بہارمتھلانچل

لیفٹ طلباء تنظیموں کے اشتراک سے یو جی سی بچاؤ کنونشن

دربھنگہ :یو جی سی کو سرکارکے ذریعہ ختم کرنے کی خطرناک سازش کے خلاف ، یو جی سی بچاؤاعلی تعلیم بچاؤ کنونشن کا اہتمام ایم ایل ایس ایم کالج میں کیا گیا ۔ کانفرنس کی صدارت پانچ رکنی وفد نے کیا جس میں آئیسا کے کالج سکریٹری وکاس کمار مانجھی ، صدر مدھو کماری ، اے آئی ایس ایف کے کالج کو آرڈینٹر جتندر کمار ، ایس ایف آئی کی نیرج کمار ، اے آئی ڈی ایس او کے للت جھانے مشترکہ طو رپر کیا ۔ کنونشن کی نظامت آئیسا کے ریاستی سکریٹری سندیپ کمار چودھری نے کیا ۔ خطاب کرتے ہوئے شعبہ تاریخ کے پروفیسر دھرمیندر کنور نے کہا کہ یوجی سی کو ختم کرکے عام لوگو ںکو اعلی تعلیم سے محروم کرنے کی کوشش مرکزی حکومت کررہی ہے ۔ انہو ںنے کہا کہ یوجی سی کو ختم کرنے کی کوشش کانگریس کے وقت سے ہی کی جارہی تھی جسے موجودہ حکومت ختم کردینا چاہتی ہے ۔ یوجی سی خود مختارادارہ ہے جس کے توسط سے اعلی تعلیم اورریسرچ کے کام ہوتے ہیں اسے ختم کردینے سے اعلی تعلیم ختم ہوجائے گی ۔ اسکے خلاف بڑی تحریک کی ضرورت ہے ۔ صدر شعبہ ہندی پروفیسر سریندر پرساد سومن نے کہا کہHECIنافذ ہونے سے تعلیم میں بڑی دشواری کاسامناکرناہوگا ۔ یوجی سی کو ختم کرنے کی سازش حکومت کررہی ہے یہ سنگین مسئلہ ہے ۔ حکومت ہمارے بچو ںکواعلی تعلیم سے محروم کرسکتی ہے ۔ خطاب کرتے ہوئے للت نرائن متھلا یونیورسیٹی کے سابق ڈی ایس ڈبلو پروفیسر پربھو نرائن جھا نے کہا کہ تعلیم کو کمپنی کے ہاتھوں سونپ دینے کی خطرناک سازش ہورہی ہے ۔ انہو ںنے کہا کہ تبدیلی فطرت کا قانون ہے لیکن ایسانہیں کہ اپنی مرضی سے تبدیلی کی جائے ۔ یہی آج دیکھنے کو مل رہا ہے کہ یو جی سی جو کہ ایک خود کفیل ادارہ ہے اسے ختم کرکے یو سی جی ایکٹ 1956کی خلاف ورزی کررہی ہے ۔ مسٹر جھا نے کہا کہ دن بدن ہمارے ملک کا تعلیمی نظام گرتی جارہی ہے ۔ بی جے پی حکومت کی سازش ہے کہ ملک کے نوجوان کم پڑھے لکھے رہیں تاکہ ان پر کنٹرول پایا جاسکا ۔ رشی کیش جھانے کہا کہ مرکز کی مودی حکومت تعلیمی ماحول خراب کرنے میں لگی ہوئی ہے ۔ مسٹر جھا نے کہا کہ تعلیم کو پرائیوٹ کمپنی کے ہاتھوں میں سونپ کر تعلیم کو مہنگا کرناچاہتی ہے تاکہ عام لوگ اعلی تعلیم نہ حاصل کرسکیں ۔ اس کیلئے طلباء ٹیچر کو مشترکہ تحریک چلانے کی اپیل کی ۔ آئیسا سکریٹری سندیپ کمار چودھری نے کہا کہ یو جی سی کو ختم کرکے مودی حکومت کیمپس میں سیاسی مداخلت بڑھانے کی تیاری میں ہے ۔ انہو ںنے کہا کہ یو جی سی کو ختم کرکے سرکار خود امداد دینے کے اختیار کو کنٹرول کرے گی ۔ ظاہر ہے کہ اس کا نتیجہ کیمپس میں براہ راست مداخلت کرنا ہوگا اور پرائیوٹ ادارے پھلے پھولیں گے ۔ کانفرنس سے خطاب کرنے والو ں میں وسال مانجھی ، جگدمبا پرساد ، ششی رنجن ، راجا کمار ، چنو ٹھاکر ، جتندر کمار ، انکت چتروردی ، روہت ساگر وغیرہ نے خطاب کیا ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close