بہارکوسی

ملک کے پہلے وزیرتعلیم مولاناآزادکے کارناموں کوفراموش نہیں کیاجاسکتا:توقیرعالم

موتیہاری:(محمداکرم) ملک کے پہلے وزیرتعلیم مولاناابوالکلام آزادکے مختلف کارناموں کوبھلایانہیں جاسکتا،خصوصی طورپرتعلیمی میدان میں مولانانے ملک کوجوکچھ عطاکیاہے اسے کبھی فراموش نہیں کیاجاسکتا،مولاناعبقری اورہمہ جہت شخصیت کے حامل تھے۔بیک وقت عظیم صحافی ،دلیرمجاہدآزادی اوربے مثال محب وطن بھی تھے۔مذکورہ خیالات کااظہارمولانامظہرالحق عربی وفارسی یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلرپروفیسرتوقیرعالم نے آل بہاراردوٹیچرس ایسوسی ایشن وآل بہاراردوبنگلہ ٹی ای ٹی شکچھک سنگھ کے زیراہتمام شہرکے ٹائون ہال میں منعقدتقریب یوم تعلیم کے جم غفیرسے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔انہوں نے مولاناآزادکے مختلف کارناموںکاتذکرہ کرتے ہوئے کہاکہ مولاناآزادنے ملک کوساہتیہ اکیڈمی اداکیاہے ۔ساہتیہ اکیڈمی ایک ایساادارہ ہے جوملک کے تمام زبانوںمیں کتابیں شائع کرتی ہے۔اگرصرف اسی اہم کارنامہ کولیاجائے تومولاناآزادکوکبھی فراموش نہیں کیاجاسکتا۔وہیں ریسرچ اسکالرصفدرامام نے اپنے خطاب میں کہاکہ سب سے زیادہ ضروری ہے کہ ہم اپنی تاریخ کوپڑھیں،اسی کے ذریعے ہم اپنے اسلاف کے کارناموں سے واقف ہوسکتے ہیںجووقت اورحالات کااہم تقاضہ ہے۔انہوں نے مزیدکہاکہ اسلاف کرام کی تاریخ کوپڑھنے سے ہمیں مولاناآزادجیسی اوراہم شخصیات کاعلم ہوگا۔موقع پرایم ایس کالج موتیہاری کے شعبہ ھندی کے پروفیسرارون کمارنے کہاکہ مولاناآزاداتحادوسالمیت اورفرقہ وارانہ خیرسگالی کے سب سے بڑے علمبردارتھے اوروہ ملک کی تقسیم کے مخالف تھے۔مشہورناقدپروفیسرنسیم احمدنسیم نے اپنے خیالات کااظہارکرتے ہوئے کہاکہ مولاناابوالکلام آزاد قدیم تعلیم کے ساتھ ساتھ جدیدتعلیم کے بھی قائل تھے،وہ دینی تعلیم کے ساتھ عصری تعلیم کوبھی لازمی قراردیتے تھے یہی وجہ ہے کہ وہ ملک کوآئی آئی ٹی ،یوجی سی،ساہتیہ اکیڈمی جیسے کئی اہم ادارے عطاکئے۔اس موقع پرشہرکے معروف سرجن ڈاکٹرتبریز نے مولاناکے کارناموں کاتذکرہ کرتے ہوئے کہاکہ مولانانے اردونشرکوایک نئی سمت عطاکیاساتھ ہی انہوں مزیدکہاکہ مولاناآزادنے وزارت تعلیم کے دوران ایسانصاب تعلیم مرتب کرایاجوسماجی،تہذیبی ورثے سے مالامال ہو اورھندومسلم ،سیکھ عیسائی کے اتحادکاضامن ہو۔ نرکٹیاں رکن اسمبلی ڈاکٹرشمیم احمدنے کہاکہ مولانا آزادجیسی اہم شخصیت کوسرکاری سطح پرفراموش کرنانہایت ہی افسوسناک ہے،ایسے میں آل بہارٹیچرس ایسوسی ایشن نے ضلع ہیڈکواٹرمیں یوم تعلیم تقریب کاانعقادکرکے ایک اہم فریضہ کوانجام دیاہے ۔


اس تقریب کاآغازآل بہاراردوٹیچرس ایسوسی ایشن کے میڈیاانچارج محمداسرافیل کے ذریعے کلام پاک کی تلاوت سے ہوا،ہدیہ نعت کوثرتسنیم نے پیش کیا،جبکہ خطبہ استقبالیہ آل بہاراردوٹیچرس ایسوسی ایشن کے تنظیمی سکریڑی عزیرسالم نے پیش کیا۔ایسوسی ایشن کے جنرل سکریڑی محمدامان اللہ نے تنظیم کے غرض وغایت پرروشنی ڈالی وہیں ایسوسی ایشن کاتعارف خازن فیروزعالم نے پیش کیا۔نظامت کی ذمہ داری ایسوسی ایشن کے ریاستی کنوینرعقیل احمدنے بحسن خوبی انجام دیے جبکہ ہدیہ تشکرایسوسی ایشن کے صدرنعیم الدین سلفی نے پیش کیا۔اس مناسبت سے مختلف میدان میں بہترخدمات انجام دینے کے اعتراف میں مختلف شخصیات کواعزازسے نوازاگیا۔تعلیمی میدان میں عبدالرحمن رہبرتیمی کوسرسیداحمدخان تعلیمی ایوارڈ،صحافتی میدان میں افروزعالم ساحل کوپیرمحمدمونس صحافت ایوارڈ،میڈیکل میں شہرکے مشہورسرجن ڈاکٹرتبریزعزیز اورڈاکٹرایس ایم منت اللہ کوحکیم اجمل خان طب ایوارڈ،کے بی سی فاتح شوسیل کمارکوماحولیات کے میدان میں اے پی جے عبدالکلام ایوارڈ،سماجی خدمت کے اعتراف میں نرکٹیاں رکن اسمبلی ڈاکٹرشمیم احمدکوخان عبدالغفارخان سماجی خدمت ایوارڈ،زبان وادب کی خدمات میں معروف صحافی وافسانہ نگارعزیرانجم کوعلامہ اقبال ادب ایوارڈسے اعزازبخشاگیا۔یوم تعلیم تقریب کی اس اہم مناسبت سے تعلیمی میدان میں بہترکراہائے نمایاں انجام دینے کے اعتراف میں تقریبادودرجن اساتذہ کرام کومولاناابوالکلام آزادمثالی تعلیمی خدمت ایوارڈسے نوازاگیا۔جس میں وجئے کماراپادھیائے،محمداسرارالحق،محمداعزازالحق،مفتی ضیاء الحق،عبداللہ قاسمی،نجیب اللہ خان،محمدہدایت اللہ،ارشدعلی،نجم الہدی،جاویدعالم انصاری،تجمل حسین،عبدالحمید،عاصم کلیم،محمدنسیم اختر،ویریندرکمار،مختارعالم،محمدسراج عالم،محمداشفاق احمدکے نام شامل ہیں۔اس موقع سے محب الحق خان سابق وائس چیئرمین نگرپریشدموتیہاری،گلریزشہزاد،سیدساجدحسین،جوادحسین،صغیراحمد،محمدفخرالدین،ڈاکٹرفیصل پرواز،ایم این اختر،ڈاکڑقاسم انصاری،قمرالزماں تیمی،پرمودیادو،قیس حسینی،انیس الحق شمسی،صیوم انصاری،طارق انور،اظہرحسین انصاری،افضل عالم سمیت سیکڑوں لوگ موجودتھے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close