بین الاقوامی

نئے میدان جنگ کیلئےا سپیس فورس کے قیام کا وقت آ گیا ہے: امریکہ

واشنگٹن:امریکی نائب صدر مائیک پنس نے امریکی سپیس فورس کے منصوبے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا ہے کہ اب وقت آ گیا ہے کہ ’نئے میدان جنگ‘ کے لیے تیاریاں کی جائیں۔سپیس فورس کے قیام کا حکم امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جون میں دیا تھا۔ انھوں نے کہا تھا کہ وزارت دفاع کے لیے ضروری ہے کہ وہ خلا میں کمزوریوں کا سامنا کرے اور امریکی غلبے کو یقینی بنائے۔تاہم سپیس فورس کا قیام اتنا آسان نہیں ہے کیونکہ اس کے قیام کے لیے کانگریس کی منظوری کی ضرورت ہے۔ کانگریس میں کئی ممبران نے اس فورس کے قیام پر آنے والے تخمینے اور بیوروکریسی کے حوالے سے تحفظان کا اظہار کیا ہے۔تاہم مائیک پنس نے اس خواہش کا اظہار کیا کہ یہ فورس ٹرمپ انتظامیہ کے پہلے دورِ حکومت کے اختتام سے قبل قیام میں آ جائے یعنی 2020 تک۔نائب صدر نے وزارت دفاع میں تقریر کرتے ہوئے کہا ’وقت آ گیا ہے کہ اپنی مسلح افواج کی تاریخ میں ایک اور عظیم باب کا اافہ کیا جائے۔ اگلے میدان جنگ کے لیے تیاری کی جائے جہاں امریکہ کے بہترین اور بہادر ترین ہی نئی نسل کے خطرات کو شکست دینے کا موقع ملے گا۔انھوں نے ٹرمپ کے مطالبے کو دہراتے ہوئے کانگریس سے استدعا کی اگلے پانچ سال میں امریکی خلائی سکیورٹی نظام میں مزید آٹھ بلین ڈالر کی سرمایہ کاری کرے۔ ’امریکہ کی سپیس فورس بنانے کا وقت آ گیا ہے۔‘انھوں نے مزید کہا کہ منصوبے کے تحت ایسا گلوبل پوزیشننگ نظامئ کمیونیکیشن سیٹیلائٹ تیار کیا جائے گا جو جام نہ کیا جا سکے۔نائب صدر پنس نے کہا کہ روس اور چین کو روکنے کے لیے سپیس فورس کا قیام ضروری ہے۔ ’یہ دونوں ممالک تیزی سے سیٹیلائٹ کے خلاف صلاحیت حاصل کرنے کی جانب گامزن ہیں۔
چین اور روس مدار میں چدید کارروائیاں کر رہے ہیں جن کی مدد سے وہ اپنے سیٹیلائٹ ہمارے سیٹیلائٹ کے قریب لا سکیں گے جس کے باعث ہمارے خلائی نظام کو وہ خطرہ لاحق ہو گا جو اس سے قبل نہیں ہوا۔‘

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close