سیاست

مودی حکومت لوگوں کی جاسوسی کرنے میں ماہر:کانگریس

نئی دہلی:کانگریس نے آج الزا م لگایا ہے کہ مودی حکومت ابتدا سے ہی لوگوں کی جاسوسی کرنے اور نجی زندگی میں جھانکنے کی کوشش کرتی رہی ہےاور اسی مقصد سے وہ اب جلد بازی میں ڈی این اے بل لا کر اسے پارلیمنٹ میں منظور کرانا چاہتی ہے۔کانگریس ترجمان ابھیشیک منو سنگھوی نے اتوار کو یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں منعقد نامہ نگاروں کی کانفرنس میں کہا کہ اس بل کو حکومت نے مانسون سیشن میں راجیہ سبھا میں پیش کیا تھا لیکن اس سلسلے میں اپوزیشن پارٹیوں کے رخ کو دیکھتے ہوئے اسے واپس لے لیا اور پھر جلدبازی میں سیشن کی ختم ہونے کے محض دو دن قبل لوک سبھا میں اس بل کو پیش کردیا۔انہوں نے کہا کہ یہ لوگوں کی نجی زندگی سے منسلک معلومات کا معاملہ ہےا ور اس کی سلامتی کے سلسلے میں پارلیمنٹ میں اس پر باضابطہ بحث ہونی چاہئے۔مسٹر سنگھوی نے کہا کہ لوگوں کا ڈاٹا محفوظ رکھنے کے لئے ڈاٹا سلامتی بل زیر غورہے۔ اس میں ڈاٹا کے تحفظ سے متعلق جامع بندوبست کیا گیا ہے تو حکومت اس سے قبل ڈی این اے بل کیوں لا رہی ہے۔ اس تعلق سے اسے وضاحت کرنی چاہئے۔اس بل کو لانے میں حکومت جلدبازی سے کیوں کام لے رہی ہے اس پر پورے ملک میں سوال کئے جارہے ہیں کہ اسے لوگوں کے جذبات کو دھیان میں رکھتے ہوئے ان سوالوں کاجواب دینا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ لوگوں کی نجی زندگی کا احترام کرے اور ملک کے عوام کی تفصیلات کی سلامتی کے لئے پہلے پختہ انتظامات کرے۔ انہوں نے کہا کہ بل لانے کا جو مقصد حکومت بتارہی ہے وہ واضح نہیں ہے۔ بل میں کئے گئے التزام لوگوں کی نجی ڈاٹا کی حفاظت کی گارنٹی نہیں دے رہا ہے اس لئے اس بل میں جلد بازی کرنے کےبجائے اسے سنجیدگی سے ڈاٹا کی سلامتی کے تعلق سے اسے سوچنا چاہئے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close