سیاستہندوستان

قومی سطح پر کانگریس کی بی جے پی اور آر ایس ایس سے نظریاتی جنگ چل رہی ہے: راہل گاندھی

میزورم :شمال مشرقی ریاست میزورم میں اسمبلی انتخابات سے قبل تشہیری مہم جاری ہے۔ آج کانگریس صدر راہل گاندھی نے میزورم میں دو ریلیوں سے خطاب کیا ہے۔ رہل گاندھی نے خطاب کے دوران بی جے پی اور آر ایس ایس پر حملہ بولا اور کہا کہ بی جے پی نفرت کی سیاست کرتی ہے، لیکن کانگریس اس کے خطرناک منصوبوں کو کامیاب نہیں ہونے دیگی۔راہل گاندھی نے کہا، ’’قومی سطح پر کانگریس کی بی جے پی اور آر ایس ایس سے نظریاتی جنگ چل رہی ہے۔ کانگریس کا ماننا ہے کہ ہندوستان پر عوام کی حکمرانی ہونی چاہیے۔ مختلف خیالات، زبانوں اور لوگوں کو اظہار رائے کی آزادی ہونی چاہیے۔ جبکہ دوسری جانب بی جے پی اور آر ایس ایس کی کوشش ہے کہ ہندوستانی عوام پر ان کا نظریہ مسلط کیا جائے۔‘‘ انہوں نے کہا، ’’سنگھ اور بی جے پی مختلف خیالات، اور اظہار رائے کی آزادی کو تباہ کرنا چاہتے ہیں۔ وہ لوگوں میں نفرت پھیلا کر ایک دوسرے سے لڑانے کا کام کر رہے ہیں۔‘‘
راہل گاندھی نے این ڈی اے کی اتحادی سیاسی جماعت میزو نیشنل فرنٹ (ایم این ایف) کو بھی ہدف تنقید بناتے ہوئے الزام لگایا کہ ایم این ایف بی جے پی اور آر ایس ایس کو میزورام میں داخل ہونے میں مدد کر رہی ہے۔ راہل گاندھی نے کہا، ’’افسوس کی بات ہے کہ ایم این ایف جیسی پارٹی ان لوگوں کی مدد کر رہی ہے جو میزورم کی ثقافت، زبان اور مذہب کو ختم کرنے پر آمادہ ہیں۔‘‘
راہل گاندھی نے کہا، ’’آج ہندوستان کے اداروں پر حملہ کیا جا رہا ہے۔ بی جے پی کی کوشش ہے کہ وہ اگر 2019 میں ہار بھی جائیں تو بھی آر بی آئی، سی بی آئی اور الیکشن کمیشن میں ان کے لوگ بیٹھے رہیں۔‘‘ انہوں نے کہا کہ نفرت کو محبت اور انتشار کو اتحاد سے ہی ہرایا جا سکتا ہے۔ میں یقین دلاتا ہوں کہ کانگریس پارٹی بی جے پی کے خطرناک منصوبوں کو کامیاب نہیں ہونے دیگی۔‘‘ انہوں نے کہا، کانگریس کا ماننا ہے کہ مختلف خیالات، مختلف لوگ، مختلف ریاستیں اور مختلف روایات ہی ہندوستان کی تعمیر کرتے ہیں۔
اپنی تقریر کے آغاز میں راہل گاندھی نے کہا، ’’آج کے دن مجھے میرے والد راجیو گاندھی کا 1987 میں کیا گیا میزورم کا وہ دورہ یاد آ رہا ہے، جس کے دوران انہوں نے ریاست بھر کا پیدل دورہ کیا تھا۔‘‘ انہوں نے کہا، ’’میزورم کے وزیر اعلی لال تھنوالا کی قیادت میں کانگریس حکومت کے دوران ریاست نے ترقی کی نئی منزلیں طے کی ہیں۔ گزشتہ دس سالوں میں میزورام کی فی کس آمدنی دوگنی ہوئی ہے۔ سال 2008 میں میزورم کی فی کس آمدنی 57 ہزار روپے سالانہ تھی جو آج بڑھ کر 1.15 لاکھ روپے سالانہ ہو چکی ہے۔‘‘ راہل گاندھی نے مزید کہا، ’’میزورم کی فی کس آمدنی میں 24 فیصد سے زیادہ کا اضافہ ہوا جو قومی فی کس آمدنی کے اضافہ کی شرح سے زیادہ ہے۔ میزورم کی ترقی کا کریڈٹ یہاں کے محنتی عوام کو جاتا ہے۔‘‘
قبل ازیں راہل گاندھی خصوصی طیارے کے ذریعہ لینگ پوئی ایئرپورٹ پر اترے جہاں سے وہ انتخابی ریلی سے خطاب کرنے کے لئے چمفائی پہنچے۔ اس کے بعد انہوں نے آئیزول میں بھی جلسہ عام سے خطاب کیا۔ راہل گاندھی کے ساتھ میگھالیہ کے رکن اسمبلی، اے آئی سی سی کے جنرل سکریٹری لوئیزنو فلیریو اور سکریٹری امپارین لنگدوہ بھی شامل رہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close