آتی ہے تو وہ کسی سے بھی پیچھے نہیں ہیں۔ ہمارے فوجیوںنے دشوار گذار علاقوں اور نہایت نامساعد موسموں میں بھی بہادری دکھائی۔‘‘وزیراعظم نریندرمودی نے قومی اتحادکے علم بردار سردار ولبھ بھائی پٹیل کی سالگرہ پر منعقد ’ایکتا کےلئے دوڑ‘میں ملک کے عوام سے بڑی تعداد میں شامل ہونے کی اپیل کی اور کہا کہ 31اکتوبر کو ان کے مجسمہ کی نقاب کشائی کی جائے گی اور یہ دنیا کا سب سے اونچا مجسمہ ہوگا جو دنیا میں ملک کے وقار میں اضافہ کرے گا۔مسٹر مودی نے اتوار کو آکاشوانی سے نشر اپنے ماہانہ پروگرام ’من کی بات‘ کے 49ویں ایڈیشن میں کہا کہ اس سال بھی سردار پٹیل کی سالگرہ پر 31 اکتوبر کو’ایکتا کےلئے دوڑ‘ پروگرام منعقد کیا جارہا ہے۔ملک کے اتحاد اور سالمیت کے علم بردار سردار پٹیل کی سالگرہ پر منعقد اس دوڑ میں ملک کے عوام کو بڑی تعداد میں حصہ لے کر قومی اتحاد کے علم بردار سردار پٹیل کو اپنا خراج عقیدت پیش کرنا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ اس بار سردار پٹیل کی سالگرہ خاص ہوگی کیونکہ اس دن گجرات میں نرمدا ندی کے ساحل پر واقع ان کے مجسمے کی نقاب کشائی ہوگی جو دنیا میں سب سے اونچا مجسمہ ہوگا۔یہ مجسمہ امریکہ کے اسٹیچو آف لبرٹی سے دو گنا اونچا ہے۔انہوں نے کہا کہ ’یہ دنیا کا سب سے اونچا آسمان کو چھونے والا مجسمہ ہے‘۔ہر ہندوستانی اس بات پر فخر کرے گا کہ دنیا کا سب سے اونچا مجسمہ ہندوستانی کی زمین پر ہے۔یہ مجسمہ ایسی ہستی کا ہے جو زمین سے جڑے ہوئے تھے اور اب وہ آسمان کی خبصورتی میں بھی اضافہ کریں گے ۔مجھے امید ہے کہ ملک کا ہر شہری ’ماں بھارتی‘ کی اس بڑی کامیابی پر دنیا کے سامنے فخر محسوس کرے گا۔مجھے یقین ہے کہ ہندوستان کے ہر کونے سے لوگ،اب اسے بھی ایک ٹورسٹ پوائنٹ کے طورپر پسند کریں گے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close