ہندوستان

مودی نے کی افغانستان حملہ کی مذمت، سشما نے کیا متاثرہ کنبوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہار

نئی دہلی۔ نریندر مودی نے افغانستان میں خودکش حملہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے اسے وہاں کے کثیر ثقافتی ڈھانچہ پر حملہ قرار دیا ہے۔ افغانستان میں اتوار کو اقلیتی ہندو اور سکھ فرقہ کے لوگوں پر اس وقت خودکش حملہ کیا گیا جب وہ صدر اشرف غنی سے ملاقات کرنے جارہے تھے۔ اس حملہ میں 19لوگ مارے گئے تھے ۔ حملہ شمال مشرقی نانگرہار صوبہ میں ہوا۔ مودی نے پیر کو اپنے تعزیتی پیغام میں کہا کہ ہم اس واقعہ کی سخت مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے اسے افغانستان کے کثیر ثقافتی ڈھانچہ پر حملہ قرار دیا۔

وزیراعظم نے کہا کہ مرنے والوں کے رشتہ داروں کے ساتھ ہماری ہمدردی ہے۔ زخمیوں کے جلد صحت مند ہونے کی خواہش کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ ہندستان دکھ کے اس لمحہ میں افغانستان کی مدد کے لئے تیار ہے۔

وہیں، وزیر خارجہ سشما سوراج نے افغانستان کے جلال آباد میں اتوار کو دہشت گردوں کے خودکش حملہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بحران کے اس وقت میں ہندستان متاثرہ کنبوں کے ساتھ ہے۔ سوراج نے پیر کو ٹوئٹ کیا کہ افغانستان کے جلال آباد میں دہشت گردانہ حملہ کے متاثرین کے ساتھ میری ہمدردی ہے۔ بحران کے اس وقت میں ہم ان کے ساتھ ہیں۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ وہ حملے میں مارے گئے ہندستانی نژاد لوگوں کے رشتہ داروں سے آج شام یہاں ملاقات کریں گی۔

افغانستان کے جلال آباد میں ہوئے زبردست دھماکہ میں کم از کم 20لوگ مارے گئے تھے جس میں مسٹر اوتار سنگھ خالصہ بھی شامل تھے جو وہاں اکتوبر میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات میں امیدوار تھے۔ نانگرہار کے پولیس سربراہ غلام سنائی استانیک زئی نے بتایا کہ ایک خودکش حملہ آور نے سکھوں کو لیکر جارہے ایک گاڑی کو نشانہ بنا کر حملہ کیا۔ حملہ کے وقت سکھ فرقہ کے لوگ صدر اشرف غنی سے ملاقات کے لئے جارہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ حملہ میں مارے گئے بیشتر لوگ سکھ فرقہ کے ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close