بہارپٹنہ

مدارس ملحقہ کے اساتذہ کے مطالبات جائز ہیں،حکومت فوری توجہ دے: امارت شرعیہ

پٹنہ: مدارس ملحقہ کے اساتذہ کچھ دنوں سے مدارس بند کرکے اپنے مطالبات کو لے کرراجدھانی پٹنہ کی سڑکوں پر آگئے ہیں،اورجاڑے کے اس موسم میں کئی دنوں سے دھرنا پربیٹھے ہوئے ہیں،تعجب خیز بات یہ ہے کہ جن مطالبات کو لے کر یہ اساتذہ ٔمدارس دھرنا پر بیٹھے ہیں ان کو اصولی طورپر مختلف موقعوں سے سرکار نے مان رکھاہے،کیوں کہ سرکار کے ذریعہ جاری کردہ مکتوب /162مورخہ 15-02-11اورمکتوب نمبر 1010،1011،مورخہ 16-09-13 کے مطابق مدارس کے اساتذہ کو بھی وہی مراعات دینے کا فیصلہ لیا گیا جو اسکولوں کے نومامور اساتذہ کو دیئے جائیں گے،لیکن 1-07-15سے اسکولوں کے اساتذہ کو باضابطہ تنخواہ دینے کافیصلہ کردیا گیااورمدارس کے اساتذہ کو یوں ہی چھوڑ دیا گیاہے اور صورت حال یہی ہے، حکومت اس کونافذ کرنے میں ٹال مٹول کررہی ہے،جو کسی بھی اعتبار سے مناسب نہیں ہے،اس لئے مدارس ملحقہ کے اساتذہ کی مانگوں اوران کے مطالبات کوسے مان لینا چاہئے اور اس کے لئے فوری نوٹیفکشن جاری کرنا چاہئے،ان خیالات کا اظہار امارت شرعیہ کے قائم مقام ناظم جنا ب مولانا محمد شبلی القاسمی نے اپنے بیان میں کیاہے،مولانا نے کہا اس سے اقلیتوں میں اچھا پیغام جائے گااوراساتذہ دلجمعی سے درس وتدریس میں لگیں گے،جب ان کی مانگیں پوری ہوں گی تو درس وتدریس کا معیار بھی بڑھے گا، جس کی شکایت عام طورسے مدارس ملحقہ کے بارے میں کی جاتی رہی ہے کہ وہاں کار طفلاں تمام ہوتاجارہاہے ،مدارس ملحقہ کے یہ اساتذہ اپنی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں کوتاہی نہیں کریں ،اس کے لئے سرکار کو بھی ان کے جائز مطالبات کے ماننے اورنافذ کرنے میں کوتاہی نہیں کرنی چاہئے،اور انصاف کے تقاضوں پر عمل کرتے ہوئے اسکول کے اساتذہ کی طرح انہیں مراعات دینی چاہئے ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close