بہارسیمانچل

قرآن پڑھنے اور عمل کرنے سے دنیاوآخرت سنورتی ہے

مدرسہ صفہ ،تعلیم آباد،ٹپو،کشن گنج میں تعلیمی سال کے آغازکے موقع پرعلمائے کرام کا خطاب

کشن گنج:حفظ و تجوید کی تعلیم کے لیے کشن گنج میںقائم مدرسہ صفہ تعلیم آباد،ٹپو،تاراباڑی چوک میں نئے تعلیمی سال کے آغازکی مناسبت سے ایک پروگرام کا انعقاد ہوا۔اس موقع پرمولاناالیاس قاسمی دیناجپوری نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اپنے آپ کودینی تعلیم کے حصول میں لگانا نہایت سعادت کی بات ہے اوران لوگوں پر اللہ کی خاص عنایت ہوتی ہے جو قرآن پاک کو پڑھنے اور پڑھانے میں اپنا وقت صرف کرتے ہیں۔دلکولہ جامع مسجدکے امام کے مفتی خورشید ربانی قاسمی نے کہاکہ نے اسلام دنیاکا واحدایسا مذہب ہے جس نے سب سے پہلے تعلیم و تربیت پر غیر معمولی توجہ دی اور اس دین کی ابتداہی اقراءسے ہوئی ہے ،اس سے اندازہ ہوتاہے کہ اسلام نے انسانیت کی ہر قسم کی کامیابی کو تعلیم و تعلم سے مشروط رکھاہے۔ انہوں نے کہاکہ مدرسہ صفہ کا تعلیمی و تربیتی نظام دیکھ کر مجھے قلبی خوشی ہوئی کہ یہاں نہ صرف طلباکی تعلیم کا معقول انتظام ہے اور انھیں قرآن کریم تجوید کے ساتھ حفظ کروانے اور بچوں کی یادداشت پر خصوصی توجہ دینے کے ساتھ ان کی مثالی تربیت پر بھی خاص توجہ دی جاتی ہے تاکہ وہ آیندہ وہ امت کی مکمل رہنمائی اور قیادت کے اہل ہوسکیں اور علمی اعتبار سے مسلمانوں کی خدمت کرنے کے ساتھ اپنے اعمال و اخلاق کے ذریعے عوام کے درمیان اسلامی تعلیمات کا عملی نمونہ پیش کرسکیں۔انہوں نے اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ مسلمانوں میں تعلیمی بیداری کے موضوع پر جدوجہد میں مصروف حضرت مولانا اسرارالحق قاسمی کے زیر سرپرستی چلنے والے اداروں کی خصوصیت یہ ہے کہ یہاں طلباءکی بہترین تعلیم کے ساتھ ان کی تربیت پر بھی خاص توجہ دی جاتی ہے ،چنانچہ دہلی کاالفلاح مدرسہ ہویاکولکاتہ میں قائم دارالعلوم اسراریہ سنتوشپور یا مدرسہ صفہ ہر جگہ قرآن کریم کی معیاری تعلیم کے ساتھ طلباءکی تربیت کے لیے منظم کوشش کی جاتی ہے۔اس کے علاوہ دینی ماحول میں بچیوں کی عصری تعلیم و تربیت کے لئے اقامتی ادارہ ملی گرلزاسکول اور دیہی علاقوں میں مکاتب کا قیام حضرت مولاناکے تعلیمی میدان میں عظیم کارنامے ہیں۔اس موقع پرمدرسہ کے بانی وسرپرست مولانااسرارالحق قاسمی نے طلبہ کو نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ اللہ کے نبی ﷺکا ارشاد ہے کہ طالب علموں کے لیے دنیاکی ہر مخلوق حتی کہ فرشتے آسمانوں میں اور مچھلیاں پانی میں دعائیں کرتی ہی،لہذا تمام طلباءکواپنے مقام و مرتبہ کا احساس ہونا چاہیے اورہر اس عمل سے بچنا چاہیے جو طالب علم کے رتبہ اوراس کی پہچان کے خلاف ہو۔ا خلاصِ نیت،اساتذہ کی تعظیم، نمازکی پابندی اور ساتھیوں کے ساتھ خلوص و ہمدردی کابرتاؤکریں اور غیر تعلیمی سرگرمیوں سے مکمل پرہیز کرتے ہوئے اپنے آپ کو تعلیمی مصروفیات میں مشغول رکھیں تاکہ کامیابی آپ کے قدم چومے۔واضح رہے کہ مدرسہ صفہ میں گجرات کے طرز پر نورانی قاعدہ ،حفظ و تجوید اور علومِ عصریہ کی معیاری تعلیم کے ساتھ طلبا کو نماز کے فرائض وواجبات اورمستحبات کے ساتھ شب و روز کی مسنون دعائیں یاد کروانے کا بھی خصوصی اہتمام کیاجاتا ہے ،اس کے ساتھ ماہانہ امتحان و مسابقہ کے ذریعے طلباکی یادداشت اور تجوید کے ساتھ تلاوتِ قرآن کی مشق بھی کروائی جاتی ہے ،یہی وجہ ہے کہ نہایت قلیل عرصے میں اس ادارے نے اہل علم کے طبقے میں اعتماد حاصل کرلیاہے اوریہاں کے طلبانے گزشتہ سال جامعہ اشاعت العلوم اکل کواکے زیراہتمام سپول میں منعقدہ مسابقۂ حفظ و قرائت میں اول پوزیشن حاصل کرکے ادارے کانام روشن کیا ہے۔ اس موقع پرقاری عمرفاروق مظاہری، قاری محمودندوی،مولانا نوشیراحمد، قاری عبدالواحد اشاعتی،مولانا شہنوازقاسمی، مولانا نظام الدین قاسمی اورانجینئروقار احمدخان وغیرہ موجودرہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close