بہارمتھلانچل

متھلا یونیورسیٹی شعبہ فاصلات اور یونیسف کے بیچ ہوگا سمجھوتہ

ٹیچراور ایجوکیشن کے معیارکو بڑھانے کی ہوگی کوشش : وائس چانسلر

دربھنگہ :بہار میں ٹیچر اور ایجوکیشن کو مضبوط کرنے اور معیاری تعلیم فروغ دینے کے مقصد سے للت نرائن متھلایونیورسیٹی اور یونیسیف کے بیچ ایم او یو پر 14؍اگست کو دستخط ہوگا ۔ پہلی بار اسٹیٹ میں اعلی تعلیم میں یونیسیف کے ساتھ سمجھوتہ ہورہاہے ۔ اس کے توسط سے پرائمری اور سکنڈری ایجوکیشن کو حصول تعلیم کے ریشیو کو بڑھایا جائیگا۔ خاص کر بہار کے بچے جہاں ملکی سطح پر کافی پچھڑے ہوئے ہیں ۔انہیں نیشنل سطح پر کھڑا کیا جاسکے گا ۔ قابل ذکر ہے کہ ایل این ایم یو کے وائس چانسلر پروفیسر سریندر کمار سنگھ کی قیادت میں لگاتار اس سمت میں کوشش کی جارہی ہے ۔ ان کا ماننا ہے کہ کسی بھی عمارت کی بنیاد ہی اس کی اونچائی کوطے کرتا ہے ۔ یونیسف ٹیچروں کیلئے نظامت فاصلاتی تعلیم کو تعلیم کے معیاری سینٹر کے طور پر فروغ دینا چاہتا ہے ۔ آنے والے تین سالو ںمیں ٹریننگ کیلئے ورکشاپ کا انعقاد کرکے نصاب تعلیم تیار کرنے کا منصوبہ بنارہی ہے ۔ اس کیلئے ایک کڑور 65لاکھ کی رقم دستیاب کرارہی ہے ۔ اس منصوبہ کے تحت کل اکیس پروگرام کرنے کا منصوبہ ہے۔ اس کی جانکاری للت نرائن متھلا یونیورسیٹی کے وائس چانسلر پروفیسر سریندر کمار سنگھ نے پریس کانفرنس میں دی ۔ وائس چانسلر نے کہا کہ یونیسیف کی بہار اکائی اور للت نرائن متھلا یونیورسیٹی کے بیچ ایک مثبت لائحہ عمل تیار کیا جاناہے جو ایجوکیشن ، رولنگ ورک پلان 2018-19پر مشتمل ہوگا ۔ اس سمجھوتہ کے بعد للت نرائن متھلا یونیورسیٹی کامیشور سنگھ دربھنگہ کا شعبہ نظامت فاصلات بہار کی ٹیچر ٹریننگ ایجوکیشن کو کار گر بنانے میں اہم رول ادا کرے گا ۔ انہو ںنے کہا کہ اس منصوبہ کے تحت نظامت فاصلاتی تعلیم مختلف اداروں سے الگ ریاستی سطح پر معیاری تعلیم کیلئے کام کرے گا ۔ ٹیچروں کی رہنمائی بہتر ڈھنگ سے ہوسکے گی اور تعلیم کو موثر بنایاجاسکے گا ۔ اسی کڑی میں 28؍اگست سے چھ روزہ ورکشاپ منعقد ہوگا ۔ جو بہار کے ایجوکیشن سسٹم میں میل کا پتھر ثابت ہوگا ۔ اس منصوبہ کو بہتر ڈھنگ سے چلانے کیلئے یونیسیف تین سورس پرسن دستیاب کرائے گا اور اس پر ہونے والا خرچہ یونیسیف اٹھائے گا ۔ پریس کانفرنس میں پرو۔ وائس چانسلر پروفیسر جے گوپال ،رجسٹرار کرنل نست کمار رائے ، نظامت فاصلات کے ڈائرکٹر ڈاکٹر سردار اروند سنگھ ، میڈیا سیل کے کوآرڈینٹر پروفیسر ونے کمار چودھری وغیرہ موجود تھے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close