تعلیم

پروفیسر شکیل احمد کی انتظامی اور قائدانہ صلاحیتوں سے اردو یونیورسٹی کا بھرپور استفادہ

ڈیپوٹیشن کی کامیاب تکمیل پر پرو وائس چانسلر مانو کی یوجی سی واپسی۔ وداعی تقریب سے ڈاکٹر اسلم پرویز و دیگر کا خطاب

حیدرآباد:مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں آج سبکدوش ہونے والے پرو وائس چانسلر پروفیسر شکیل احمد کے اعزاز میں ایک پر اثر وداعی تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ پروفیسر شکیل احمد تقریباً 3 سال کے کامیاب ڈیپوٹیشن کی تکمیل کے بعد کل اپنے اصل محکمہ یونیورسٹی گرانٹس کمیشن (یو جی سی) کو بحیثیت جوائنٹ سکریٹری واپس ہو رہے ہیں۔

ڈاکٹر محمد اسلم پرویز، وائس چانسلر نے سید حامد سنٹرل لائبریری آڈیٹوریم میں منعقدہ وداعی تقریب سے صدارتی خطاب میں پروفیسر شکیل احمد کی قائدانہ اور انتظامی صلاحیتوں کی زبردست ستائش کی۔ انہوں نے اس بات پر مسرت کا اظہار کیا کہ پروفیسر شکیل احمد ، اردو یونیورسٹی سے فخر و انبساط اور اطمینان کے جذبات کے ساتھ رخصت ہو رہے ہیں۔ ڈاکٹر اسلم پرویز نے اعتراف کیا کہ اگرچہ پروفیسر شکیل احمد، کی شخصیت، اردو یونیورسٹی کی ترقی، استحکام اور وسعت کے لیے نہایت مفید ہے، تاہم ان سے کیے گئے وعدے کے مطابق ڈیپوٹیشن کی تکمیل پر انہیں رخصت کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وائس چانسلر کی حیثیت سے جائزہ حاصل کرنے کے بعد ڈاکٹر شکیل احمد اور پھر ڈاکٹر ایم اے سکندر کو بحیثیت رجسٹرار، مانو سے جوڑنے کا مقصد یہی تھا کہ یہاں کام کرنے کا کلچر متعارف کیا جائے۔ دونوں شخصیات اپنے مقصد میں کامیاب رہیں۔ پروفیسر شکیل احمد اپنا کام بحسن و خوبی انجام دے کر واپس ہو رہے ہیں۔
پروفیسر شکیل احمد نے اپنے وداعی خطاب میں گذشتہ تین سال کے دوران یونیورسٹی میں انجام پائے تمام اچھے کاموں کا سہرا وائس چانسلر کے سر باندھا اور اعتراف کیا کہ انتظامیہ میں رہ کر سب کو خوش نہیں رکھا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ مانو ایک عمدہ ادارہ ہے، جو ایک مستحکم حالت میں پہنچ چکا ہے اور اس کا مستقبل نہایت تابناک ہے۔ پروفیسر شکیل احمد نے مزید کہا کہ انہیں مختلف جامعات میں 7 وائس چانسلرس کے ساتھ کام کرنے کا موقع ملا لیکن ڈاکٹر محمد اسلم پرویز سے بہتر کوئی وائس چانسلر انہوں نے نہیں دیکھا۔
ڈاکٹر ایم اے سکندر، رجسٹرار نے اپنی تقریر میں کہا کہ یہ خوشی اور غم کے ملے جلے جذبات پر مشتمل محفل ہے۔ پروفیسر شکیل احمد میں لوگوں کو کام پر آمادہ کرنے کی غیر معمولی صلاحیت ہے جو کہ ایک کامیاب قائد کی پہچان ہے۔ پروفیسر ایس ایم رحمت اللہ، ڈین سٹیلائٹ کیمپسیس ، پروفیسر پی فضل الرحمن، ڈائرکٹر نظامت فاصلاتی تعلیم، پروفیسر ساجد جمال، کنٹرولر امتحانات ، پروفیسر نسیم الدین فریس، ڈین اسکول آف لینگویجس، پروفیسر سید محمد حسیب الدین قادری، صدر شعبہ ¿ انگریزی، ڈاکٹر ایم وناجا، ڈائرکٹر نظامت داخلہ نے بھی اپنے تاثرات میں پروفیسر شکیل احمد کی حرکیاتی قیادت کا اعتراف کیا اور ان کے روشن مستقبل کے لیے نیک تمنائیں ظاہر کیں۔ جناب انیس احسن اعظمی، مشیر اعلیٰ ، مرکز برائے مطالعاتِ اردو ثقافت نے کارروائی چلائی اور شکریہ ادا کیا۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close